ہند-پاک کے درمیان قومی سلامتی کے مشیر وں کی سطح کے مذاکرات منسوخی کے دہانے پر

ہند و پاک کے درمیان قومی سلامتی کے مشیر وں کی سطح کے مذاکرات کے لئے پاکستان کی طرف سے نئی شرائط رکھے جانے اور حریت کے لیڈروں سے پاکستانی مندوب مسٹر سرتاج عزیز کی ملاقات کے سلسلے میں اصرار کرنے پر ہندوستان کی طرف سے سخت موقف اختیار کرنے کے بعد ہفتہ- اتوار کے روز دونوں ممالک کے درمیان طے شدہ بات چیت آج منسوخی کے دہانے پر پہنچ گئی ہے۔

Aug 21, 2015 10:49 PM IST | Updated on: Aug 21, 2015 10:49 PM IST
ہند-پاک کے درمیان قومی سلامتی کے مشیر وں کی سطح کے مذاکرات منسوخی کے دہانے پر

نئی دہلی۔ ہند و پاک کے درمیان قومی سلامتی کے مشیر وں کی سطح کے مذاکرات کے لئے پاکستان کی طرف سے نئی شرائط رکھے جانے اور حریت کے لیڈروں سے پاکستانی مندوب مسٹر سرتاج عزیز کی ملاقات کے سلسلے میں اصرار کرنے پر ہندوستان کی طرف سے سخت موقف اختیار کرنے کے بعد ہفتہ- اتوار کے روز دونوں ممالک کے درمیان طے شدہ بات چیت آج منسوخی کے دہانے پر پہنچ گئی ہے۔

ہندوستان نے پاکستان پر وزیر اعظم نریندر مودی اور ان کے پاکستان ہم منصب میاں نواز شریف کے درمیان اوفا (روس) میں طے پانے والی مفاہمت کو توڑنے کا الزام لگایا، جبکہ چند گھنٹے قبل ہی پاکستان نے کشمیر ی حریت پسند لیڈروں کے ساتھ ملاقات نہ کرنے اور اس بات چیت کے ایجنڈے میں دہشت گردی کے علاوہ کوئی دوسرا معاملہ شامل نہ جوڑنے سے متعلق ہندوستان کے باضابطہ مشورے کو پاکستان نے مسترد کردیا تھا۔

Loading...

وزارت خارجہ کے ترجمان مسٹر وکاس سوروپ نے پاکستان کے اصرار پر صاف الفاظ میں کہا کہ "یک طرفہ طورپر ملاقات کے لئے نئی شرائط لگانے اور باہمی اتفاق سے طے شدہ ایجنڈے کو توڑنےسے بات چیت کی سمت میں آگے نہیں بڑھا جا سکتا ہے"۔ قومی سلامتی کے مشیر اجیت ڈوول اور پاکستان کے قومی سلامتی اور امورخارجہ کے خصوصی مشیر سرتاج عزیز کے درمیان 23 - 24 اگست کو نئي دہلی میں میٹنگ ہونے کا شیڈول تیار ہے۔

Loading...