ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

حیدرآباد : تلنگانہ پولیس نے دیشا کے ملزمین کا کیسے کیا انکاؤنٹر، پڑھیں یہاں

تلنگانہ کے دارالحکومت کے قومی شاہراہ نمبر 44 پر، جس پرخاتون ویٹرنری ڈاکٹر کی اجتماعی عصمت ریزی کے بعد اسے آگ کے حوالے کردیا گیا تھا۔ پولیس نے اس مقام واردات پرہی چاروں ملزمین کا انکاؤنٹر کردیا ہے

  • Share this:
حیدرآباد : تلنگانہ پولیس نے دیشا کے ملزمین کا کیسے کیا انکاؤنٹر، پڑھیں یہاں
پولیس نے اس مقام واردات پرہی چاروں ملزمین کا انکاؤنٹر کردیا ہے

تلنگانہ کے دارالحکومت کے قومی شاہراہ نمبر 44 پر، جس پرخاتون ویٹرنری ڈاکٹر کی اجتماعی عصمت ریزی کے بعد اسے آگ کے حوالے کردیا گیا تھا۔ پولیس نے اس مقام واردات پرہی چاروں ملزمین کا انکاؤنٹر کردیا ہے۔سائبر آباد پولیس نے بھی اس کی تصدیق کی ہے۔ ملک کے کونے کونے سے مطالبہ کیا گیا تھا کہ ان ملزمین کوفوری سزا دی جائے۔ آئیے جانتے ہیں کہ پولیس کا ان ملزمین کا انکاؤنٹر کیسےکیا


 


یہ انکاؤنٹر صبح ساڑھے 3 بجے ہوا

ریمانڈ کے دوران پولیس چاروں ملزمین کو جائے وقوعہ پر لے گئی۔ پولیس ملزم کی نظر سے پورے واقعے کو سمجھنا چاہتی تھی۔ کہا جارہا ہے کہ اس دوران ان چاروں نے پولیس کی گرفت سے فرار ہونے کی کوشش کی۔ ایسی صورتحال میں پولیس کے سامنے گولی چلانے کے سوا کوئی چارہ نہیں تھا۔ انہوں نے ان کو پکڑنے کے لئےفائرنگ کرنے کی کوشش کی ہے۔ دیکھتے ہی دیکھتے چاروں ملزمین ہلاک ہوگئے۔ بعدازاں ان کی لاشوں کو سرکاری اسپتال بھیج دیا گیا۔  





پولیس اہلکار بھی زخمی 

اس انکاؤنٹرمیں متعدد پولیس اہلکار بھی زخمی ہوئے۔ سائبر آباد پولیس کمشنر نے بتایا کہ وہ پورے واقعے سے آگاہ نہیں ہیں اور وہ جائزہ لینے کے لیے جائے وقوعہ پرپہنچ گئے ہیں۔ وی سی سجنار کا کہناہے کہ اس پورے واقع پرجلدہی پریس کانفرنس منعقد کی جائیگی۔

ملزم کے والدہ نے کیا کہا تھا؟

اس معاملہ کی ایک ملزم کی والدہ نے کہا کہ تھااگراس نے ایسا گھنائونا جرم کیا ہے تو انہیں فوراسزا دی جانی چاہئے یا انہیں زندہ جلایا جانا چاہئے۔ اس واقعے کے ایک ملزم سی چننکاشولو کی والدہ ، شمالہ نے کہاتھا، "اسے موت کے حوالے کرنا چاہیے یا پھر اسے آگ لگا دی، جیسا کہ اس نے خاتون ڈاکٹر کے ساتھ عصمت دری کے بعد کیا تھا۔"ملزم کی والدہ نے یہ بھی کہا کہ وہ اس کنبہ کے درد کو سمجھ سکتی ہے۔ انہوں نے کہا ، 'میری بھی ایک بیٹی ہے اور میں اس خاندان کے درد کو سمجھ سکتی ہوں ، اس وقت اس کنبہ کے ساتھ کیاچل رہا ہے۔ اگرمیں اپنے بیٹے کا دفاع کروں تو لوگ ساری زندگی مجھ سے نفرت کریں گے۔
First published: Dec 06, 2019 09:22 AM IST