جیون سمواد: دل کے ٹوٹے تار

دوسری طرف ہم ہیں کہ اپنے دل کے تاروں کو سلجھا ہی نہیں پاتے۔ سلجھاتے بھی ہیں تو جگہ جگہ پڑی گٹھانیں مانو خراش بن کر ہمیں ستاتی رہتی ہیں۔

Sep 03, 2019 03:15 PM IST | Updated on: Sep 03, 2019 03:15 PM IST
جیون سمواد: دل کے ٹوٹے تار

کبھی جولاہے کو کپڑا بنتے دیکھئے، وہ مشکل کام کو کتنی آسانی سے کرتا ہے۔ کہیں گٹھان دکھتی ہی نہیں۔ جبکہ دھاگوں کا ٹوٹنا ٹالا نہیں جا سکتا۔ دوسری طرف ہم ہیں کہ اپنے دل کے تاروں کو سلجھا ہی نہیں پاتے۔ سلجھاتے بھی ہیں تو جگہ جگہ پڑی گٹھانیں مانو خراش بن کر ہمیں ستاتی رہتی ہیں۔ کاش ہم جولاہے سے سیکھ پاتے کہ دل کے تاروں کو کیسے سلجھائیں اور ضرورت پڑنے پر گٹھان کیسے لگانی ہے۔

زندگی میں کچھ بھی آسان نہیں ہے۔ کچھ بھی مشکل نہیں ہے۔ کچھ دن پہلے میں ایک ایسے ’ جیون سمواد‘ کا حصہ تھا جس میں الگ الگ موضوعات کے ماہرین شرکا کی شکل میں شامل تھے۔ ایک ہنرمند باورچی نے کوہ پیما سے پوچھا ’’ کتنا مشکل کام ہے آپ کا پہاڑوں کو پار کرنا۔ پتھریلی راہوں کے بھنور میں آپ کو گھیر لیتی چٹانوں سے گزرنا، خود کو بچائے رکھنا اور دوسروں کی مدد بھی کرتے رہنا‘‘۔

وہ پیما نے مسکراتے ہوئے کہا ’’ آپ کے مقابلہ میں آسان ہے۔ اتنے سارے الگ الگ لوگوں کی دلچسپی کے مطابق ایک ساتھ مشکل ذائقہ کو حاصل کرنا۔ مسالوں کا مسئلہ آسان نہیں ہے۔ جب تک پکوانوں میں آتما کا ذائقہ نہ ملایا جائے، کھانا ذائقہ دار ہو ہی نہیں سکتا‘‘۔

Loading...

زندگی اسی طرح چلتی رہتی ہے۔ ہم دوسروں کو دیکھ کر جیتے رہتے ہیں۔ دل میں ادھوری خواہش کو لئے ہوئے۔ تو دوسرے ہمیں دیکھ کر زندگی کا حوصلہ دیتے رہتے ہیں۔

لیکن اس بیچ سب سے ضروری ہوتا ہے دل کے ٹوٹے تاروں کو سنبھالنا۔ زندگی میں ایسے مواقع آتے ہی رہتے ہیں۔ پچھلے مضمون میں ہم نے لکھا تھا کہ خود کو دکھی کرنے کی اجازت دوسروں کو نہیں دینا۔ اس پر ہمیں بڑی تعداد میں آپ کا ردعمل ملا ہے۔

کچھ قارئین اسے ناممکن بتا رہے ہیں۔ کچھ کا کہنا ہے کہ ایسا کر پانا بہت مشکل ہے۔ میں دونوں چیزوں کے بیچ میں چلنے کی صلاح دوں گا۔ ہم جو کچھ ہیں اس کے پیچھے صرف ایک دل ہے۔ جو کبھی پہاڑ کی طرح ٹھوس ہو کر زندگی کی پریشانی کو برداشت کر لیتا ہے تو دوسرے ہی لمحہ پھولوں کی طرح نازک ہو کر بکھر جاتا ہے۔

زندگی کو کسی کہانی، سنیما کی طرح سمجھنے کی بجائے اسے صحیح معنوں میں سمجھنا ہو گا۔ پہلے ہم اپنے دل کی تعمیر کرتے ہیں، پھر اس کے بعد دھیرے دھیرے دل ہماری تعمیر کرنے لگتا ہے۔ ہمیں پتہ ہی نہیں چلتا کہ ہم حالات کا سامنا اپنے مطابق نہ کرنے کی بجائے دل کے مطابق کرنے لگتے ہیں۔

ایسے میں آسان ہے کہ دل میں گانٹھیں پڑ جائیں۔ الجھن کے بھنور آپ کو گھیر لیں۔ آپ کا اس مضمون کو پڑھنا یہ بتاتا ہے کہ آپ زندگی کے تئیں محتاط اور فکرمند ہیں۔ اسے بنائے رکھئے۔ دل کے تئیں محتاط رہیں۔ اس سے الجھے تار آسانی سے سلجھ سکتے ہیں۔

Email: dayashankarmishra2015@gmail.com

Address: Jeevan Sanvad (Dayashankar Mishr)

Network18

Express Trade Tower,3rd Floor, A Wing,

Sector 16, A, Film City, Noida (UP)

اپنے سوالات اور مشورے انباکس میں شئیر کریں۔

(https://twitter.com/dayashankarmi )(https://www.facebook.com/dayashankar.mishra.54 )

 

Loading...