کشمیری نوجوان کو جیپ سے باندھنے والے میجر گوگوئی کو ملی سزا ، کم کردی گئی سینئریٹی

سال 2017 میں ایک کشمیری نوجوان کو جیپ پر باندھ کر انسانی ڈھال کی طرح استعمال کرنے کے بعد تنازع میں آئے ہندوستانی فوج کے میجر لیتل گوگوئی کی سینئریٹی کم کردی گئی ہے ۔

May 06, 2019 08:57 AM IST | Updated on: May 06, 2019 08:57 AM IST
کشمیری نوجوان کو جیپ سے باندھنے والے میجر گوگوئی کو ملی سزا ، کم کردی گئی سینئریٹی

میجر لیتل گوگوئی ۔ فائل فوٹو

سال 2017 میں ایک کشمیری نوجوان کو جیپ پر باندھ کر انسانی ڈھال کی طرح استعمال کرنے کے بعد تنازع میں آئے ہندوستانی فوج کے میجر لیتل گوگوئی کی سینئریٹی کم کردی گئی ہے ۔ گوگوئی پر ایک مقامی خاتون کے ساتھ دوستی کرنے کا الزام ثابت ہوگیا ہے ، جس کے بعد انہیں وادی کشمیر سے بھی باہر بھیج دیا گیا ہے ۔

فوج کے افسران نے اتوار کو بتایا کہ کورٹ مارشل کی کارروائی کے دوران میجر گوگوئی اور ان کے ڈرائیور سمیر ملا کو ملیٹری کوڈ کی خلاف ورزی کا قصوروار پایا گیا ہے ۔ گوگوئی نے نہ صرف مقامی خاتون سے نزدیکیاں بڑھائیں بلکہ کمانڈ پوسٹ سے بھی کسی جانکاری کے بغیر غیر حاضر پائے گئے ۔ سمیر ملا کی یونٹ کے کمپنی کمانڈر کو اس کی سزا پر فیصلہ لینے کا اختیار دیا گیا ہے ، جس میں اس کو سخت پھٹکار لگائی جاسکتی ہے ۔ سمیر ملا پر بھی ڈیوٹی کے دوران کہیں اور پائے جانے کا الزام ثابت ہوگیا ہے ۔

Loading...

خیال رہے کہ گوگوئی اور ڈرائیور سمیر ملا کو 23 مئی 2018 کو جموں و کشمیر پولیس نے حراست میں لیا تھا ۔ ملا کا ایک ہوٹل مالک سے تنازع ہوگیا تھا اور اسی ہوٹل میں گوگوئی کسی خاتون کے ساتھ کمرہ بک کرنے کی کوشش کررہے تھے ۔ ہوٹل ملازمین نے جب شناختی کارڈ مانگا تو ملا کے ساتھ ان کی کہا سنی ہوگئی تھی ۔ خاتون نے کورٹ مارشل کارروائی کے دوران گواہی دینے پر اپنی رضامندی ظاہر نہیں کی تھی اور فوج کے افسران کو مطلع کیا تھا کہ اس نے مجسٹریٹ کے سامنے بیان دیا تھا ، اس بیان کو ہی اس کا آخری موقف مانا جائے ۔

خاتون نے اپنے بیان میں اعتراف کیا تھا کہ وہ میجر گوگوئی کے ساتھ اپنی مرضی سے گئی تھی ۔ حالانکہ خاتون نے انکشاف کیا تھا کہ گوگوئی نے عبید ارمان نام سے ایک فرضی فیس بک پروفائل بنائی ہوئی تھی اور اسی کے ذریعہ ان کی دوستی بھی ہوئی تھی ۔ گزشتہ سال اس واقعہ کے فورا بعد فوجی سربراہ بپن راوت نے کہا تھا کہ اگر میجر گوگوئی کسی جرم کے قصوروار پائے جاتے ہیں ، تو انہیں سخت سزا دی جائے گی ۔

Loading...