உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Madhya Pradesh: کھرگون میں حکومت اور انتظامیہ نے راج دھرم پرنہیں کیا عمل، جمعیۃ علماء کی پولیس انتظامیہ سے ملاقات

    کھرگون میں حکومت اور انتظامیہ نے راج دھرم پر نہیں کیا گیا عمل، جمعیۃ علماء

    کھرگون میں حکومت اور انتظامیہ نے راج دھرم پر نہیں کیا گیا عمل، جمعیۃ علماء

    کھرگون فساد متاثرین اور حکومت کی انہدامی کارروائی کو لے کر جمعیت علما کے اعلی سطحی وفد نے کھرگون کا دورہ کیا اور فساد متاثرین کے زمینی حقائق کو جاننے کے لئے متاثرین کے ساتھ پولیس انتظامیہ کے اعلی حکام سے بھی ملاقات کی۔

    • Share this:
    بھوپال: مدھیہ پردیش کے کھرگون میں 10 اپریل کو ہوئے فرقہ وارانہ فساد کے بعد حالات گرچہ ساز گار ہوگئے ہیں، مگر فساد متاثرین کے زخم اب بھی ہرے ہیں۔ فساد کے ایک ماہ بعد بھی بے قصور مسلمانوں کی نہ تو رہائی کی گئی ہے اور حکومت کے ذریعہ جانب داری کا مظاہرہ کرتے ہوئے جو یکطرفہ کاروائی کی گئی تھی اس کے متاثرین کی باز آبادکاری کا بھی تک انتظام نہیں کیا گیا ہے۔ کھرگون فساد متاثرین اور حکومت کی انہدامی کارروائی کو لے کر جمعیۃ علماء ہند کے اعلی سطحی وفد نے کھرگون کا دورہ کیا اور فساد متاثرین کے زمینی حقائق کو جاننے کے لئے متاثرین کے ساتھ پولیس انتظامیہ کے اعلی حکام سے بھی ملاقات کی۔
    جمعیۃ علما کے وفد میں مرکزی جمعیۃ علما کی جانب سے مولانا حکیم الدین قاسمی نے شرکت کی جبکہ مدھیہ پردیش جمعیۃ علما کے صدر حاجی محمد ہارون کے ساتھ کھرگون جمیعۃ علما کے وفد نے مشترکہ طور پر کھرگون فسات متاثرین سے ملاقات کرکے نہ صرف حالات کا جائزہ لیا بلکہ فساد متاثرین کی ہر ممکن مدد کرنے کے ساتھ ان کی بازآبادکاری کا بھی یقین دلایا۔

    یہ بھی پڑھیں۔

    اعظم خان کو ملی ضمانت، لیکن جیل میں ہی رہیں گے سماجوادی پارٹی کے سینئر لیڈر
    مدھیہ پردیش جمعیۃ علما کے صدر حاجی محمد ہارون نے نیوز 18 اردو سے خاص ملاقات میں بتایا کہ کھرگون میں حکومت اور انتظامیہ نے راج دھرم کا پالن نہیں کیا، جس کے سبب حالات نہ گفتہ بہ ہوئے۔ہماری کوشش ہے کہ کھرگون میں امن و امان قائم ہو۔ امن و امان قائم کرنے کے لئے ہی جمعیۃ علما کے اعلی سطحی وفد نے کھرگون کا دورہ کیا اور متاثرین کے ساتھ ضلع انتظامیہ کے اعلی حکام سے بھی بات کی ہے۔

    کھرگون فساد متاثرین کی جلد سے جلد باز آباد کاری ہو، جن لوگوں کے مکانات منہدم کئے گئے ہیں انہیں سرچھپانے کی جگہ ہو اور جن کے روزگار پر بلڈوزر چلایا گیا ہے انہیں روزگار کے مواقع فراہم ہو سکیں۔ اس پہلو پر جمعیۃ علما کے ذریعہ کام کیا جا رہا ہے۔ میں یہاں یہ بھی بتانا چاہتا ہوں کہ ہمیں یہ خبر ملی ہے کہ فساد کے دوران کچھ لوگوں کے ذریعہ خاکی پہن کر لوٹ مار کی گئی ہے، لیکن ایسے لوگوں پر ابھی تک کوئی کاروائی نہیں کی گئی ہے۔ ایسے لوگوں پر سخت کارروائی کی جانی چاہئے، جنہوں نے لوٹ مار کا کام کیا ہے۔ حکومت کا کام کسی کو سزا دینا ہے۔ اس کے لئے ملک میں عدالت کا مستحکم نظام قائم ہے۔
    جمیعۃ علما ہند کے جنرل سکریٹری مولانا حکیم الدین قاسمی نے نیوز 18 اردو سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ جمیعت علما ملک بھر میں امن وامان کے لئے کام کرتی ہے اور آگے بھی کرتی رہے گی۔ کھرگون فساد متاثرین کی جو بھی ممکن مدد ہوگی، جمیعۃ علما ہند کے ذریعہ مدد کی جائے گی۔
    Published by:Nisar Ahmad
    First published: