உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کام کی بات : حیض کے دوران اپنی گرل فرینڈ سے سیکس کیا اور مجھے انفیکشن ہوگیا ، اب کیا کروں ؟

    کئی خواتین کیلئے حیض کے دوران سیکس کا تجربہ زیادہ لذت بخش ہوتا ہے۔ حیض ایک طرح سے نیچرل لوبرکینٹ کا کام کرتے ہیں اور خاتون کو خاص طور پر زیادہ لطف کا تجربہ ہوتا ہے۔

    کئی خواتین کیلئے حیض کے دوران سیکس کا تجربہ زیادہ لذت بخش ہوتا ہے۔ حیض ایک طرح سے نیچرل لوبرکینٹ کا کام کرتے ہیں اور خاتون کو خاص طور پر زیادہ لطف کا تجربہ ہوتا ہے۔

    کئی خواتین کیلئے حیض کے دوران سیکس کا تجربہ زیادہ لذت بخش ہوتا ہے۔ حیض ایک طرح سے نیچرل لوبرکینٹ کا کام کرتے ہیں اور خاتون کو خاص طور پر زیادہ لطف کا تجربہ ہوتا ہے۔

    • Share this:

      حیض کے دوران سیکس کرنا یا نہ کرنا ، دو شخصوں کی ذہنی اور جسمانی خواہش پر منحصر ہے ، اسے لے کر ذہن میں کسی قسم کی غلط فہمی پالنے ، فکر مند یا پریشان ہونے کی ضرورت نہیں ہے۔
      سوال : میں نے اپنی گرل فرینڈ کے ساتھ ایسے وقت میں سیکس کیا جب اس کو حیض آرہا تھا ، اس کے بعد میرے عضو خاص میں انفیکشن ہوگیا ہے ، کھجلی اور لال پن رہتا ہے ، جدید سائنس تو کہتا ہے کہ حیض میں سیکس کرسکتے ہیں ، پھر یہ انفیکشن کیوں؟۔
      ڈاکٹر پارس شاہ
      جواب : حیض کے دوران سیکس کرنے میں کوئی پریشانی نہیں ہے ، لیکن پروٹیکشن کا استعمال بہت ضروری ہے ۔ حیض کے دوران نکلنے والے خون میں بیکٹریاکا خدشہ زیادہ ہوتا ہے ، اگر اس دوران کسی تحفظ کے بغیر یا کنڈوم کے بغیر سیکس کیا جائے تو مرد کو بھی انفیکشن ہونے کا خدشہ بڑھ جاتا ہے ۔ قدیم آیوروید میں بھی یہ لکھا ہے کہ حیض کے دوران سیکس سے دوری بناکر رکھی جائے۔
      جہاں تک آپ کی پریشانی کا سوال ہے تو حیض کے وقت غیر محفوظ سیکس کی وجہ سے آپ کے عضو خاص میں انفیکشن ہوگیا ہے ، آپ بالکل بھی وقت برباد نہ کریں اور فوری طور پر کسی اچھے ڈاکٹر سے رابطہ قائم کریں اور اپنا علاج کروائیں ۔ ڈاکٹر کے مشورہ کے بغیر اپنے دماغ سے اپنا علاج کرنے کی کوشش نہ کریں۔ اور ہاں ، کسی بھی قسم کی فکر یا پریشانی کو اپنے دماغ سے نکال دیں۔ یہ کوئی بڑی پریشانی نہیں ہے ، کوئی معمولی انفیکشن ہوگیا ہے، جو ادویات کے استعمال سے ٹھیک ہوجائے گا۔


      kam-ki-baat2
      سیکس کے معاملہ میں یہ تو بات پوری طرح لاگو ہوتی ہے کہ ہم جو چاہیں ، کرسکتے ہیں ، صرف احتیاط اور پروٹیکشن بہت ضروری ہے ۔ اب وقت بدل رہا ہے ۔ سائنس نے کافی ترقی کرلی ہے ، اس لئے اس بات کا کوئی سائنسی بنیاد نہیں ہے کہ بالکل بھی سیکس نہیں کرنا چاہئے ۔ حیض کے دوران سیکس کرنے میں کوئی نقصان نہیں ہے ، لیکن چونکہ اس دوران انفیکشن کا ڈر زیادہ ہوتا ہے ، اس لئے کنڈوم کا استعمال ضروری ہے۔
      اگر پروٹیکشن کا خیال رکھا جائے تو حیض کے دوران سیکس میں کوئی نقصان نہیں ہے ،بلکہ کئی خواتین کیلئے حیض کے دوران سیکس کا تجربہ زیادہ لذت بخش ہوتا ہے۔ حیض ایک طرح سے نیچرل لوبرکینٹ کا کام کرتے ہیں اور خاتون کو خاص طور پر زیادہ لطف کا تجربہ ہوتا ہے۔
      اس لئے حیض کے دوران سیکس کرنا یا نہ کرنا ، دو شخصوں کی ذہنی اور جسمانی خواہش پر منحصر ہے ، اسے لے کر ذہن میں کسی قسم کی غلط فہمی پالنے ، فکر مند یا پریشان ہونے کی ضرورت نہیں ہے۔
      ۔(ڈاکٹر پارس شاہ ساندھیہ ملٹی اسپشلیٹی ہاسپیٹل احمد آباد ، گجرات میں چیف کنسلٹنٹ سیکسولاجسٹ ہیں)۔

      First published: