உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ہندوستان میں تباہی مچائے گا Omicron ، کیا ویکسین ہوگی کارگر؟ نئے ویریئنٹ کا سب سے پہلے پتہ لگانے والی ڈاکٹر نے بتایا سب کچھ

    ہندوستان میں تباہی مچائے گا Omicron ، کیا ویکسین ہوگی کارگر؟ جانئے سب کچھ ۔ تصویر : shutterstock

    ہندوستان میں تباہی مچائے گا Omicron ، کیا ویکسین ہوگی کارگر؟ جانئے سب کچھ ۔ تصویر : shutterstock

    India Coronavirus Omicron Variant : ہندوستان میں ہفتہ تک کورونا وائرس کے اومیکران ویرئنٹ کے کل 415 معاملات سامنے آچکے ہیں ، جن میں سے 115 لوگ شفایاب ہوچکے ہیں یا باہر چلے گئے ہیں ۔

    • Share this:
      کولکاتہ : جنوبی افریقہ میں اومیکران ( Omicron ) کا سب سے پہلے پتہ لگانے والی ڈاکٹر اینجیلیکا کوئتجے نے کہا ہے کہ ہندوستان میں کورونا وائرس ( Coronavirus in India ) کے اس نئے ویریئنٹ کی وجہ سے انفیکشن کے معاملات میں اضافہ نظر آئے گا ، لیکن زیادہ تر لوگوں میں معمولی علامات نظر آنے کی امید ہے ، جیسا کہ جنوبی افریقہ میں دیکھا جارہا ہے ۔ ساوتھ افریقن میڈیکل ایسوسی ایشن کی صدر نے یہ بھی کہا کہ موجودہ ٹیکوں سے اس مرض کو پھیلنے سے روکنے میں یقینی طور پر مدد ملے گی ، لیکن ٹیکہ کاری نہیں کرانے والے لوگوں کو صد فیصد 'خطرہ' ہے ۔

      کوئتجے نے پٹوریا سے فون پر 'پی ٹی آئی بھاشا' کو دئے ایک انٹرویو میں کہا کہ موجودہ ٹیکوں سے اومیکران ویریئنٹ کو پھیلنے سے روکنے میں کافی مدد ملے گی ۔ انہوں نے کہا کہ اگر کسی شخص کو ٹیکہ لگایا جاچکا ہے یا جو شخص پہلے بھی کورونا وائرس سے متاثر ہوچکا ہے ، تو ان سے یہ انفیکشن کم لوگوں کو پھیلے گا اور ٹیکہ نہیں لگوانے والے لوگ وائرس کو ممکنہ طور پر صد فیصد پھیلائیں گے۔

      کوئتجے نے کہا کہ موجودہ ٹیکوں سے انفیکشن کو کم کرنے میں کافی مدد ملے گی ، کیونکہ ہم جانتے ہیں کہ اگر آپ کو ٹیکہ لگایا جاچکا ہے یا آپ پہلے بھی متاثر ہوچکے ہیں ، تو آپ صرف ایک تہائی انفیکشن پھیلائیں گے جبکہ ٹیکہ نہیں لگوانے والے لوگ ممکنہ طور پر صد فیصد انفیکشن پھیلائیں گے ۔

      انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس عالمی وبا ابھی ختم نہیں ہوا ہے اور آنے والے دنوں میں یہ اینڈیمک ( مقامی سطح پر پھیلنے والا انفیکشن ) بن جائے گا ۔ انہوں نے کچھ ماہرین کی اس رائے سے عدم اتفاق کا اظہار کیا کہ نسبتا کمزور ویریئنٹ اومیکران کے آنے کے ساتھ ہی کورونا وائرس ختم ہونے والا ہے ۔

      کوئتجے نے کہا کہ مجھے ایسا نہیں لگتا ۔ میرا ماننا ہے کہ یہ ( وبا کا جلد ختم ہونا ) مشکل ہوگا ۔ مجھے لگتا ہے کہ یہ سب مقامی سطح پر پھیلنے والا انفیکشن بنے گا ۔ ہندوستان میں ہفتہ تک کورونا وائرس کے اومیکران ویرئنٹ کے کل 415 معاملات سامنے آچکے ہیں ، جن میں سے 115 لوگ شفایاب ہوچکے ہیں یا باہر چلے گئے ہیں ۔

      ہندوستان میں بڑی تعداد میں لوگ متاثر پائیں جائیں گے

      کوئتجے نے کہا کہ ہندوستان میں اومیکران کی وجہ سے کورونا کے معاملات میں اضافہ ہوگا اور بڑی تعداد میں لوگ متاثر پائے جائیں گے ، لیکن زیادہ تر معاملات میں علامات معمولی رہنے کی امید ہے ، جیساکہ ہم جنوبی افریقہ میں دیکھ رہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ بے قابو ہونے والا ہر وائرس انسان کیلئے خطرہ بن سکتا ہے ۔ انہوں نے اومیکران کے بارے میں کہا کہ یہ بچوں کو بھی متاثر کررہا ہے ۔

      کوئتجے نے مزید کہا کہ ابھی اومیکران خطرناک نہیں ہے ، یہ انفیکشن کی اعلی شرح کے ساتھ تیزی سے پھیل رہا ہے ، لیکن اسپتالوں میں سنگین معاملات کم ہیں ۔ اس وائرس کا ایک واحد مقصد لوگوں کو متاثر کرنا اور زندہ رہنا ہے ۔ اور ہاں ، بچے بھی اس سے متاثر ہورہے ہیں ، لیکن وہ اوسطا پانچ سے چھ دن میں ٹھیک ہورہے ہیں ۔

      قومی، بین الاقوامی اور جموں وکشمیر کی تازہ ترین خبروں کےعلاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لیے نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: