உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    افغانستان کے مسئلے پر چین، روس کے ساتھ ہندوستان کے اختلافات، UNSC کی تجویز پر تقسیم ہوئی رائے

    افغانستان کے مسئلے پر چین، روس کے ساتھ ہندوستان کے اختلافات،

    افغانستان کے مسئلے پر چین، روس کے ساتھ ہندوستان کے اختلافات،

    چین اور روس نے سخت نگرانی اور رکاوٹوں سے چھوٹ میں کم وقت کی مخالفت کی ہے۔ ہندوستان نے تجویز کی حمایت میں ووٹ کیا، کیونکہ اس میں 12 مہینوں میں جائزہ لینے کا پروویژن ہے۔ ہندوستانی نمائندے ٹی ایس ترومورتی نے کونسل سے نگرانی کرنے کی اپیل کی، تا کہ یہ یقینی بنایا جاسکے کہ فنڈ کا غلط طرح سے استعمال نہ ہو سکے۔ خبر ہے کہ برٹین اور ایسٹونیا نے بھی نئی تجویز کی حمایت کی ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: افغانستان (Afghanistan) کو انسانی امداد مہیا کرانے کے تعلق سے ایک تجویز پر اقوام متحدہ سلامتی کونسل (UNSC) میں بحث ہوئی۔ اس دوران ارکان کےدرمیان اختلافات سامنے آئے۔ UNSC کی تجویز کے تحت یہ یقینی کیا جانا تھا کہ افغانستان کو ملنے والی انسانی امداد کے راستے میں رکاوٹ نہ آئے۔ ایک جانب چین اور روس نے تجویز کی مخالف کی، وہیں، ہندوستان اور فرانس اس کی حمایت میں آگے آئے۔

      چین اور روس نے سخت نگرانی اور رکاوٹوں سے چھوٹ میں کم وقت کی مخالفت کی ہے۔ ہندوستان نے تجویز کی حمایت میں ووٹ کیا، کیونکہ اس میں 12 مہینوں میں جائزہ لینے کا پروویژن ہے۔ ہندوستانی نمائندے ٹی ایس ترومورتی نے کونسل سے نگرانی کرنے کی اپیل کی، تا کہ یہ یقینی بنایا جاسکے کہ فنڈ کا غلط طرح سے استعمال نہ ہو سکے۔ خبر ہے کہ برٹین اور ایسٹونیا نے بھی نئی تجویز کی حمایت کی ہے۔

      حکومت ہند نے افغانستان کو 50 ہزار میٹرک ٹن گیہوں اور دوائیں پہنچائی ہیں۔ حالانکہ، ہندوتان یہ بھی لگاتار کہہ رہا ہے کہ کابل میں جاری حکمرانی میں قانونی حیثیت کی کمی ہے۔ ہندوستان کے لئے یہ ضروری ہے کہ طالبان یہ یقینی بنائے کہ وہ Let اور JeM جیسے پاکستانی دہشت گرد گروپوں سے اپنے تعلقات توڑ دے۔ کئی ممالک نے اس بات پر تشویش ظاہر کی ہے کہ غیر منتظم امداد طالبان کو مضبوط کرسکتی ہے۔

      میڈیا رپورٹ کے مطابق، بیجنگ کو حمایت دینے کے لئے امریکہ نے وقت و معیاد کو لے کر چین کے اعتراض کو جاری رکھا ہے۔ سیکیوریٹی کونسل کی رپورٹ کے مطابق، چین اور روس کے ووٹ کے برخلاف ہندوستان، فرانس، یو کے اور ایسٹونیا کا کہنا ہے کہ زمین پر تیزی سے بدلتی صورتحال کی وجہ سے کونسل کم مدت میں جائزہ لے۔ آخری مسودے میں کسی بھی وقت کا تذکرہ نہیں ہے۔ اس میں کہا گیا ہے کہ کونسل پروویژنس کو لاگو کرنے کے لئے ایک سال بعد ان کا جائزہ لے گا۔

      قومی، بین الاقوامی اور جموں وکشمیر کی تازہ ترین خبروں کےعلاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لیے نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں ۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: