پلوامہ حملہ: 52 کروڑ کی املاک ضبط، حراست میں 15 لوگ، جانیں کیا ہے جماعت اسلامی؟

ملی اطلاعات کے مطابق 1 مارچ سے ابھی تک اس تنظیم سے جڑے 370 سے زیادہ لوگوں کو حراست میں لیکر پوچھ گچھ کی جارہی ہے۔

Mar 03, 2019 02:58 PM IST | Updated on: Mar 03, 2019 03:06 PM IST
پلوامہ حملہ: 52 کروڑ کی املاک ضبط، حراست میں 15 لوگ، جانیں کیا ہے جماعت اسلامی؟

پلوامہ حملہ کے بعد مرکزی حکومت دہشت گردی پر نکیل کسنے کیلئے مسلسل سخت قدم اٹھا رہی ہے۔ پلوامہ حملے ست تار جڑے ہونے کی ثبوت ملنے کے بعد جموں۔کشمیر میں کام کر رہی تنظیم جماعت اسلامی پر انسداد دہشت گردی کے تحت 5 سال تککیلئے پابندی لگا دی گئی ہے۔ اتوار کو اس تنظیم کے 12 لوگوں کو گرفتار کر لیا گیا ہے اور اس کی 52 کرور کی املاک بھی ضبط کرکے جانچ کی جارہی ہے۔

ملی اطلاعات کے مطابق 1 مارچ سے ابھی تک اس تنظیم سے جڑے 370 سے زیادہ لوگوں کو حراست میں لیکر پوچھ گچھ کی جارہی ہے۔ اتوار کی صبح بھی تنظیم سے تعلق رکھنے والے 15 اہم لوگوں کو حراست میں لیا گیا ہے۔

Loading...

جموں۔کشمیر پولیس کے مطابق اتوار کو جماعت اسلامی (جموں۔کشمیر) سے جڑے سید پورہ ضلع کے سابق صدر بشیر احمد لون کے ساتھ ان کے دیگر ساتھیوں عبدالحامد فیاض، زاہد علی ، مدثر احمد، غلام قادر، مدثر قادر، فیاض وانی، ظہور حقاق، افضل میر، شوکت شاہد، شیخ زاہد  عمران علی، مشتاق احمد اور اجکس رسول کو گرفتار کیا گیا ہے۔ جانچ ایجنسی اب تل اس تنظیم کی تقریبا 52 کروڑ املاک ضبط کر چکی ہے۔ بتادیں کہ اس تنظیم کے جن بڑے لیڈران کی گرفتاری ہوئی ہے ان سے فی الحال پوچھ گچھ کی جارہی ہے۔

Loading...