ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

جموں و کشمیر کے انجنیئر کا کارنامہ، اپنے ساتھی کے ساتھ مل کر تیارکیا مفت آن لائن ایجوکیشن ایپ

سری نگر سے تعلق رکھنے والے مبین مسعودی نے اپنے ساتھی بلال عابدی کے ساتھ ملکر مفت آن لائن ایجوکیشن ایپ جاری کیا ہے۔ یہ دونوں نوجوان آئی آئی ٹی ممبئی سے فارغ ہیں۔ ان دنوں ملک کے آئی ٹی شہر بنگلورو میں مقیم ہیں۔

  • Share this:
جموں و کشمیر کے انجنیئر کا کارنامہ، اپنے ساتھی کے ساتھ مل کر تیارکیا مفت آن لائن ایجوکیشن ایپ
جموں و کشمیر کے انجنیئر کا کارنامہ، اپنے ساتھی کے ساتھ مل کر تیارکیا مفت آن لائن ایجوکیشن ایپ

بنگلورو: دنیا بھر میں آن لائن تعلیم کا نظام تیزی کے ساتھ فروغ پارہا ہے۔ لاک ڈاؤن اور کورونا وائرس کی وبا کے دوران انٹرنیٹ ذریعہ تعلیم کی ضرورت اور مانگ بڑھ رہی ہے۔  اس شعبہ میں وادی کشمیر کے سافٹ ویئر انجنئیر مبین مسعودی نے ایک بڑا کارنامہ انجام دیا ہے۔ سری نگر سے تعلق رکھنے والے مبین مسعودی نے اپنے ساتھی بلال عابدی کے ساتھ مل کر مفت آن لائن ایجوکیشن ایپ جاری کیا ہے۔ یہ دونوں نوجوان آئی آئی ٹی ممبئی سے فارغ ہیں۔ ان دنوں ملک کے آئی ٹی شہر بنگلورو میں مقیم ہیں۔ انہوں نے خاص طور پر وادی کشمیر کے حالات کو ذہن میں رکھتے ہوئے اور موجودہ دور میں آن لائن ذریعہ تعلیم کے مسائل کو دھیان میں رکھتے ہوئے آن لائن ایپ ڈیولپ کیا ہے۔ اس سہولت کا نام ہے "وائز ایپ"( Wise App )۔


مبین مسعودی کہتے ہیں کہ وائز ایپ کی سب سے بڑی خصوصیت یہ ہے کہ یہ ٹو جی انٹرنیٹ نیٹ ورک میں بھی آسانی کے ساتھ کام کرسکتا ہے۔ ٹیچر ہوں، طلبہ ہوں یا پھر والدین آسانی کے ساتھ اس فری ایپ کو اپنے موبائل فون پر استعمال کرسکتے ہیں۔ مبین مسعودی کہتے ہیں کہ ان دنوں جموں و کشمیر میں ٹو جی نیٹ ورک موجود ہے اور وہ خود کشمیر میں بطور ٹیچر 8 سال تک کام کرچکے ہیں، آن لائن تعلیم کے مسائل سے واقف ہیں، اس لئے ایک نیا اپلیکیشن ڈیولپ کرنے کی ضرورت کو شدت کے ساتھ محسوس کررہے تھے۔ لہذا انہوں نے اپنے ساتھی بلال عابدی کے ساتھ ملکر اس ایپ پر کام کرنا شروع کیا۔15 جولائی 2020 سے اس پراجیکٹ پر کام کرتے ہوئے محض 13 دنوں کے وقفہ میں یعنی 28 جولائی کو اس اپلیکیشن کو لانچ کیا۔ وائز ایپ نامی یہ اپلیکیشن پلے اسٹور میں موجود ہے اور مفت طور پر ڈاؤن لوڈ کیا جاسکتا ہے۔


سری نگر سے تعلق رکھنے والے مبین مسعودی نے اپنے ساتھی بلال عابدی کے ساتھ ملکر مفت آن لائن ایجوکیشن ایپ جاری کیا ہے۔ یہ دونوں نوجوان آئی آئی ٹی ممبئی سے فارغ ہیں۔
سری نگر سے تعلق رکھنے والے مبین مسعودی نے اپنے ساتھی بلال عابدی کے ساتھ ملکر مفت آن لائن ایجوکیشن ایپ جاری کیا ہے۔ یہ دونوں نوجوان آئی آئی ٹی ممبئی سے فارغ ہیں۔


اترپردیش سے تعلق رکھنے والے بلال عابدی نے کہا کہ کوئی بھی شخص اینڈراویڈ پلے اسٹور سے، آئی او ایس سے یا پھر ویب سے اس ایپ کو استعمال کرسکتا ہے۔ اس ایپ کے ذریعہ ٹیچر اور طلبہ کے درمیان فوری طور پر رابطہ قائم ہوگا۔ ایک ٹیچر اپنی آن لائن کلاس میں ایک ساتھ کئی طلبہ کو شامل کرسکتا ہے۔ نہ صرف ایک علاقے، ریاست بلکہ دنیا بھر کے طلبہ ایک ٹیچر کی کلاس میں شرکت کرسکتے ہیں۔ اس ایپ میں بنائی جانے والی ایک کلاس میں طلبہ کی تعداد کی کوئی قید نہیں ہے۔ مبین مسعودی نے کہا کہ عام طور پر آن لائن طریقہ تعلیم میں طلبہ ایک دوسرے کے فون نمبروں سے واقف ہوجاتے ہیں۔ چند طلبہ کیلئے یہ ایک بڑی پریشانی کا سبب بنا ہوا تھا لیکن وائز ایپ میں اس مسئلہ کو دور کیا گیا ہے۔ صرف ٹیچر طلبہ کے فون نمبروں کو دیکھ سکتے ہیں۔ کوئی بھی صارف دوسرے کے نمبر کو نہیں دیکھ سکتا۔ مبین مسعودی نے کہا کہ آن لائن تعلیم کے دوران اسٹوریج کا  مسئلہ ٹیچر اور طلبہ کیلئے پریشانی کا سبب رہا ہے۔ ایک ہفتے کے اندر ہی موبائل فون کا اسٹوریج فل ہوجاتا ہے۔ لیکن اس ایپ کو Cloud اسٹوریج سے جوڑ دیا گیا ہے۔

مبین کہتے ہیں کہ Wise ایپ میں ٹیچر آسانی کے ساتھ لائیو کلاس چلا سکتے ہیں۔ بچوں کو ہوم ورک دے سکتے ہیں،بچوں سے بات چیت کرسکتے ہیں، بچوں کے شبہات کو دور کرسکتے ہیں۔ اس طرح کی تمام تر سہولیات ایپ میں فراہم کی گئی ہیں۔بلال اکبری نے کہا کہ فی الوقت 4000 ٹیچرز وائز ایپ کا استعمال کررہے ہیں۔ کئی اسکول اور کالجوں نے اس ایپ کو اختیار کیا ہے۔ بلال کہتے ہیں کہ ان کیلئے خوشی کی بات یہ ہے کہ مرکزی وزارت فروغ انسانی وسائل نے بھی اس ایپ کی ستائش کی ہے۔مبین اور بلال نے دعوٰی کیا ہے کہ جدید ترین انفارمیشن ٹیکنالوجی سے بنایا گیا یہ ایپ محفوظ اور بھروسہ مند ہے۔ ان دونوں نوجوانوں نے کہا کہ آئی آئی ٹی ممبئی سے فارغ ہونے کے بعد انہوں نے ملک کی تعلیمی ترقی کیلئے کچھ کرنے کا عزم ٹھان لیا تھا۔ لاک ڈاؤن اور کورونا کی وبا کے دوران آن لائن ذریعہ تعلیم کے کئی مسائل کو دیکھتے ہوئے، ایک نئے انداز میں اپلیکیشن تیار کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔ انہوں نے امید ظاہر کی ہے کہ یہ ایپ نہ  صرف جموں و کشمیر بلکہ پورے ہندوستان اور پوری دنیا کی ضرورت بنے گا۔ آنے والے دنوں مزید اضافی سہولیات فراہم کرنے کے سلسلے میں بھی مبین اور بلال اس اپلیکیشن پر کام کررہے ہیں۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Sep 09, 2020 11:37 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading