جیون سمواد: پیار، فیصلہ اور ناراضگی

ماں۔ باپ بچوں کو لے کر اتنے زیادہ جذباتی ہیں کہ وہ ان کے ہر فیصلے میں اپنی حصہ داری چاہتے ہیں۔ رشتوں کے درمیان کشیدگی کی یہ بڑی وجہ ہے۔ ہمیں یہ سمجھنا ہو گا کہ ہر کسی کے خواب، نجی، اپنے ہیں۔

Nov 04, 2019 04:37 PM IST | Updated on: Nov 04, 2019 04:38 PM IST
جیون سمواد: پیار، فیصلہ اور ناراضگی

ہم پیار اور فیصلے کو اکثر ایک دوسرے میں ملاتے رہتے ہیں۔ ایک دوسرے سے عدم اتفاقی کا مطلب پیار کی کمی نہیں ہے۔ اپنی۔ اپنی دنیا بڑی ہونے کے ساتھ ہمارے نظرئیے، نقطہ نظر میں اختلاف فطری ہے۔ اسے پیار سے جوڑنا آسان نہیں ہے۔

بھوپال سے ’ جیون سمواد‘ کے قاری اجئے دوبے لکھتے ہیں ’’ میں نے اپنے والد جی کے مطابق، اپنا کیرئیر نہیں چنا۔ شادی بھی میں نے ان کی پسند کے حساب سے نہیں کی۔ اس سے ان کے۔ میرے درمیان دیوار کھڑی ہو گئی۔ ہم سب ایک ہی بڑے گھر میں رہتے ہیں۔ ہمارے دل کے بیچ لمبی چوڑی کھائی ہے۔ ہم دونوں کے درمیان پانچ برس سے بات چیت، سمواد بند ہے‘‘۔

ہمارے سماج میں اجازت کو اتنی زیادہ اہمیت دی گئی ہے کہ اس میں آزادانہ فیصلے کا اکثر خیال رکھا نہیں جاتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ ہم بدلتے وقت اور سماج کے حساب سے اپنے گھر، کنبے کو ’ سہج‘ نہیں رکھ پا رہے ہیں۔

وہ بھی ایک زمانہ تھا جب باپ ہی کنبے کے لئے دنیا کی کھڑکی ہوا کرتے تھے۔ انٹرنیٹ اور میڈیا کے آنے سے یہ پورا سسٹم ہی بدل گیا۔ ہم ایسے وقت میں پہنچ گئے جہاں بچوں اور نوجوانوں کے پاس علم اور تکنیک سے وابستہ معلومات کسی کو بھی حیران کر سکتی ہیں۔ تکنیکی سطح پر پوری دنیا ایک گاؤں جیسی ہو گئی ہے۔ اس سے عدم اتفاق کا پیدا ہونا فطری امر  ہے۔

Loading...

ماں۔ باپ اپنے بچوں کو لے کر اتنے زیادہ جذباتی ہیں کہ وہ ان کے ہر فیصلے میں اپنی حصہ داری چاہتے ہیں۔ رشتوں کے بیچ کشیدگی کی یہ بڑی وجہ ہے۔ ہمیں یہ سمجھنا ہو گا کہ ہر کسی کے خواب، نجی، اپنے ہیں۔ میں بڑی تعداد میں ایسے ماں۔ باپ سے واقف ہوں جنہوں نے اپنے فیصلے خود لئے اپنے ماں۔ باپ سے بغاوت کر کے۔ لیکن اپنے بچوں کے لئے وہ بالکل سخت ہو جاتے ہیں۔ انہیں یہی لگتا ہے کہ بچوں کے فیصلے وہی بہتر کر سکتے ہیں۔

پیار اور فیصلے کے درمیان یہ موڑ ہی کشیدگی کا سب سے بڑا سبب ہے۔ آئیے، لوٹتے ہیں اجئے دوبے کے سوال کی طرف۔ اگر ماں۔ باپ کسی وجہ سے ناراض ہیں، اپنی طرف سے بات چیت بند کر دی ہے تو بھی کوشش بند نہیں کرنی ہے۔ بالآخر ہیں تو وہ ماں۔ باپ ہی۔

ان کا کوئی متبادل نہیں ہے۔ ہمارے لئے ان سے بڑھ کر کسی کے من میں بھی پیار نہیں ہے۔ اس لئے ہمیں پیار کی کھڑکیاں ان کی طرف کھلی رکھنی ہوں گی۔ ناراض ہونے کا حق انہیں دینا ہو گا۔ ناراضگی کو پیار سے الگ رکھنا ہو گا۔

Email: dayashankarmishra2015@gmail.com

Address: Jeevan Sanvad (Dayashankar Mishr)

Network18

Express Trade Tower,3rd Floor, A Wing,

Sector 16, A, Film City, Noida (UP)

اپنے سوالات اور مشورے انباکس میں شئیر کریں۔

(https://twitter.com/dayashankarmi )(https://www.facebook.com/dayashankar.mishra.54 )

 

Loading...
Listen to the latest songs, only on JioSaavn.com