ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

رسم اجرا : ڈپریشن کی پیچیدگیوں کو کھول کر خودکشی سے بچانے والی کتاب ہے جیون سمواد

نئی دہلی کے انڈیا انٹرنیشنل سینٹر ( Indian International Center ) میں دیا شنکر مشرا کی کتاب جیون سمواد ( Jeevan Samvad ) کا رسم اجرا عمل میں آیا ۔

  • Share this:
رسم اجرا : ڈپریشن کی پیچیدگیوں کو کھول کر خودکشی سے بچانے والی کتاب ہے جیون سمواد
رسم اجرا : ڈپریشن کی پیچیدگیوں کو کھول کر خودکشی سے بچانے والی کتاب ہے جیون سمواد

مایوسی اور خودکشی کے خلاف سینئر صحافی دیا شنکر مشرا کی انتہائی مشہور ویب سیریز ڈیئر زندگی - جیون سمواد کتاب کی شکل میں سامنے آگئی ہے ۔ جیون سمواد اتوار کے روز نئی دہلی کے انڈیا انٹرنیشنل سینٹر میں ریلیز کی گئی ۔ کتاب کی شکل میں آنے سے پہلے یہ ویب سریز ڈیجیٹل میڈیا میں ایک کروڑ سے زیادہ مرتبہ پڑھی جا چکی ہے۔ سینئر نقاد ڈاکٹر وجے بہادر سنگھ  ، سینئر آئی پی ایس افسر دھرمیندر سنگھ ، پشپندر پال سنگھ اور کتاب میں اہم کردار ادا کرنے والی کینسر کو مات دینے والی شیل سینی نے اس کتاب کا اجرا کیا ۔ پروگرام کی نظامت سینئر صحافی ڈاکٹر ورتیکا نندا نے کی ۔


اس موقع پر ڈاکٹر وجے بہادر سنگھ نے کہا کہ دیا شنکر ایسی خوبصورت نثر لکھ رہے ہیں ، جو ہندی کے قارئین کیلئے ابھی تک دستیاب نہیں تھی ۔ انہوں نے کہا کہ بہت سارے لوگ خودکشی اور مایوسی جیسے موضوعات پر ڈاکٹر یا مغربی طریقہ سے تو سوچتے ہیں ، لیکن دیا شنکر جدید طرز زندگی میں ہندوستان کی گہری روایت کا امتزاج کرتے ہوئے آسان طریقہ سے بات کرنا اچھی طرح جانتے ہیں ۔ یہ کتاب انسان کو غموں سے لڑنے کے لئے ویسی ہی طاقت بخشتی ہے ، جو طاقت ستیہ ہریش چندر ، بھگوان رام اور دھرمراج یودھیشٹرسے ملتی ہے۔


اپنی کتاب کی افادیت کے بارے میں بات کرتے ہوئے دیا شنکر مشرا نے کہا کہ اب تک ویب سیریز کے طور پر لکھے گئے 650 سے زیادہ مضامین میں سے 64 مضامین کو کتاب میں شامل کیا گیا ہے ۔ مشرا نے بتایا کہ اب تک کم از کم 8 افراد ایسے ہیں ، جنھوں نے اعتراف کیا ہے کہ وہ خود کشی کی حالت میں پہنچ گئے تھے ، لیکن ان مضامین کو پڑھنے کے بعد ان کی زندگی بچ گئی ۔ انہوں نے کہا کہ یہ کتاب پرورش کے ساتھ ساتھ بچوں کے ذہن ، مایوسی کی وجوہات اور ذہن کے خودکشی تک پہنچنے کے اسباب کے بارے میں تفصیل سے بات کرتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جیون سمواد ، مایوسی کی گرہ کھول کر خودکشی سے بچانے والی ایک کتاب ہے۔


پروگرام میں بڑی تعداد میں لوگوں نے شرکت کی ۔
پروگرام میں بڑی تعداد میں لوگوں نے شرکت کی ۔


نوجوانوں کیلئے ہے یہ کتاب

اس موقع پر پشپندر پال سنگھ نے کہا کہ یہ کتاب نوجوانوں کے ساتھ ساتھ بچوں کے لئے بھی کارآمد ہے ۔ کیونکہ ایک طرف نوجوان نسل پر روزگار کے حصول کے لئے دباؤ رہتا ہے اور دوسری طرف یہ عمر محبت اور جذباتیت کی بھی ہوتی ہے۔ ایسی صورتحال میں دباؤ میں نوجوان مہلک قدم اٹھالیتے ہیں۔ وہ کسی سے بھی اپنی صورتحال شیئر نہیں کرپاتے ہیں اور اندرونی تاریکی کی طرف نکل پڑتے ہیں ۔ جب ایسے نوجوان اس کتاب کو پڑھیں گے ، تو انہیں یوں محسوس ہوگا کہ جیسے ان کا کوئی دوست ان کے ساتھ ان کی پریشانیوں کے بارے میں بڑی ذمہ داری سے بات کر رہا ہے ۔ اس کی وجہ سے جینے کی ہمت پیدا ہوگی ، وہ ہمارے معاشرے کی سب سے بڑی ضرورت ہے ۔

پیچیدہ مسائل کے ساتھ آسان گفتگو

دھرمیندر سنگھ نے دنیا کے کچھ بڑے کاموں اور یوروپی ممالک کی مثال دیتے ہوئے کہا کہ ہمیں وقت کی ضروریات کے حساب سے اپنی طرز زندگی کو ڈھالنے کی ضرورت ہے ۔ ہندوستان میں ابھی لوگ ذہنی صحت کے بارے میں بہت زیادہ بیدار نہیں ہیں ۔ یہی نہیں ، ہم اس پرانے خیالات کے شکار ہیں ، جس میں مایوسی یا ڈپریشن کے بارے میں دوسروں کو بتانا شرم کی بات سمجھی جاتی ہے ۔

جیوان سمواد کے رائٹر دیا شنکر مشرا نے اس موقع پر کتاب کے بارے میں لوگوں کو جانکاری دی ۔


مایوسی کے لمحات میں ثابت ہوگی مددگار

شیل سینی ، جو خود کینسر کی جنگ جیتنے والی بھی ہیں ، نے بتایا کہ جب وہ اسپتال میں زندگی اور موت کی جنگ لڑ رہی تھیں ، تو جیون سمواد کے ڈیجیٹل مضامین نے انہیں جیون سنجیونی دی ۔ شیل سینی نے کہا کہ یہ کتاب صرف مایوسی سے لڑنے کے لئے نہیں ہے ، بلکہ یہ کتاب ہر اس فرد کے لئے ہے جو تکلیف میں ہے ، پریشانی میں ہے اور جن کو اپنے سامنے انتہائی دھندلا منظر دکھتا ہے۔ یہ کتاب اس دوست کی طرح ہے جس نے ہمارے غموں کے لمحوں میں مدد کا ہاتھ بڑھایا ۔ یہ کتاب سمواد پرکاشن نے شائع کی ہے۔

رسم اجرا پروگرام میں بڑی تعداد میں ملک کے روشن خیال افراد ، سی آئی ایس ایف کے افسران ، جوان معزز مصنفین اور ممبئی ، اندور ، لکھنؤ ، بھوپال ، رانچی اور پٹنہ سمیت کئی شہروں سے آئے جیون سمواد ویب سیریز کے قارئین نے شرکت کی ۔

 
First published: Jan 08, 2020 06:07 PM IST