کشمیر میں حزب المجاہدین کی دھمکی ، اگر اسکول کھلیں گے اور لڑکیاں سڑکوں پر نکلیں گی تو ... ۔

دہشت گرد تنظیم حزب المجاہدین نے لوگوں کو خوفزدہ کرنے کیلئے جنوبی کشمیر میں کئی مقامات پر دھمکی آمیز پوسٹر چسپاں کئے ہیں ، جس میں دکان کھولنے ، اسکول جانے اور گاڑی چلانے پر سنگین نتائج بھگتنے کی دھمکی دی گئی ہے ۔

Aug 30, 2019 10:33 PM IST | Updated on: Aug 30, 2019 10:33 PM IST
کشمیر میں حزب المجاہدین کی دھمکی ، اگر اسکول کھلیں گے اور لڑکیاں سڑکوں پر نکلیں گی تو ... ۔

علامتی تصویر

دہشت گرد تنظیمیں مسلسل جموں و کشمیر کے حالات کو خراب کرنے کی کوشش کررہی ہیں ۔ اسی کے تحت دہشت گرد تنظیم حزب المجاہدین نے لوگوں کو خوفزدہ کرنے کیلئے جنوبی کشمیر میں کئی مقامات پر دھمکی آمیز پوسٹر چسپاں کئے ہیں ، جس میں دکان کھولنے ، اسکول جانے اور گاڑی چلانے پر سنگین نتائج بھگتنے کی دھمکی دی گئی ہے ۔

فوج کو جنوبی کشمیر کے کئی علاقوں میں حزب المجاہدین کے ذریعہ لگائے گئے پوسٹرس ملے ہیں ۔ ان پوسٹروں میں وہاں کے عوام کو مخاطب کرتے ہوئے لکھا گیا ہے کہ دکان کھولنے کا وقت صبح اور شام 6 سے 9 بجے تک ہی ہے ۔ دیگر اوقات میں دکانیں بند رہیں گی ۔ پوسٹر میں لکھا ہے کہ وہاں پر کوئی بھی گاڑی نہیں چلنی چاہئے ، جو گاڑیاں چل رہی ہیں ان کے نمبر ہمارے پاس ہیں ۔ یہ آخری وارننگ ہے ، اگر پھر گاڑیاں چلتی نظر آئیں تو جلا دی جائیں گی ۔

Loading...

اس کے ساتھ ہی مخبروں کو بھی وارننگ دی گئی ہے ۔ ان سے کہا گیا ہے کہ یہ آخری وارننگ ہے ۔ اگر کسی کو پولیس بلائے تو نہ جائیں ۔ حزب المجاہدین نے یہ بھی دھمکی دی ہے کہ کسی بھی گاوں میں کوئی اسکول نہیں کھلنا چاہئے ۔ ساتھ ہی لڑکیاں گھر پر رہیں ، سڑکوں پر نظر نہ آئیں ۔ پوسٹر میں لکھا ہے کہ ہم آزادی کے کافی قریب ہیں اور آپ ہمارا ساتھ دیں ، جو ان باتوں کو نظر انداز کرے گا وہ اس کا ذمہ دار خود ہوگا ۔

وہیں دوسری طرف کشمیر میں موبائل اور انٹرنیٹ بند ہونے کی وجہ سے فوج کو بھی خفیہ جانکاریاں نہیں مل پارہی ہیں ۔ فوج کے ایک سینئر افسر نے بتایا کہ ہمیں ملنے والی خفیہ جانکاریوں میں تقریبا 70 فیصد کی کمی آئی ہے ۔ لوگ فوج سے رابطہ نہیں کر پارہے ہیں ۔ حالانکہ دہشت گرد بھی آپس میں بات نہیں کر پا رہے ہیں ۔ دہشت گردوں کو تکنیک کے ذریعہ پکڑنے میں مشکل پیش آرہی ہے ۔

Loading...