உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Delhi Jahangirpuri violence: جہانگیرپوری میں پھر ہنگامہ، ملزم کو حراست میں لینے گئی پولیس ٹیم پر پتھراو، ایک جوان زخمی

    Jahangirpuri Violence : جہانگیرپوری میں پھر ہنگامہ، ملزم کو حراست میں لینے گئی پولیس ٹیم پر پتھراو، ایک جوان زخمی

    Jahangirpuri Violence : جہانگیرپوری میں پھر ہنگامہ، ملزم کو حراست میں لینے گئی پولیس ٹیم پر پتھراو، ایک جوان زخمی

    Delhi Violence News : دہلی کے جہانگیر پوری میں ہنومان جینتی کے موقع پر تشدد کے معاملہ میں ایک اور بڑی خبر سامنے آئی ہے۔ دہلی کے جہانگیر پوری میں تشدد کے دو دن بعد آج یعنی پیر کی سہ پہر کرائم برانچ کی ٹیم پر پتھراؤ کیا گیا۔

    • Share this:
      نئی دہلی: دہلی کے جہانگیر پوری میں ہنومان جینتی کے موقع پر تشدد کے معاملہ میں ایک اور بڑی خبر سامنے آئی ہے۔ دہلی کے جہانگیر پوری میں تشدد کے دو دن بعد آج یعنی پیر کی سہ پہر کرائم برانچ کی ٹیم پر پتھراؤ کیا گیا۔ بتایا جا رہا ہے کہ جہانگیر پوری تشدد معاملہ میں ایک خاتون سے پوچھ گچھ کرنے گئی دہلی پولیس کی کرائم برانچ ٹیم پر پتھراؤ کیا گیا، جس میں ایک پولس اہلکار زخمی ہو گیا ہے ۔ حالانکہ ایک سنگ باز کو حراست میں لے لیا گیا ۔

       

      یہ بھی پڑھئے : Jahangirpuri Violence کی 14 ٹیمیں کررہی ہیں جانچ، اب تک 23 گرفتار، راکیش استھانہ نے کہا: قصورواروں کو بخشیں گے نہیں


      خبر رساں ایجنسی نے پتھراؤ کے واقعہ کی ایک تصویر شیئر کی ہے، جس میں سڑک پر پتھر کو دیکھا جا سکتا ہے۔ حالانکہ اس پر پولیس کا بیان بھی سامنے آگیا ہے۔ پولیس نے تسلیم کیا کہ آج ہلکے پتھراؤ کا واقعہ پیش آیا۔ پولیس نے واضح طور پر کہا کہ یہ ایک معمولی واقعہ تھا ۔ پتھراؤ کرنے والے ایک ملزم کو بھی دہلی پولیس نے حراست میں لے لیا ہے ۔

       

      یہ بھی پڑھئے : جوہر یونیورسٹی زمین معاملہ میں اعظم خان کو راحت، سپریم کورٹ نے ہائی کورٹ کے حکم پر لگائی روک


      بتایا جا رہا ہے کہ پولیس ہفتہ کو ہوئی جھڑپ کے سلسلہ میں پوچھ گچھ کے لیے ایک خاتون کو لے جانے کیلئے گئی تھی۔ تبھی علاقہ کی تقریباً 50 خواتین نے دہلی کے جہانگیر پوری میں احتجاج اور پتھراؤ شروع کر دیا۔ بتایا جا رہا ہے کہ پولیس نے جس خاتون کو حراست میں لیا ہے ، وہ ملزم سونو کی بیوی ہے، جس نے ہفتہ کو ہوئے تشدد کے دوران مبینہ طور پر فائرنگ کی تھی۔ خاتون کو پولیس پوچھ گچھ کیلئے لے جانے کے بعد پیر کو الگ الگ گھروں کی چھتوں سے پولیس ٹیم پر پتھراؤ کیا گیا۔

      غور طلب ہے کہ جہانگیر پوری میں ہنومان جینتی کے موقع پر نکالے گئے جلوس کے دوران دو کمیونٹیوں کے درمیان پتھراؤ اور آتش زنی کے واقعات پیش آئے جس میں آٹھ پولیس اہلکار اور ایک مقامی شخص زخمی ہو گئے تھے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: