ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

Byju نےکبھی بزنس نہیں کیا، لیکن اس طریقے سے دولاکھ سے 90 ہزارکروڑ روپئے پر پہنچی کمپنی

آن لائن لرننگ ایپ بائیجو کے فاونڈر بائیجو رویندرن نے بتایا جدوجہد سے کامیابی تک کا سفر۔ ایجوکیشن کو آن لائن پلیٹ فارم پر لانے کے آئیڈیا سے کامیابی ملی۔

  • Share this:
Byju نےکبھی بزنس نہیں کیا، لیکن اس طریقے سے دولاکھ سے 90 ہزارکروڑ روپئے پر پہنچی کمپنی
Byju نےکبھی بزنس نہیں کیا، لیکن اس طریقے سے دولاکھ سے 90 ہزارکروڑ روپئے پر پہنچی کمپنی

نئی دہلی: ٹاٹا، امبانی، بڑلا کے قصے تو ہم جانتے ہیں، لیکن ملٹی نیشنل کمپنیوں کی نوکریوں کی محبت چھوڑ کر صرف آن لائن پڑھانے کے آئیڈیا نے دو لاکھ روپئے کی ایک کمپنی کا ویلیو ایشن تقریباً 90 ہزارکروڑ روپئے پہنچا دی۔ یہ کہانی ہے ہندوستان کے دوسرے سب سے بڑے اسٹارٹ اپ آن لائن لرننگ ایپ بائیجوس اور اس کے فاونڈر بائیجو رویندرن کی۔ نیوز 18 سے بات چیت میں انہوں نے بتایا کہ کس طرح ایجوکیشن کو آن لائن پلیٹ فارم پر لانے کے آئیڈیا سے اتنی بڑی کامیابی حاصل کی۔ یہی نہیں، کورونا بحران میں جب سب اسکول، کوچنگ اور کالج بند ہیں، تب بائیجوس ایپ کیسے طلبا کو پڑھا رہا ہے۔


رویندرن سے ان کی زبانی جانئے بائیجوس کی کہانی


میرے دوست مقابلہ جاتی امتحانات کی تیاری کر رہے تھے۔ انہوں نے مجھ سے پڑھنا چاہا تو میں نے انہیں گائڈ کردیا۔ میرا طریقہ انہیں پسند آیا اور انہوں نے ایگزام کوالیفائی کرلیا۔ ان کے کہنے پر اسی آئیڈیا کو ہم نے 100 طلبا کی ایک ورکشاپ میں آزمایا۔ آگے چل کر اسٹیڈیم میں ایک ساتھ 20,000 طلبا کے لئے سیشن بھی کیا۔ اس دوران میں نے پایا کہ طلبا کے سیکھنے کے طریقے میں بہت بڑا فرق تھا۔ وہ صرف امتحان کے خوف کی وجہ سے رٹ رہے تھے، لہٰذا ہم لوگوں کو خیال آیا کہ ٹکنالوجی کے استعمال کے ذریعہ سیکھنے کے تئیں ان میں پیار کو توسیع دی جائے۔ اسی بات کو دھیان میں رکھتے ہوئے ہم نے 2011 میں تھنک اینڈ لرن پرائیویٹ لمیٹیڈ بنائی۔ پھر اگست 2015 میں بائیجوس ایپ لانچ کیا۔ آج ہمارے پاس چار کروڑ سبسکرائبر ہیں، جن میں سے 28 لاکھ پیڈ سبسکرائبر ہیں۔


اب میں آپ کو اپنی ٹیم کے بارے میں بتاتا ہوں۔ جب ہم ابتدائی دور میں تھے تب میرے طلبا نے مجھے اپنی کلاس کی توسیع کرنے میں مدد کی۔ انہیں طلبا نے بعد میں کمپنی کی کور ٹیم کی تشکیل کی اور یہی ٹیم اب کنٹینٹ ڈیولپمنٹ، سیل اور مارکیٹنگ سے لے کر کمپنی کے سبھی اہم کاموں کو چلا رہی ہے۔ بائیجوس کی ٹیم کو صرف ایک علت ہے، وہ ہے ہمارے طلبا میں سیکھنے کی علت کی عادت ڈالنا۔ یہ جنون کمپنی میں اوپر سے نیچے تک دیکھا جاسکتا ہے۔

میں پیشے سے انجینئر، اتفاق سے ایک کاروباری اور استاد بنا ہوں۔ میں نے کبھی بھی اپنے کام کو کاروبار کے طور پر شروع کرنے کا منصوبہ نہیں بنایا تھا۔ میں نے بس اپنے جنون  کا پیچھا کیا اور اسے پورا کرنے کے لئے اپنی طاقت پر سرمایہ کاری کی۔ بعد میں یہ ایک تجارت بن گیا۔ پیسہ کمانے کے جنون سے کوئی کاروبار نہیں چل سکتا بلکہ سماج کو بدلنے کا جنون کہیں زیادہ اہم ہے۔ مجھے لگتا ہے کہ یہاں اصلی مزہ ایک بلین ڈالر کمپنی بنانے میں نہیں، بلکہ ایک ارب مفکرین اور سیکھنے والے بنانے میں ہیں۔

ویسے، آپ کو بتانا چاہتا ہوں کہ میں نے کوئی بزنس نہیں کیا تھا۔ اس لئے میں اور میری ٹیم کام کرکے سیکھتی ہے۔ ہم نے بزنس ماڈل سے لے کر اس کی توسیع اور رقم جمع کرنے تک کا ہنر سیکھا۔ ویسے بھی ہم سکھانے کا کام کرتے ہیں تو پھر خود بھی سیکھ کر کاروبار کو فروغ دیتے ہیں۔ آج کل مجھے سکھانے کے لئے پہلے جتنا وقت نہیں ملتا، لیکن مجھے خوشی ہے کہ میرے کئی طلبا آج مجھ سے بہتر کام کر رہے ہیں۔ ہمارے پاس ایسے اساتذہ ہیں، جو آج مجھ سے بہتر ہیں۔ ٹیچنگ سب سے تخلیقی اور طاقتور کاموں میں سے ایک ہے۔ بچوں پر ٹیچر کا تاحیات اثر پڑتا ہے، جو ان کے دماغ کو شکل دینے سے لے کر ان کے خیالات اور تصورات کے لئے انہیں لانچ پیڈ دینے تک میں مدد کرتا ہے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Feb 02, 2021 06:48 PM IST