فوج کا فرمان- ہنی ٹریپ سے بچنے کے لئے فوجی واٹس اپ پرنہ کریں یہ کام، افسرسےکہا- فیس بک اکاؤنٹ ڈی ایکٹیویٹ کرو

ہندوستانی فوج نے فوجی افسران اورفوجیوں کونئی ایڈوائزری جاری کی ہے۔ ہندوستانی فوج کے ایک افسرکوجوبڑے عہدے پرتعینات ہیں، انہیں فیس بک اکاؤنٹ ڈی ایکٹیویٹ کرنے کا فرمان جاری کیا ہے۔

Nov 13, 2019 11:07 PM IST | Updated on: Nov 13, 2019 11:12 PM IST
فوج کا فرمان- ہنی ٹریپ سے بچنے کے لئے فوجی واٹس اپ پرنہ کریں یہ کام، افسرسےکہا- فیس بک اکاؤنٹ ڈی ایکٹیویٹ کرو

فوج نےاکتوبرکے پہلے ہفتہ میں اس سے متعلق ایک ایڈوائزری جاری کی تھی۔

نئی دہلی: انڈین آرمی کے فوجیوں کوہنی ٹریپ کے ذریعہ پھنسانے کے بڑھتے معاملے کے بعد محتاط ہوگئی فوج نےاپنے فوجیوں اورافسران کے لئےنیا فرمان جاری کیا ہے۔ ذرائع کے مطابق ہندوستانی فوج نے فوجی افسران اورفوجیوں کونئی ایڈوائزری جاری کی ہے۔ ہندوستانی فوج کے ایک افسرکوجوبڑے عہدے پرتعینات ہیں، انہیں فیس بک اکاؤنٹ ڈی ایکٹیویٹ کرنےکا فرمان جاری کیا ہے۔

فوج نےاپنے فرمان میں واٹس اپ جیسی میسیجنگ ایپ پرکسی بھی طرح کےآفیشیل کمیونی کیشن کرنے سے پابندی عائد کردی  ہے۔ فوج کے سائبرکرائم گروپ نے سوشل میڈیا ٹرینڈ پر باقاعدہ جانچ اورپڑتال کے بعد یہ سفارش کی ہے۔ اس سے پہلے فوج نےاکتوبرکےپہلے ہفتہ میں اس سے متعلق ایک ایڈوائزری جاری کی تھی۔

Loading...

سوشل میڈیا پروفائل کی شناخت

فوج نے 150 سوشل میڈیا پروفائل کی شناخت کی ہے۔ یہ فرضی ناموں کے ذریعہ جوانوں کو پھنسانے کے لئے ٹریپ بچھانے کے مشکوک ہیں۔ فوجی اہلکاروں کو ٹریپ میں پھنسانے کے لئےاپنائے جانے والے حالیہ طریقوں اورطلباء پرفوج نےایک فائل تیارکی ہے۔ فوج سے منسلک ایک ذرائع نےاس فائل کے حوالے سے بتایا 'تازہ ان پٹس دکھاتے ہیں کہ پاکستان کے خفیہ افسرسوشل میڈیا پرروحانی گروکی شناخت کا استعمال کررہے ہیں۔ وہ ہدف پرلئےگئے فوجیوں اوران کی فیملی کےاراکین سے حساس اطلاعات حاصل کرنے کے لئے ان کا اعتماد جیتنےکی کوشش کرسکتے ہیں۔  پاکستانی خفیہ افسران کے نشانے پرایسے فوجی یا افسر ہو سکتے ہیں، جن کے پاس فوج کے موومنٹ (سرگرمی) کی اطلاع رہتی ہے۔ یا پھروہ آرڈیننس فیکٹریوں کا اسٹاف اوریہاں تک کہ سابق فوجی بھی ہوسکتےہیں۔

Loading...