ہوم » نیوز » عالمی منظر

امریکہ کو ہندوستان کا انتباہ- ہماری مذہبی آزادی پر امریکہ کو تبصرہ کرنےکا کوئی حق نہیں

وزارت خارجہ کے ترجمان انوراگ شریواستو نے یہاں کہا کہ امریکی محکمہ خارجہ نے 2019 کی بین الاقوامی مذہبی آزادی رپورٹ شائع کی ہے جو امریکی پارلیمنٹ کی قانونی ضرورت کے لیے نکالا جانے والا امریکہ کا داخلی دستاویز ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Jun 12, 2020 12:17 AM IST
  • Share this:
امریکہ کو ہندوستان کا انتباہ- ہماری مذہبی آزادی پر امریکہ کو تبصرہ کرنےکا کوئی حق نہیں
ہندوستان کی امریکہ کو سخت وارننگ، ہماری مذہبی آزادی پر تبصرہ کرنےکا کوئی حق نہیں۔ فائل فوٹو

نئی دہلی: ہندوستان نے امریکی محکمہ خارجہ کی رپورٹ میں ملک میں مذہبی آزادی کے سلسلے میں کیے گئے تبصروں کو سرے سے خارج کر دیا ہے اور کہا ہے کہ ہندوستانی شہریوں کو آئین کی جانب سے حاصل حقوق کے بارے میں کسی بیرون ملک کو بولنے کا کوئی حق نہیں ہے۔ وزارت خارجہ  (Foreign Ministry)کے ترجمان انوراگ شریواستو نے یہاں کہا کہ امریکی محکمہ خارجہ نے 2019 کی بین الاقوامی مذہبی آزادی رپورٹ شائع کی ہے جو امریکی پارلیمنٹ کی قانونی ضرورت کے لیے نکالا جانے والا امریکہ کا داخلی دستاویز ہے۔


انوراگ شریواستو نے کہا کہ ہندوستان کے زندہ جمہوری روایات اور معاملات سے دنیا اچھی طرح سے متعارف ہے۔ ہندوستان کی حکومت اور عوام ملک کی جمہوری روایات پر فخر کرتے ہیں۔ ہندوستان میں ہمارے یہاں عوامی تبادلہ خیالات کی مستحکم روایت ہے اور آئینی ادارے اور قانون مذہبی آزادی کے تحفظ کی ضمانت دیتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان کا آئینی موقف یہ ہے کہ ہمارے شہریوں کو آئین سے حاصل حقوق کے بارے میں کسی غیر ملکی ادارے کو کوئی تبصرہ کرنے کا حق نہیں ہے۔


وزارت خارجہ کے ترجمان انوراگ شریواستو نے کہا کہ ہندوستان کے زندہ جمہوری روایات اور معاملات سے دنیا اچھی طرح سے متعارف ہے۔
وزارت خارجہ کے ترجمان انوراگ شریواستو نے کہا کہ ہندوستان کے زندہ جمہوری روایات اور معاملات سے دنیا اچھی طرح سے متعارف ہے۔


پاکستان کو بھی دیا جواب

وہیں دوسری طرف وزارت خارجہ (Foreign Ministry) کے ترجمان انوراگ شرواستو نے پاکستان (Pakistan) کے وزیر اعظم عمران خان (Imran Khan) کے بڑ بولے بیان پر انہیں آئینہ دکھایا ہے۔ انوراگ شریواستو نے کہا کہ پاکستان کو یہ یاد رکھنا چاہئے کہ اس پر کل ڈی جی پی (GDP) کا 90 فیصد قرض ہے، جہاں تک ہندوستان کی بات ہے تو ہمارا اقتصادی پیکیج بھی پاکستان  (Pakistan) کی ڈی جی پی سے بڑا ہے۔ دراصل، پاکستان کے وزیراعظم عمران خان نےجمعرات کو کہا تھا کہ ہندوستان کے 34 فیصد خاندانوں کو اقتصادی مدد پہنچانےکے لئے ہم اس کی مدد کرنا چاہتے ہں۔ ایسے میں انوراگ شریواستو نے عمران خان کو آئینہ دکھایا ہے۔ پاکستانی وزیر اعظم عمران خان نے ٹوئٹ کیا تھا، ’رپورٹ کے مطابق، ہندوستان میں اگر 34 فیصد خاندان کو ایک ہفتے میں اقتصادی مدد نہیں ملے گی تو وہ زندہ نہیں رہ پائیں گے۔ اس معاملے میں ہندوستان کی مدد کرنے کے لئے تیار ہوں۔ ہم اپنا کامیاب کیش پروگرام شیئر کرنے کے لئے تیار ہیں’۔ عمران خان نے کہا کہ ہماری حکومت نے کامیابی کے ساتھ 9 ہفتے میں 10 ملین فیملی کو 120 بلین بھیجے ہیں۔
First published: Jun 11, 2020 11:51 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading