உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Indian Railway:مانباپ کی حادثے میں ہوگئی موت، ریلوے نے 10مہینے کی بچی کو دی نوکری! جانیے پوری تفصیل

    انڈین ریلوے (علامتی تصویر)

    انڈین ریلوے (علامتی تصویر)

    حکام نے بتایا کہ حادثے کے بعد رائے پور ریلوے ڈویژن کی طرف سے راجندر کمار کے اہل خانہ کو قواعد کے مطابق ہر ممکن مدد فراہم کی گئی۔ اس کے بعد انہوں نے ریلوے ریکارڈ میں سرکاری اندراج کے لیے بچی کے فنگر پرنٹس لیے۔

    • Share this:
      Indian Railway:رائے پور: چھتیس گڑھ میں ایک حادثے میں اپنے والدین کو کھونے والی 10 ماہ کی بچی کو ریلوے نے ہمدردی کی بنیاد پر نوکری دی ہے۔ ریلوے حکام کے مطابق چھتیس گڑھ کی تاریخ میں شاید یہ پہلا موقع ہے کہ 10 ماہ کی بچی کو ہمدردی کی بنیاد پر نوکری کی پیشکش کی گئی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ جب وہ 18 سال کی ہو جائیں گی تو وہ نیشنل ٹرانسپورٹر کے لیے کام کر سکتی ہیں۔ ہمدردانہ تقرریوں کا مقصد مرنے والے سرکاری ملازمین کے اہل خانہ کو فوری امداد فراہم کرنا ہے۔

      نوکری کے لئے بچی کا کیا گیا ہے رجسٹریشن
      ایس ای سی آر کے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ ’4 جولائی کو، ایک 10 ماہ کی بچی کو سائوتھ ایسٹ سنٹرل ریلوے (اے ای سی آر)، رائے پور ریلوے ڈویژن کے پرسنل ڈیپارٹمنٹ میں ہمدردانہ تقرری کے لیے رجسٹر کیا گیا تھا۔ ‘بچے کے والد، راجندر کمار، بھیلائی کے ایک ریلوے یارڈ میں بطور اسسٹنٹ کام کرتے تھے۔ یکم جون کو ان کی بیوی کے ساتھ سڑک حادثے میں موت ہوگئی، حادثے میں لڑکی کی جان بچ گئی تھی۔

      یہ بھی پڑھیں:

      کرناٹک: دو فرقوں کے درمیان پُرتشدد جھڑپ، 18 افراد حراست میں، کیرورو شہر میں دفعہ 144 نافذ



      یہ بھی پڑھیں:
      نائب صدریاگورنربن سکتے ہیں مختار عباس نقوی،1998میں پہلی مرتبہ رامپور سے پہنچے تھے لوک سبھا

      حکام نے بتایا کہ حادثے کے بعد رائے پور ریلوے ڈویژن کی طرف سے راجندر کمار کے اہل خانہ کو قواعد کے مطابق ہر ممکن مدد فراہم کی گئی۔ اس کے بعد انہوں نے ریلوے ریکارڈ میں سرکاری اندراج کے لیے بچی کے فنگر پرنٹس لیے۔ ایک اہلکار نے بتایا کہ جب اس کے انگوٹھے کا نشان لیا گیا تو لڑکی اپنے رشتہ داروں کے ساتھ رو پڑی۔ ’یہ ایک دل دہلا دینے والا لمحہ تھا۔ ہمارے لیے اتنے چھوٹے بچے کے انگوٹھے کا نشان بھی لینا مشکل تھا۔‘
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: