ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

Lakshadweep draft proposals:لکشادیپ میں مجوزہ نئےقوانین آمرانہ اورعوام مخالف:جماعت اسلامی ہند

ریگولیشن میں ایک غنڈہ ایکٹ بھی شامل ہے۔ اس قانون کے ذریعہ وہاں اٹھنے والی کسی بھی مخالفانہ آواز کو کچلنے کا پورا اختیار وہاں کے انڈمنسٹریٹر کو دیا گیا ہے جو شہریوں کے بنیادی حقوق کی پامالی ہے۔

  • Share this:
Lakshadweep draft proposals:لکشادیپ میں مجوزہ نئےقوانین آمرانہ اورعوام مخالف:جماعت اسلامی ہند
ریگولیشن میں ایک غنڈہ ایکٹ بھی شامل ہے۔ اس قانون کے ذریعہ وہاں اٹھنے والی کسی بھی مخالفانہ آواز کو کچلنے کا پورا اختیار وہاں کے انڈمنسٹریٹر کو دیا گیا ہے جو شہریوں کے بنیادی حقوق کی پامالی ہے۔

جماعت اسلامی ہند کے نائب امیر پروفیسر محمد سلیم انجینئر نے لکشادیپ ڈیولپمنٹ اتھارٹی ریگولیشن 2021 میں درج بعض قوانین کو غیر جمہوری اور عوام مخالف قرار دیا ہے۔ آپ نے کہا کہ غیر جمہوری انداز میں تدوین کئے گئے مذکورہ قوانین لکشادیپ کے عوام کی بہبودی اور ترقی کے بجائے لکشادیپ میں بڑے کارپوریٹ کو یہاں ٹوریزم کو فروغ دینے کی راہیں فراہم کرتے ہیں۔اس چھوٹے جزیرہ میں جس کی کل آبادی تقریباً 70 ہزار ہے، ریگولیشن میں ایک غنڈہ ایکٹ بھی شامل ہے۔ اس قانون کے ذریعہ وہاں اٹھنے والی کسی بھی مخالفانہ آواز کو کچلنے کا پورا اختیار وہاں کے انڈمنسٹریٹر کو دیا گیا ہے جو شہریوں کے بنیادی حقوق کی پامالی ہے۔


پروفیسر محمد سلیم انجینئر نے سوال کیا کہ ایک ایسا خطہ جہاں جرائم کی شرح نہیں کے برابر ہے، وہاں ایسے قانون کی کیا ضرورت ہے؟ ریگولیشن کے ایک قانون کے تحت ایڈمنسٹریٹر کو یہ حق حاصل رہے گا کہ وہ مفاد عامہ، مائننگ (کان کنی) اور جزیرہ کی ترقی کے لئے کسی کی بھی زمین کو ان کاموں کے لئے حکومت کی تحویل میں لے سکتا ہے۔ کان کنی اور ہائی ویز یہ دونوں کام جزیرہ کے ماحولیاتی تواز ن کو بگاڑ سکتے ہیں۔ اتنا ہی نہیں ترقی کے نام پر خدشہ یہ ہے کہ حکومت بڑی بڑی زمینات اپنے قبضہ میں لے کر بڑے کارپوریٹ ہاؤسیز کو کرائے پر دے سکتی ہے۔


پروفیسر سلیم صاحب نے اس پر حیرت کا اظہار کیا کہ نئے قوانین میں پنچایتی انتخابات میں حصہ لینے کے لئے امیدوار پر یہ شرط لگائی گئی ہے کہ اسے دو سے زائد بچے نہ ہوں۔ یہ انتہائی غیر جمہوری شرط ہے اور شاید ہی اس کی نظیر کہیں اور ملتی ہوگی۔ آپ نے کہا کہ بظاہر بعض قوانین بڑے بھلے محسوس ہوتے ہیں لیکن اس کے پس پردہ مقامی آبادی کو تنگ کرکے انہیں نقل مکانی پر مجبور کرنا ہے تاکہ سارے جزیرے کو تفریح کا اڈہ بنایا جاسکے۔ آپ نے حکومت سے اپیل کی ہے کہ ان قوانین کو واپس لے۔آپ نے جزیرے کے عوام سے اپنی یگانگت کا بھی اظہار کیا ہ

Published by: Mirzaghani Baig
First published: May 29, 2021 01:02 AM IST