ہوم » نیوز » وطن نامہ

بین الاقوامی عدالت کے حکم کے خلاف ہندوستان سے مدد کی امید میں اسرائیل ، جانئے کیا ہے معاملہ

ذرائع نے بتایا کہ ہندوستان نے سفارتی ذرائع کے توسط سے یہ واضح کردیا ہے کہ انٹرنیشنل کریمنل کورٹ کے حکم اور فیصلہ پر وہ کوئی ردعمل ظاہر نہیں کرنا چاہتے ہے کیونکہ وہ Rome Statute کا رکن نہیں ہے ۔ حالانکہ اسرائیل بھی اس کا رکن نہیں ہے ۔

  • Share this:
بین الاقوامی عدالت کے حکم کے خلاف ہندوستان سے مدد کی امید میں اسرائیل ، جانئے کیا ہے معاملہ
بین الاقوامی عدالت کے حکم کے خلاف ہندوستان سے مدد کی امید میں اسرائیل ، جانئے کیا ہے معاملہ ( Photo : Twitter/IsraeliPM)

نئی دہلی : فلسطینی علاقوں (Palestinian territories)  کو لے کر دئے گئے انٹرنیشنل کریمنل کورٹ (International Criminal Court) کے فیصلہ کے بعد اسرائیل  (Israel) ہندوستان سے مدد کی امید لگا رہا ہے ۔ اسرائیل مسلسل ہندوستان کو عدالت کے اس فیصلہ کے خلاف کھڑے ہونے پر زور دے رہا ہے ۔ حالانکہ فی الحال مغربی ایشیا میں بڑی تبدیلیوں کے درمیان اپنی راہ تلاش کررہا ہندوستان دونوں فریقوں کو لے کر کچھ بھی کہنے سے گریز کررہا ہے ۔ اسرائیل ہندوستان کی طرف سے مثبت ردعمل ملنے کی قیاس آرائی کررہا ہے ۔


انگریزی اخبار دی انڈین ایکسپریس کی رپورٹ کے مطابق اسرائیل کے وزیر اعظم نیتن یاہو  (Benjamin Netanyahu) نے وزیر اعظم مودی (Narendra Modi) کو خط لکھا ہے ۔ وہ اس خط کے ذریعہ ہندوستان سے فیصلہ کے خلاف کھڑے ہونے کی مانگ کررہے ہیں ۔ ساتھ ہی اسرائیل آئی سی سی کو جسٹس اور کامن سینس پر حملہ روکنے کا ایک پیغام بھیجنا چاہتا ہے ۔ خاص بات یہ ہے کہ نیتن یاہو نے حال ہی میں وزیر اعظم مودی کو اپنا اچھا دوست بتایا تھا ۔


اسرائیل نے انٹرنیشنل کورٹ کا فیصلہ آنے کے دو دن بعد ہی ہندوستان کو خط لکھا تھا ۔ وہیں دہلی نے ابھی تک اس سلسلہ میں کوئی جواب نہیں دیا ہے ۔ دی انڈین ایکسپریس کو ذرائع نے بتایا کہ ہندوستان نے سفارتی ذرائع کے توسط سے یہ واضح کردیا ہے کہ انٹرنیشنل کریمنل کورٹ کے حکم اور فیصلہ پر وہ کوئی ردعمل ظاہر نہیں کرنا چاہتے ہے کیونکہ وہ Rome Statute کا رکن نہیں ہے ۔ حالانکہ اسرائیل بھی اس کا رکن نہیں ہے ۔


اسرائیل ہندوستان کی طرف سے مثبت رد عمل کی امید کررہا ہے ۔ خاص طور پر تب جب یہ فیصلہ کشمیر اور دیگر معاملات پر بھی اثر ڈال سکتا ہے ۔ اسرائیل نے لکھا کہ ہمیں آنکھ بند کرلینے کا مطلب یہ نہیں ہے کہ کورٹ ہے ہی نہیں ۔ خاص بات یہ ہے کہ ہندوستان انٹرنیشنل کریمنل کورٹ کے قیام کے عمل میں بڑھ چڑھ کر حصہ لے کر روم آئین سے گریز کرتا رہا ہے۔ در حقیقت  ہندوستان کو خدشہ ہے کہ آئی سی سی کشمیر اور شمال مشرق جیسے معاملات میں اپنا عدالتی عمل چلائے گا ، جو ایک داخلی معاملہ ہے۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Feb 11, 2021 08:02 AM IST