உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    نشے کی لت میں جھارکھنڈ کے نوجوان ہو رہے ہیں گرفتار، مجرمانہ سرگرمیوں میں بھی ہو رہے ہیں ملوث، این سی آر بی کی رپورٹ میں ہوا خلاصہ

    نشے کی لت میں جھارکھنڈ کے نوجوان ہو رہے ہیں گرفتار، مجرمانہ سرگرمیوں میں بھی ہو رہے ہیں ملوث

    نشے کی لت میں جھارکھنڈ کے نوجوان ہو رہے ہیں گرفتار، مجرمانہ سرگرمیوں میں بھی ہو رہے ہیں ملوث

    این سی آر بی یعنی نیشنل کرائم ریکارڈس بیورو کی حالیہ رپورٹ میں یہ انکشاف ہوا ہے کہ جھارکھنڈ کے ٥٢ فیصدی نوجوان مجرمانہ سرگرمیوں میں ملوث ہیں۔ ریاست کے مختلف جیلوں میں بند نصف سے زائد ایسے قیدی ہیں جنکی عمر ١٨ سے ٣٠ سال کے درمیان ہے۔

    • Share this:
    رانچی: این سی آر بی یعنی نیشنل کرائم ریکارڈس بیورو کی حالیہ رپورٹ میں یہ انکشاف ہوا ہے کہ جھارکھنڈ کے ٥٢ فیصدی نوجوان مجرمانہ سرگرمیوں میں ملوث ہیں۔ ریاست کے مختلف جیلوں میں بند نصف سے زائد ایسے قیدی ہیں جنکی عمر ١٨ سے ٣٠ سال کے درمیان ہے۔ رانچی کے شہر ایس پی سوربھ مانتے ہیں کہ حالیہ دنوں مجرمانہ واقعات کو انجام دینے والوں میں بیشتر نوجوان ہیں اور نشے کی لت کو پورا کرنے کے لئے جرم کی دنیا میں قدم رکھا ہے۔

    این سی آر بی کے ذریعہ جاری رپورٹ کے مطابق سال ٢٠١٩ میں جھارکھنڈ میں  ٥٢.٣ فیصدی انڈر ٹرائل قیدی ہیں، جن کی عمر ١٨ سے٣٠ سال ہے۔ ٣٩٠٥ فیصدی قیدی کی عمر٣٠ سے ٥٠ سال کی ہے۔ ٥٠ سال سے زائد عمر کے انڈر ٹرائل قیدیوں کا فیصد ٨ .٢ تھی۔ وہیں جھارکھنڈ میں ١٨ سے ٣٠ سال کے سزا یافتہ قیدیوں کا فیصد ٣١.٩ جبکہ ٣٠ سال سے٥٠ سال کے ٢٩٠٥ قیدی ہیں جبکہ ٥٠ سال سے زائد عمر کے ١٨٠٧ فیصد یعنی ١٠٩٦ قیدی کی تعداد ہے۔

    جھارکھنڈ میں ١٢٠٧٣ لوگوں کا انڈر ٹرائل چل رہا ہے جبکہ جھارکھنڈ کے رہنے والے ٥٥٧٩ قیدی سزا یافتہ ہیں۔ دیگر ریاستوں کے  ٦٨٤ لوگوں کا انڈر ٹرائل چل رہا ہے جبکہ دیگر ریاستوں کے ٢٨٨ قیدی سزا یافتہ ہیں۔ رانچی کے سٹی ایس پی سوربھ نے کہا کہ نوجوان طبقہ کو مین اسٹریم میں لانے کی کوششوں میں رانچی پولیس اور جیل انتظامیہ مصروف ہیں۔ ریاست کے مختلف جیلوں میں بند ٤٨ قیدی پی جی سند یافتہ ہیں جبکہ ١٠٦ سزا یافتہ پی جی سند یافتہ قیدی انڈر ٹرائل ہیں۔ وہیں ١٠٧ قیدی ٹیکنیکل ڈگری والے ہیں جبکہ ٢٦٣ قیدی گریجویٹ ہیں جبکہ میٹریکولیشن سے گریجویشن والے ١٢٠٥ قیدی ہیں۔ ٢٨١٥ نن میٹرک جبکہ ١٤٢١ قیدی ناخواندہ ہیں۔ اس ڈاٹا سے ظاہر ہوتا ہے کہ تعلیم یافتہ نوجوان جرم کے دلدل میں پھنستے جا رہے ہیں۔ نشے کی لت کو پورا کرنے کی خاطر چھوٹے جرم میں گرفتار یہ نوجوان جب جیل میں بند شاطر قیدیوں کے تعلق میں آتے ہیں تو وہ انہیں گناہ کے اس دلدل میں پہنچا دیتے ہیں، جہاں سے انہیں نکلنا مشکل ہو جاتا ہے اور پوری زندگی جیل اور عدالت کا چکر کاٹنے میں گزرجاتی ہے۔
    Published by:Nisar Ahmad
    First published: