உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    JNU Violence Incident: تھمتا نظر نہیں آرہا جے این یو تنازع، مظاہرین طلبہ سے ملاقات کریں گی وائس چانسلر

    JNU Violence Incident: تھمتا نظر نہیں آرہا جے این یو تنازع، مظاہرین طلبہ سے ملاقات کریں گی وائس چانسلر

    JNU Violence Incident: تھمتا نظر نہیں آرہا جے این یو تنازع، مظاہرین طلبہ سے ملاقات کریں گی وائس چانسلر

    JNU Violence Incident: دہلی کی جواہر لال نہرو یونیورسٹی (جے این یو) میں اتوار کی رات میس میں نان ویجیٹیرین کھانا پیش کئے جانے کو لے کر طلبہ کے دو گروپوں کے درمیان ہنگامہ آرائی اور مارپیٹ کا معاملہ تھمنے کا نام ہی نہیں لے رہا ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی : دہلی کی جواہر لال نہرو یونیورسٹی (جے این یو) میں اتوار کی رات میس میں نان ویجیٹیرین کھانا پیش کئے جانے کو لے کر طلبہ کے دو گروپوں کے درمیان ہنگامہ آرائی اور مارپیٹ کا معاملہ تھمنے کا نام ہی نہیں لے رہا ہے۔ دونوں تنظیموں کی جانب سے اس معاملہ پر الزامات لگائے جا رہے ہیں۔ جے این یو کی بائیں بازو کی تنظیموں کی طرف سے بھی مسلسل مظاہرے کئے جا رہے ہیں۔ ایسے میں اب جے این یو کی وائس چانسلر پروفیسر شانتی شری دھولیپوڑی پنڈت  (Vice Chancellor Prof. Santishree Dhulipudi Pandit)  نے کہا ہے کہ وہ احتجاجی طلبہ سے ملاقات کریں گی ۔

       

      یہ بھی پڑھئے : لیموں کی قیمتیں آسمان کو چھونے کے ساتھ بازار میں ہاہاکار، یوپی میں لیموں کی چوری


      بتادیں کہ جے این یو تنازعہ میں جہاں دہلی پولس نے اے بی وی پی کے طلبہ کے خلاف مقدمہ درج کیا ہے تو وہیں جے این یو انتظامیہ (JNU Administration)  بھی پوری طرح سے سخت رویہ اپنا رہی ہے۔ جے این یو وائس چانسلر کی جانب سے اس معاملہ کو سنجیدگی سے لیتے ہوئے 10 اپریل کو رجسٹرار کے ذریعہ ایک اپیل لیٹر بھی جاری کیا گیا۔

       

      یہ بھی پڑھئے: بغیر مکمل ٹریننگ کے ہی طیارہ اڑا رہے تھے SpiceJet کے 90 پائلٹ، DGCA کی کارروائی، ہزاروں مسافروں کی جان خطرے


      اس کے ساتھ ہی طلبہ کو یہ بھی تنبیہ کی گئی کہ اگر کسی نے یونیورسٹی کے امن و ہم آہنگی کو بگاڑنے کا کام کیا تو اس کے خلاف تادیبی کارروائی کی جائے گی ۔ اس معاملہ میں یہ بھی واضح کیا گیا کہ کیمپس میں پرتشدد کارروائی کو ہرگز برداشت نہیں کیا جائے گا ۔ اس پر زیرو ٹالرنس پالیسی کے تحت کام کیا جائے گا۔

      انتظامیہ نے طلبہ کو متنبہ کیا ہے کہ اگر کوئی بھی تشدد اور امن و ہم آہنگی کو خراب کرنے والی ایسی حرکتوں میں ملوث پایا گیا تو اس کے خلاف یونیورسٹی قوانین کے تحت تادیبی کارروائی کی جائے گی ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: