آرٹیکل 370 ہٹنے کے بعد دہشت گردانہ حملے کا خدشہ، ہائی الرٹ پر ہندوستانی بحریہ

جموں وکشمیرکو خصوصی درجہ دینے والے دفعہ 370 کے زیادہ ترشقوں کو ختم کرنے والے اورریاست کو دو حصوں میں تقسیم کرنے کے حکومت کے فیصلے کے بعد پیدا ہوئی صورتحال کودیکھتے ہوئے بحریہ نے یہ قدم اٹھایا ہے۔

Aug 09, 2019 11:43 PM IST | Updated on: Aug 09, 2019 11:45 PM IST
آرٹیکل 370 ہٹنے کے بعد دہشت گردانہ حملے کا خدشہ، ہائی الرٹ پر ہندوستانی بحریہ

آرٹیکل 370 ہٹنے کے بعد دہشت گردانہ حملہ کے خدشات کے پیش نظر ہندوستانی بحریہ ہائی الرٹ پر ہے۔

ہندوستانی بحریہ نے فوری طورپرکسی بھی مہم میں تعیناتی کے لئے اپنے جنگی جہازوں کوہائی الرٹ پررکھا ہے۔ جموں وکشمیر کوخصوصی ریاست کا درجہ دینے والے دفعہ 370 کے زیادہ ترتجاویزکوختم کرنے والے اورریاست کو مرکز کے زیرانتظام دو خطوں میں تقسیم کرنے والے حکومت کے فیصلے کے بعد پیدا ہوئی حالت کو دیکھتے ہوئے ہندوستانی بحریہ نے یہ قدم اٹھایا ہے۔ دفاعی ذرائع نے یہ اطلاع جمعہ کو دی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ سبھی بحریہ اسٹیشنوں کوکسی بھی ممکنہ سیکورٹی  چیلنجز سے نمٹنے کے لئے ہائی الرٹ پررکھا گیا ہے۔ فوج اورہندوستانی سروس فورسزبھی حکومت کے فیصلے کے بعد ہائی الرٹ پرہے۔

Loading...

اس سال فروری میں پلوامہ حملے کے بعد ہندوستان اورپاکستان کے درمیان پیدا ہوئی کشیدگی کی وجہ سے ہندوستانی بحریہ نے شمالی بحیرہ عرب میں ہوائی جہاز کا کیریئرآئی این ایس وکرم آدتیہ، جوہری پن ڈبی چکر، 60 جہاز اورتقریباً 80 طیاروں کومہم کے لئے تعینات کیا تھا۔ پلوامہ میں دہشت گردانہ حملے کے بعد ہندوستانی ایئر فورس نے بالا کوٹ میں 26 فروری کو جیش محمد کے دہشت گردانہ ٹھکانوں کو نشانہ بنایا تھا۔

وہیں صدرجمہوریہ رام ناتھ کووند نے جمعہ کو جموں وکشمیرکی تشکیل نوقانون کو منظوری دے دی ہے۔ جموں وکشمیرریاست کومرکز کے زیرانتظام ریاست اورلداخ کو مرکزکے زیرانتظام خطہ بننے سے متعلق بل لوک سبھا اورراجیہ سبھا سے پہلے ہی پاس ہوگیا تھا۔ پیرکوجموں وکشمیرسے دفعہ 370 کے بیشترشق کو ختم کرنے، ریاست کو دو حصوں میں تقسیم کرنے سے متعلق بل کو منظوری دی گئی تھی۔

Loading...