உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کرناٹک کے بعد اب راجستھان میں Hijab Row، طالبات کو کالج میں نہیں دی گئی انٹری، جم کر ہنگامہ

    کرناٹک کے بعد اب راجستھان میں Hijab Row، طالبات کو کالج میں نہیں دی گئی انٹری

    کرناٹک کے بعد اب راجستھان میں Hijab Row، طالبات کو کالج میں نہیں دی گئی انٹری

    Hijab Row Reach Jaipur: کرناٹک (karnataka Hijab Row) کے بعد اب راجستھان (Hijab Controversy Reach Rajasthan) میں حجاب کو لے کر تنازعہ سامنے آیا ہے۔ جے پور (Jaipur News) کے ایک پرائیویٹ کالج میں برقعہ اور حجاب پہن کر آئیں طالبات کو انٹری نہیں دی گئی۔ طالبات نے الزام لگایا ہے کہ کالج انتظامیہ نے ڈریس کوڈ کا حوالہ دے کر انہیں واپس گھر بھیج دیئے۔ اس کے بعد اہل خانہ کالج پہنچے اور تنازعہ ہوا۔ حادثہ کی جانکاری ملتے ہی پولیس موقع پر پہنچی اور معاملہ سنبھالا۔ دوسری جانب کالج کے سکریٹری راجندر شرما کا کہنا ہے کہ کالج نے سبھی طلبہ وطالبات کے لئے ڈریس کوڈ طے کئے ہیں۔ کچھ طالبات ڈریس کوڈ میں نہیں آئی تھی۔

    • Share this:
      جے پور: کرناٹک (Karnataka Hijab Row) کے بعد اب راجستھان (Hijab Controversy Reach Rajasthan) میں حجاب تنازعہ کی انٹری ہوگئی ہے۔ جے پور (Jaipur) ضلع کے چاکسو قصبے میں ایک پرائیویٹ کالج میں برقعہ اور حجاب کو لے کر انتظامیہ نے طالبات کو انٹری نہیں دی ہے۔ اسے لے جم کر تنازعہ ہوگیا۔ پولیس نے کالج میں پہنچ کر معاملے کو ختم کرایا۔ موصولہ اطلاع کے مطابق، قصبے کے کے ڈی / کستوری دیوی کالج میں مسلم طالبات جمعہ کو صبح کالج میں برقعہ اور حجاب پہن کر جیسے پہنچی تو کالج انتظامیہ نے انہیں ڈریس کوڈ نہیں پہن کر آنے پر اہم گیٹ پر روک دیا۔ پھر واپس گھر سے ڈریس کوڈ پہن کر آنے کے لئے بھیج دیا۔ طالبات نے اس کی جانکاری اپنے اہل خانہ کو دی۔ اس کے بعد سبھی کالج پہنچے اور تمام جانکاری کالج انتظامیہ سے لی۔ لوگوں نے اس بات پر جم کر ناراضگی ظاہر کی۔

      معاملہ آگے طول پکڑتا اس سے قبل پولیس موقع پر پہنچ گئی اور طالبات اور اہل خانہ کو سمجھا کر معاملہ ختم کرایا۔ اس کے بعد اہل خانہ واپس گھر پر آگئے۔ وہیں اسی معاملے کو لے کر پولیس نے تھانے میں سی ایل جی کی میٹنگ بلوائی ہے۔ وہیں اس معاملے میں کالج کے سکریٹری راجیندر شرما نے بتایا کہ کالج نے سبھی طلبہ وطالبات کے لئے ڈریس کوڈ طے کئے ہوئے ہیں۔ اسی معاملے کو لے کر جمعرات کو کچھ طالبات ڈریس کوڈ میں نہیں آئی تھیں۔ اس پر طالبات نے کالج انتظامیہ کو یہ کہا تھا کہ وہ جمعہ سے کالج میں ڈریس پہن کر آجائیں گی۔

      تھانے میں سی ایل جی کی میٹنگ بلائی گئی

      راجندر شرما کا کہنا ہے کہ جمعہ کو کالج میں وہ طالبات واپس ڈریس کوڈ نہیں پہن کر برقعہ اور حجاب پہن کر آگئیں۔ اس پر کالج انتظامیہ نے انہیں واپس یہ کہہ کر گھر بھیج دیا کہ کالج کی ڈریس پہن کر آئیں۔ ان کا کہنا ہے کہ انہیں طالبات کے حجاب پہن کر آنے پر اعتراض نہیں ہے، لیکن کالج کے ضوابط پر عمل کرنا ہی ہوگا۔ یونیورسٹی میں ڈریس میں ہی رہنا ہوگا۔

      وہیں تھانہ انچارج یشونت یادو نے اس معاملے میں کہا کہ ان کی ڈیوٹی اسمبلی انتخابات میں لگی ہوئی تھی اور انہیں جیسے جانکاری ملی تو اس کے لئے تھانے میں سی ایل جی کی میٹنگ بلوائی گئی ہے۔ معاملہ آپسی سمجھداری کا ہے۔ لڑکیوں کے مستقبل کو دھیان میں رکھتے ہوئے غیر ضروری طول دینا چاہئے۔ اچھا ہو کہ بات چیت صرف طالبات کے سرپرستوں اور کالج انتظامیہ کے درمیان خوشگوار ماحول میں معاملہ حل ہو جائے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: