ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

Jammu Airforce Station Blast: جموں ایئربیس پر 100 میٹر اونچائی سے دھماکہ خیز اشیا گراکر واپس لوٹ گئے 2 ڈرون

جموں وکشمیر (Jammu Kashmir) میں ایئر فورس اسٹیشن (Airforce Station Blast) پر ہوئے حملے میں استعمال کئے گئے ڈرونس میں دو کلو آئی ای ڈی کا استعمال کیا گیا تھا۔

  • Share this:
Jammu Airforce Station Blast: جموں ایئربیس پر 100 میٹر اونچائی سے دھماکہ خیز اشیا گراکر واپس لوٹ گئے 2 ڈرون
جموں ایئربیس پر 2 ڈرون نے 100 میٹر اونچائی سے گرایا دھماکہ خیز اشیا اور لوٹ گئے واپس

سری نگر / نئی دہلی: جموں وکشمیر (Jammu Kashmir) میں ایئر فورس اسٹیشن (Airforce Station Blast) پر ہوئے حملے میں استعمال کئے گئے ڈرونس میں دو کلو آئی ای ڈی کا استعمال کیا گیا تھا۔ ابتدائی جانچ میں یہ سامنے آیا ہے کہ اس حملے میں دو ڈرونس کا استعمال کیا گیا اور ’ہائی گریڈ‘ کی دھماکہ خیز اشیا گرائی گئی۔ ایک سیکورٹی افسر نے کہا کہ ’ہم نے بیس پر سنتری نے دو الگ الگ آوازیں سنیں اور اس کے بعد 6 منٹ کے فرق پر دو دھماکے ہوئے۔ جائے واردات پر ڈرون کا کوئی حصہ نہیں ملا، ایسے میں خدشہ ہے کہ یہ ڈرون دھماکہ خیز اشیا گرا کر واپس چلے گئے۔


نیشنل سیکورٹی گارڈ (این ایس جی) اور قومی تفتیشی ایجنسی (این آئی اے) کے بم ڈیٹا سینٹر کی ایک ایک ٹیم نے ہندوستانی فضائیہ کے اڈے پر جانچ کی۔ وہیں جموں پولیس نے دہشت گردی کی دفعات کے معاملہ درج کرلیا ہے۔ انگریزی اخبار ’دی انڈین ایکسپریس کے مطابق، ایک دیگر افسر نے کہا کہ ’ابتدائی جانچ کے مطابق دھماکہ خیز اشیا کم از کم 100 میٹر کی اونچائی سے گرایا گیا ہوگا۔ آئی ای ڈی کو امپیکٹ چارج سے لیس کیا گیا تھا، جس میں دھماکہ یا تو فوراً یا کچھ دیر بعد ہوتا ہے۔


ہر ڈرون پر دو کلو سے زیادہ دھماکہ خیز اشیا


افسر نے کہا ’ہر ڈرون پر دو کلو سے زیادہ دھماکہ خیز اشیا تھی۔ دھماکہ ہائی گریڈ کے تھے اور یہ آرڈی ایس ہوسکتے ہیں، لیکن فورنسک جانچ کے بعد ہی کسی فیصلے پر پہنچا جاسکتا ہے‘۔ ذرائع نے کہا کہ ڈرون کہا سے اڑے، اس کی فی الحال جانچ کی جارہی ہے۔

رپورٹ کے مطابق، جموں وکشمیر کے ایک پولیس افسر نے کہا ’خدشہ ہے کہ ڈرون پاکستان سے آئے تھے کیونکہ ڈرون پہلے جموں میں ہتیار گراچکے ہیں۔ سرحد سے بیس کی دوری محض 14 کلو میٹر ہے۔ حالانکہ اس بات کے خدشات سے انکار نہیں کیا جاسکتا ہے کہ یہ ڈرون کسی مقامی جگہ سے نہ اڑا ہو‘۔

 

 

دوسری طرف ایک دیگر افسر نے کہا کہ ’ڈرونس اپنا نشانہ چوک گئے کیونکہ اس حملے میں کوئی بڑا نقصان نہیں ہوا ہے۔ ایسا لگ رہا ہے کہ حملہ آور یہ دکھانے کی کوشش میں تھے کہ وہ ہندوستانی سیکورٹی اداروں کو نشانہ بنا سکتے ہیں‘۔

 

 
Published by: Nisar Ahmad
First published: Jun 28, 2021 09:38 AM IST