ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

چین سے کشیدگی کے درمیان ہندوستان مضبوط کررہا ہے اپنا ڈیفنس ، 35 دنوں میں کیا 10 میزائلوں کا ٹیسٹ

India china Border tension : ایل اے سی پر چین کے ساتھ کشیدگی کے درمیان ڈی آر ڈی او میڈ ان انڈیا پروگرام کو فروغ دیتے ہوئے تیزی کے ساتھ میزائلوں کو ڈیولپ کرنے میں مصروف ہے ۔

  • Share this:
چین سے کشیدگی کے درمیان ہندوستان مضبوط کررہا ہے اپنا ڈیفنس ، 35 دنوں میں کیا 10 میزائلوں کا ٹیسٹ
چین سے کشیدگی کے درمیان ہندوستان مضبوط کررہا ہے اپنا ڈیفنس ، 35 دنوں میں کیا 10 میزائلوں کا ٹیسٹ

مشرقی لداخ میں چین کے ساتھ ہوئے تنازع کے بعد ہندوستان نے اپنے دفاعی نظام کو مستحکم بنانے میں طاقت جھونک دی ہے ۔ ہندوستان مسلسل میزائلوں اور طاقتور ہتھیاروں کا تجربہ کررہا ہے ۔ اسی سلسلہ میں ڈیفینس ریسرچ اینڈ ڈیولپمنٹ آرگنائزیشن ( ڈی آر ڈی او ) اگلے ہفتہ 800 کلو میٹر رینج کا نربھئے سب سونک کروز میزائل کا تجربہ کرنے جارہا ہے ۔ بری اور بحری فوج میں رسمی طور پر اس کے شامل ہونے سے پہلے آخری مرتبہ اس کا تجربہ کیا جائے گا ۔


ذرائع کے حوالے سے ملی جانکاری کے مطابق ڈی آر ڈی او کی طرف سے گزشتہ 35 دنوں میں یہ 10 واں تجربہ ہوگا ۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ڈی آر ڈی او میڈ ان انڈیا پروگرام کو فروغ دیتے ہوئے تیزی کے ساتھ میزائلوں کو ڈیولپ کرنے میں مصروف ہے ۔


ہندوستان ٹائمس کی ایک رپورٹ کے مطابق اس کے تحت ایک مہینے کے اندر ہر چار دنوں میں ایک میزائل کا تجربہ کیا گیا ہے ۔ ڈی آر ڈی او کے پروجیکٹ سے وابستہ ایک میزائل ایکسپرٹ کا کہنا ہے کہ چین کے ستھ بگڑتے تعلقات کے درمیان ڈی آر ڈی او کو سب کی نظروں سے دور کہا گیا ہے کہ فاسٹ ٹریک کے تحت میزائل پروگرام کو پورا کریں کیونکہ ہندوستان کی حکومت کو سرحد پر امن کیلئے چین کی طرف سے کئے وعدے پر شک ہے ۔


ان میزائلوں کا کیا گیا تجربہ

سات ستمبر کو ہندوستان نے ہائپرسونک ٹیکنالوجی ڈیمونسٹریٹر وہیکل کا تجربہ کیا ۔

اس کے تجربہ کے صرف چار ہفتہ کے دوران سپرسونک کروز میزائل براہموس کے ایکسٹینڈیڈ رینج ورزن کا ٹیسٹ کیا گیا ۔

اس کے بعد سپرسونک میزائل کا تجربہ کیا گیا ۔

ڈی آر ڈی او نے بیلسٹک میزائل پرتھوی ٹو کا تجربہ کیا ، جو سطح سے سطح پر مار کرنے والی میزائل ہے ۔

نو اکتوبر کو ہندوستان نے پہلی ملک میں بنائی گئی اینٹی ریڈئیشین میزائل رودرم ون کا کامیاب تجربہ کیا ۔

قابل ذکر ہے کہ چین کی پیپلز لبریشن آرمی نے اس سال پانچ مئی کو لداخ کے پینگونگ تسو جھیل کے شمالی کنارے پر ہندوستانی فوجیوں کے ساتھ پہلی مرتبہ ٹکراو کے حالات پیدا کئے تھے ، جس کے بعد مشرقی لداح میں چار مقامات کو لے کر دونوں ممالک کے درمیان اختلافات پیدا ہوگئے تھے ۔ یہ اختلافات جون میں خونیں جھڑپ میں تبدیل ہوگیا ، جس میں ہندوستان کے 20 جوان شہید ہوگئے تھے ۔ چین نے بھی نقصان کا اعتراف کیا تھا ، لیکن فوجیوں کی تعداد بتانے سے انکار کردیا تھا ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Oct 10, 2020 09:36 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading