سرینگر: شہرخاص کی خوبصورت بابا ڈیمب نہرکاوجود خطرے میں۔ نہرکابیشترحصہ اب دلدل میں تبدیل

یہ خوبصورت نہرتیزی کے ساتھ کچرے کے مرکز میں تبدیل ہوتی جارہی ہے۔ایک وقت وہ تھا جب لوگ اس نہر کا پانی پیتے تھے لیکن اب اس کا پانی اس قدر آلودہ ہوچکا ہے

Apr 24, 2019 04:40 PM IST | Updated on: Apr 24, 2019 04:40 PM IST
سرینگر: شہرخاص کی خوبصورت بابا ڈیمب نہرکاوجود خطرے میں۔ نہرکابیشترحصہ اب دلدل میں تبدیل

سرینگرمیں واقع شہر خاص جسے ڈاؤن ٹاؤن بھی کہاجاتا ہے۔شہر خاص،تاریخی اہمیت کا حامل ہے۔ لیکن ہرحکومت نے اس کے ساتھ سوتیلا برتاؤ کیاہے اور ترقی کے محاذ پر اسے یکسر نظر انداز کردیا ہے۔شہر خاص میں موجود آبی ذخائرکی بگڑتی حالت اس کی واضح مثال ہے۔ جن میں تاریخی بابا ڈیمب نہر بھی شامل ہے۔ اس نہرکا وجود اب خطرے میں ہے۔ ایک دور میں ڈل جھیل سے دریائے جہلم و آنچار جھیل جانے کے لئے شکارہ اور ہاؤس بوٹس اس نہر سے ہوکرگذرتی تھیں۔

لیکن فی الحال یہ خوبصورت نہرتیزی کے ساتھ کچرے کے مرکز میں تبدیل ہوتی جارہی ہے۔ایک وقت وہ تھا جب لوگ اس نہر کا پانی پیتے تھے لیکن اب اس کا پانی اس قدر آلودہ ہوچکا ہے کہ شہرخاص کے لوگوں کے لئے کئی بیماریوں کا موجب بن رہا ہے۔مقامی افراد کہتے ہیں کہ گندگی اوربدبو کی وجہ سے نہر کے قریب ٹھہرنابھی مشکل ہورہاہے۔لوگوں کےمطابق نہر کی صفائی کے لئے حکومت غیر سنجیدہ نظر آتی ہے۔حالانکہ مرکزی حکومت نے براری نمبل جھیل کی تجدید اور اس کی خوبصورتی میں اضافے کے لئے سولہ سو کروڑ روپیے سے زیادہ کی رقم مختص کی ہے تاہم اس ضمن میں ابھی تک کوئی اقدامات دیکھنے کو نہیں ملےہیں۔

باباڈیمب نہر بھی براری نمبل جھیل کے تحت ہی آتی ہے۔یہ آبی ذخیرہ تیزی کے ساتھ اپنا وجود کھوتے جارہا ہے۔نہر کا بیشتر حصہ اب دلدل میں تبدیل ہوچکاہے۔ یہاں سے بڑی ہاؤس بوٹس تو کیا، شکارہ کشتیوں کا گذرنا بھی محال ہورہا ہے۔نیوز ایٹین اردو نے جب ڈی سی سرینگر ڈاکٹر شاہد چودھری کےساتھ اس معاملے کو اٹھایا تو انہوں نے کہا کہ اسمارٹ سٹی منصوبے کے تحت بابا ڈیمب نہر کی صفائی اوراس کی شان رفتہ کی بحالی، پہلی ترجیح رہے گی۔ضرورت اس بات کی ہے کہ گورنر انتظامیہ کو شہر خاص میں ترقیاتی کاموں کے ساتھ ساتھ آبی ذخائرکے تحفظ اوران کی بحالی پر بھی خصوصی توجہ دینا چاہیے۔

Loading...

Loading...