உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ریزارٹ میں چل رہا تھا سیکس ریکٹ، گرام سبھا میں فیصلہ کرکے گاوں والوں نے بولا حملہ، دو خاتون سمیت کئی لوگوں کو بنایا یرغمال

    ریزارٹ میں چل رہا تھا سیکس ریکٹ، گرام سبھا میں فیصلہ کرکے گاوں والوں نے بولا حملہ، دو خاتون سمیت کئی لوگوں کو بنایا یرغمال

    ریزارٹ میں چل رہا تھا سیکس ریکٹ، گرام سبھا میں فیصلہ کرکے گاوں والوں نے بولا حملہ، دو خاتون سمیت کئی لوگوں کو بنایا یرغمال

    Jamshedpur Sex Racket: گاوں والوں کو تین ریزارٹ میں سیکس ریکٹ چلنے کی اطلاع ملی تھی۔ گاوں والوں نے اس کو لے کر گرام سبھا کی میٹنگ بلائی اور اس میں لئے گئے فیصلے کی بنیاد پر ریزارٹ پر دھاوا بول کر ریزارٹ کے منیجر اور دو خواتین کو رنگے ہاتھوں پکڑ لیا۔

    • Share this:
      جمشید پور: جھارکھنڈ کے بڑے شہروں میں سے ایک جمشید پور سے بڑی خبر سامنے آئی ہے۔ ضلع کے دیہی علاقے میں آنے والے ایک گاوں کے باشندوں نے گرام سبھی کی میٹنگ بلاکر اس میں پاس میں ہی واقع 3 ریزارٹ میں چل رہے سیکس ریکٹ کا پردہ فاش کرنے کا فیصلہ لیا گیا۔ اس کے بعد گاوں والوں نے مناسب وقت دیکھ کر تینوں ریزارٹ پر ایک ساتھ دھاوا بول دیا۔ موقع پر سے دو خواتین کے علاوہ سبھی ریزارٹ کے منیجر کو یرغمال بنا لیا گیا۔ اطلاع کے مطابق، کچھ گراہک بھی پکڑے گئے تھے، جنہیں گاوں والوں نے چھوڑ دیا۔

      میڈیا رپورٹس کے مطابق، جمشید پور میں منصوبہ بند طریقے سے چل رہے سیکس ریکٹ کا انکشاف اتوار کو ہوا۔ الزام ہے کہ جمشید پور ضلع کے بوڑام تھانہ علاقے کے مرزا ڈیہہ گاوں میں واقع 3 ریزارٹ میں گزشتہ کچھ دنوں سے سیکس ریکٹ چل رہا تھا۔ اس کا انکشاف خود گاوں والوں نے ہی کیا۔ 10 اکتوبر کو گاوں والوں نے تینوں ریزارٹ کے منیجر اور دو خاتون کو یرغمال بنا لیا۔

      الزام ہے کہ جمشید پور ضلع کے بوڑام تھانہ علاقے کے مرزا ڈیہہ گاوں میں واقع 3 ریزارٹ میں گزشتہ کچھ دنوں سے سیکس ریکٹ چل رہا تھا۔
      الزام ہے کہ جمشید پور ضلع کے بوڑام تھانہ علاقے کے مرزا ڈیہہ گاوں میں واقع 3 ریزارٹ میں گزشتہ کچھ دنوں سے سیکس ریکٹ چل رہا تھا۔


      بتایا جاتا ہے کہ مشتعل گاوں والوں نے یرغمال بنائے گئے مرد اور خواتین کے ساتھ مارپیٹ بھی کی۔ موقع پر گاوں والوں کے ذریعہ قابل اعتراض سامان برآمد کرنے کا بھی دعویٰ کیا گیا ہے۔ بعد میں گاوں والوں نے معاملے کی اطلاع مقامی پولیس کو دی۔ اطلاع پر پولیس موقع پر پہنچی۔ اس کے بعد گاوں والوں نے یرغمال بناکر رکھے گئے سبھی لوگوں کو پولیس کے حوالے کردیا۔ گاوں والوں نے ان سبھی کے خلاف سخت کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔

      دراصل، بوڑام بلاک کی پرمکھ نے بتایا کہ گاوں میں چلائے جا رہے تین ریزارٹ میں سیکس ریکٹ چلنے کی اطلاع گاوں والوں کو ملی تھی۔ اس کے بعد گاوں والوں نے اتوار کی صبح گرام سبھی کی میٹنگ بلائی تھی۔ گرام سبھی کی میٹنگ میں سیکس ریکٹ چلا رہے سبھی لوگوں کو پکڑنے کا فیصلہ لیا گیا تھا۔ اس فیصلے کے بعد گاوں کے تمام لوگ متحد ہوکر ریزارٹ گئے اور وہاں دو خواتین کو رنگے ہاتھوں پکڑ لیا گیا۔ اس کے ساتھ ہی تینوں ریزارٹ کے منیجر کو بھی پکڑ لیا گیا۔ بلاک پرمکھ نے بتایا کہ موقع پر کچھ گراہک بھی تھے، جنہیں گاوں والوں نے چھوڑ دیا۔

       

       
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: