உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بزرگ خاتون سے عیاشی کے لئے دو نوجوانوں نے مانگی ’لڑکی‘، نہیں دی تو کار سے روند کر مار ڈالا

    Dalit woman murder in Jalore: راجستھان کے جالور ضلع کے سانچور علاقے میں ایک بزرگ دلت خاتون کی بربریت کے ساتھ روند کر قتل کردیا گیا۔ ملزمین نے بزرگ خاتون کے گھر میں گھس کر عیاشی کے لئے لڑکی کی ڈیمانڈ کی تھی۔ خاتون نے جب منع کیا تو ملزمین نے اسے موقع پر ہی کچل ڈالا۔ اس سے خاتون کی موت ہوگئی۔ واردات کے بعد علاقے کے لوگ غصے میں ہیں۔ پولیس نے ملزمین کو گرفتار کرلیا ہے۔

    Dalit woman murder in Jalore: راجستھان کے جالور ضلع کے سانچور علاقے میں ایک بزرگ دلت خاتون کی بربریت کے ساتھ روند کر قتل کردیا گیا۔ ملزمین نے بزرگ خاتون کے گھر میں گھس کر عیاشی کے لئے لڑکی کی ڈیمانڈ کی تھی۔ خاتون نے جب منع کیا تو ملزمین نے اسے موقع پر ہی کچل ڈالا۔ اس سے خاتون کی موت ہوگئی۔ واردات کے بعد علاقے کے لوگ غصے میں ہیں۔ پولیس نے ملزمین کو گرفتار کرلیا ہے۔

    Dalit woman murder in Jalore: راجستھان کے جالور ضلع کے سانچور علاقے میں ایک بزرگ دلت خاتون کی بربریت کے ساتھ روند کر قتل کردیا گیا۔ ملزمین نے بزرگ خاتون کے گھر میں گھس کر عیاشی کے لئے لڑکی کی ڈیمانڈ کی تھی۔ خاتون نے جب منع کیا تو ملزمین نے اسے موقع پر ہی کچل ڈالا۔ اس سے خاتون کی موت ہوگئی۔ واردات کے بعد علاقے کے لوگ غصے میں ہیں۔ پولیس نے ملزمین کو گرفتار کرلیا ہے۔

    • Share this:
      جالور: جالور ضلع کے سانچور علاقے میں دل کو دہلا دینے والی واردات میں دو نوجوانوں نے ایک دلت کے گھر میں جاکر عیاشی (Debauchery) کے لئے لڑکی کا مطالبہ کیا۔ گھر کی بزرگ خاتون نے جب ان کو منع کیا تو انہوں نے اسے پک اپ (کار) سے روند کر (Crushed) مار ڈالا۔ واردات کے بعد علاقے میں سنسنی پھیل گئی۔ واردات کی اطلاع پر موقع پر پہنچی پولیس نے تلاش کرکے ملزمین کو گرفتار کرلیا۔ پولیس نے مہلوک خاتون کی لاش کو پوسٹ مارٹم کے بعد اہل خانہ کو سونپ دیا ہے۔ بزرگ خاتون کی آخری رسومات ادا کردی گئی ہے۔ پولیس پورے معاملے کی جانچ میں مصروف ہے۔

      پولیس کے مطابق، واردار سانچور علاقے میں نیشنل ہائی وے کے کنارے واقع کارولا سرحد میں ہفتہ کے روز ہوئی۔ کچے جھونپڑوں کی اس بستی میں ہفتہ کی رات تقریباً 10 بجے پک اپ گاڑی سے آئے نشے میں دھت دو نوجوانوں نے ایک گھر میں گھس کر بزرگ خاتون سے غیر اخلاقی کام کے لئے لڑکی کا مطالبہ کیا۔ اسی بات کو لے کر خاتون ناراض ہوگئی۔ اس پر نوجوانوں نے بزرگ خاتون کو وہیں پک اپ سے کچل کر مار ڈالا۔

      جلدبازی میں ملزمین کے موبائل چھوٹ گئے

      ملزمین نے پک اپ کو ریورس لے کر بزرگ خاتون کے اوپر چڑھا دیا۔ پک اپ کا ٹائر بزرگ کے سر پر چڑھ گیا، جس سے وہ شدید طور پر زخمی ہوگئی۔ اس کے بعد ملزمین وہاں سے بھاگ گئے، لیکن ان کے موبائل جائے واردات پر ہی چھوٹ گئے۔ بعد میں اہل خانہ اور گاوں والے بزرگ کو اسپتال لے گئے، لیکن اسپتال لے جاتے وقت بزرگ خاتون نے راستے میں ہی دم توڑ دیا۔

      پولیس نے چھ گھنٹے کے اندر ملزمین کو دبوچا

      اطلاع پر پولیس موقع پر پہنچی اور حالات کا جائزہ لیا۔ پولیس نے موقع پر ملے ملزمین کے موبائل کی بنیاد پر دونوں کی تلاش شروع کردی۔ تحقیقات کرنے کے بعد پولیس نے ملزمین کو چھ گھنٹے کے اندر چتلوانا تھانہ علاقے کے ڈاول سے ان کے گھر پر دبش دے کر پکڑ لیا۔ اتوار کے روز دوپہر بعد بزرگ کا آخری رسوم کیا گیا۔ اس کے بعد اہل خانہ نے معاملے کی منصفانہ جانچ کرکے ملزمین کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔

      مہلوک کے پوتے نے درج کرایا معاملہ

      پولیس نے مہلوک کے پوتے کی رپورٹ پر معاملہ درج کرتے ہوئے جانچ شروع کردی ہے۔ رپورٹ میں اس نے بتایا کہ ہفتہ کی رات کھانا کھانے کے بعد گھر میں سب الاو تاپ رہے تھے۔ اس دوران ایک پک اپ گاڑی آئی۔ اس میں دو نوجوان تھے۔ نوجوانوں نے نیچے اترتے ہی دادی سے کسی لڑکی کے بارے میں پوچھا۔ دادی کے ذریعہ منع کردینے سے دونوں ناراض ہوگئے۔ انہوں نے گاڑی کو تیز رفتار سے ریورس لیتے ہوئے دادی پر چڑھا دیا، جس سے ان کی موت ہوگئی۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: