உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Target Killing in Kashmir:کشمیر میں ہندوؤں کی ٹارگیٹ کلنگ کا معاملہ پہنچا سپریم کورٹ،CJIسے کی گئی یہ درخواست

    سپریم کورٹ پہنچا کشمیر میں ہندووں کے ٹارگیٹ کلنگ کا معاملہ۔

    سپریم کورٹ پہنچا کشمیر میں ہندووں کے ٹارگیٹ کلنگ کا معاملہ۔

    Target Killing in Kashmir: خط میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ حکومت ہند کو کشمیر میں اقلیتی ہندوؤں کو فوری تحفظ فراہم کرنے کی ہدایت کی جائے اور اس کے لیے ایک طریقہ کار تشکیل دیا جائے۔

    • Share this:
      Target Killing in Kashmir: کشمیر میں ہندوؤں کی ٹارگٹ کلنگ کا معاملہ سپریم کورٹ پہنچ گیا ہے۔ دہلی کے ایک وکیل نے چیف جسٹس این وی رمنا کو خط لکھ کر اس معاملے کا نوٹس لینے اور کشمیر میں ہندوؤں کی حفاظت کو یقینی بنانے کا مطالبہ کیا ہے۔ خط میں ٹارگٹ کلنگ سے ہلاک ہونے والے ہندوؤں کے لواحقین کو ایک کروڑ روپے معاوضہ اور خاندان کے ایک فرد کو سرکاری نوکری دینے کا بھی مطالبہ کیا گیا ہے۔

      CJIکو لکھا خط
      چیف جسٹس کو یہ خط وکیل ونیت جندال نے بھیجا ہے، جس میں 31 مئی کو کشمیر کے کولگام میں ٹیچر رجنی بالا کے قتل کے معاملے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ یہ کشمیر میں ہندوؤں کی ٹارگٹ کلنگ کا معاملہ ہے۔ مئی کے مہینے میں یہ ساتواں معاملہ ہے۔ اس سے قبل دہشت گردوں نے اسی طرح تین پولیس اہلکاروں اور تین شہریوں کو نشانہ بنا کر ہلاک کیا تھا۔

      یہ بھی پڑھیں:
      جموں وکشمیر: ایک اور عام شہری پر چلائی گئی گولی، زخمی حالت میں اسپتال میں داخل

      اٹھ رہے ہیں سوال
      درخواست میں کہا گیا ہے کہ 12 مئی کو کشمیر کے بڈگام ضلع میں 35 سالہ راہول بھٹ کو دہشت گردوں نے ہلاک کر دیا تھا۔ راہل کشمیری تارکین وطن کے لیے شروع کی گئی پردھان منتری وشیش روزگار یوجنا کے تحت کام کر رہے تھے۔ راہول کے قتل کے بعد کئی سوالات اٹھائے گئے جیسے کہ دہشت گردوں نے انہیں کیسے پہچان لیا اور دفتر کے اندر صرف ایک ہندو کو قتل کر دیا۔

      یہ بھی پڑھیں:
      جموں وکشمیر: کولگام میں استانی کے قتل کے خلاف کشمیری پنڈت ملازمین نے کیا احتجاج

      ہندووں کی حفاظت کو یقینی بنایا جائے
      کشمیر میں اقلیتی ہندوؤں کو نشانہ بنانے اور ان کے قتل کے واقعات کو روکنے اور ہندوؤں کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لیے فوری کارروائی کرنے اور ایک جامع طریقہ کار وضع کرنے کی اشد ضرورت ہے۔ کشمیری ہندوؤں کے تحفظ کو یقینی بنانا حکومت ہند کی ذمہ داری ہے۔ خط میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ حکومت ہند کو کشمیر میں اقلیتی ہندوؤں کو فوری تحفظ فراہم کرنے کی ہدایت کی جائے اور اس کے لیے ایک طریقہ کار تشکیل دیا جائے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: