ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

جھارکھنڈ کے سی ڈی پی او محمد علی کا 10 سال قبل ہوا تھا قتل، قاتلوں کی گرفتاری کی اٹھی آواز

جھارکھنڈ کے رانچی کی بھارتیہ ایکتا کمیٹی کے بانی صدر محمد غلام مصطفی نے سی ڈی پی او محمد علی کے قاتلوں کی گرفتاری کرکے ان کے خلاف سخت قانونی کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔‌ ریاست کے چترا ضلع کے پرتاپ پور تھانہ میں سی ڈی پی او کے عہدے پر فائز محمد علی کا 10 سال قبل 26 جنوری 2010 کو گولی مار کر قتل کر دیا گیا تھا۔‌

  • Share this:
جھارکھنڈ کے سی ڈی پی او محمد علی کا 10 سال قبل ہوا تھا قتل، قاتلوں کی گرفتاری کی اٹھی آواز
جھارکھنڈ کے سی ڈی پی او محمد علی کا 10 سال قبل ہوا تھا قتل، قاتلوں کی گرفتاری کی اٹھی آواز

رانچی: جھارکھنڈ کے رانچی کی بھارتیہ ایکتا کمیٹی کے بانی صدر محمد غلام مصطفی نے سی ڈی پی او محمد علی کے قاتلوں کی گرفتاری کرکے ان کے خلاف سخت قانونی کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔‌ ریاست کے چترا ضلع کے پرتاپ پور تھانہ میں سی ڈی پی او کے عہدے پر فائز محمد علی کا 10 سال قبل 26 جنوری 2010 کو گولی مار کر قتل کر دیا گیا تھا۔‌ غلام مصطفی نے واضح کیا کہ اس قتل معاملہ میں 8 لوگوں کو نامزد ملزم بتاتے ہوئے پرتاپ پور تھانہ میں ایف آئی آر درج کرایا گیا تھا، لیکن آج تک ایک بھی ملزم کی گرفتاری عمل میں نہیں آئی ہے۔ انہوں نے اس قتل معاملے کے سبھی نامزد ملزمین کی گرفتاری کرکے ان کے خلاف سخت قانونی کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔


حکومت اور پولیس کا غیر منصفانہ رویہ


سماجی کارکن محمد غلام مصطفی نے اس قتل معاملے پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا ہے۔ ساتھ ہی سی ڈی پی او محمد علی کے قتل کے کسی بھی ملزم کی گرفتاری نہیں ہونے پر افسوس کا اظہارکیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ 26 جنوری 2011 کو محمد علی کے قتل کو 11 سال کا عرصہ ہو جائےگا، لیکن بڑے شرم کی بات ہے کہ اب تک کسی بھی ملزم کی گرفتاری عمل میں نہیں آئی ہے۔ انہوں نے چترا کے پرتاپ پور تھانہ کے پولیس افسران کی کارکردگی پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا کہ آج تمام نامزد ملزمین آزادی کے ساتھ گھوم رہے ہیں، لیکن پرتاپ پور تھانہ کی پولیس اپنی آنکھیں بندکئے بیٹھی ہے۔


ملزمین کی گرفتاری اور قانونی کاروائی کا مطالبہ

معروف سماجی کارکن محمد غلام مصطفی نے وزیر اعلی ہیمنت سورین، ڈی جی پی ایم وی راو اور چیف سیکریٹری راجیو ارون ایکا سے انصاف کی گہار لگاتے ہوئے سی ڈی پی او محمد علی قتل معاملہ کے تمام 8 ملزمین کی گرفتاری کرکے ان کے خلاف سخت قانونی کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔ انہوں نے عدالت سے بھی مطالبہ کیا ہے کہ تمام ملزمین کو پھانسی کی سزا دی جائے۔ انہوں نے کہا کہ سابق وزیر اعلی رگھوور داس نے محمد علی قتل معاملہ میں کارروائی کا یقین دلایا تھا، لیکن وہ وعدہ پورا نہیں ہوا۔ انہوں نے رگھوور داس پرجھوٹا وعدہ کرنے کا بھی الزام لگایا۔ محمد غلام مصطفی نے وزیر اعلیٰ ہیمنت سورین سے محمد علی کے قاتلوں کی گرفتاری اور انصاف کی امید کا اظہار کیا ہے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Sep 21, 2020 08:27 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading