உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    - Supreme Court: صحافی دہشت گردنہیں ہوتے، جھارکھنڈپولیس کےرویہ پرسپریم کورٹ کا بیان

    سپریم کورٹ (فائل فوٹو)

    سپریم کورٹ (فائل فوٹو)

    Journalists Are Not Terrorists: چودھری نے مبینہ طور پر صحافی اروپ چٹرجی (Arup Chatterjee) پر بلیک میلنگ اور بھتہ خوری کی سرگرمیوں میں ملوث ہونے کا الزام لگایا تھا اور ان کے خلاف فوجداری مقدمہ درج کیا گیا تھا۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi | Mumbai | Hyderabad | Kolkata [Calcutta] | Karnataka
    • Share this:
      Journalists Are Not Terrorists: جھارکھنڈ پولیس نے آدھی رات کو ایک مقامی ہندی نیوز چینل کے صحافی کا دروازہ کھٹکھٹایا اور بھتہ خوری میں گرفتار کرنے سے پہلے اس کے بیڈروم سے باہر گھسیٹا، جس پر معاملہ سپریم کورٹ پہنچا تو سپریم کورٹ (Supreme Court) نے پیر کے روز کہا کہ صحافی دہشت گرد نہیں ہوتے ہیں۔ پولیس کی کارروائی کو ریاست کی زیادتیاں قرار دیتے ہوئے سپریم کورٹ نے کہا کہ ایسا لگتا ہے کہ جھارکھنڈ میں مکمل لاقانونیت کا راج ہے۔

      سپریم کورٹ نے کہا کہ ہائی کورٹ نے درست طور پر ایک تفصیلی حکم کے ذریعے صحافی کو عبوری ضمانت دی ہے جس میں کسی قسم کی مداخلت کی ضمانت نہیں ہے۔ بینچ نے کہا کہ معاف کیجئے! ہم آپ کی درخواست پر غور نہیں کریں گے۔ چونکہ یہ ایک عبوری حکم ہے اور معاملہ وہاں زیر التوا ہے، آپ جائیں اور ہائی کورٹ کو راضی کریں۔

      مداخلت کرنے سے انکار:

      جسٹس ڈی وائی چندرچوڑ اور ہیما کوہلی کی بنچ نے صحافی کو عبوری ضمانت دینے کے جھارکھنڈ ہائی کورٹ کے حکم میں مداخلت کرنے سے انکار کردیا اور کہا کہ وہ ریاست کی اپیل پر غور نہیں کریں گے۔ بنچ نے جھارکھنڈ کے ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل ارونابھ چودھری سے کہا کہ ہم نے کیس کے حقائق دیکھے ہیں۔ یہ سب ریاست کی زیادتیاں ہیں اور ایسا لگتا ہے کہ جھارکھنڈ میں مکمل طور پر لاقانونیت کا راج ہے۔

      یہ بھی پڑھیں: 

      بلیک آؤٹ فٹ میں Akanksha Puri کی اب تک کی سب سے بولڈ تصویریں، میکا سنگھ نے یوں دیا ردعمل

      بینچ نے کہا کہ ہم ہائی کورٹ کے حکم میں مداخلت نہیں کرنے والے ہیں۔ آپ ایک صحافی کا دروازہ کھٹکھٹاتے ہیں۔ آدھی رات اس کے کمرے سے باہر نکالتے ہیں۔ یہ بہت زیادتی ہے اور صحافی کے عزت نفس پر حملہ ہے۔ آپ ایک ایسے شخص کے ساتھ معاملہ کر رہے ہیں جو ایک صحافی ہے اور صحافی دہشت گرد نہیں ہیں۔ مذکورہ بنچ نے اس واقعہ پر سخت ناراضگی کا اظہار کیا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں: 

      Trade with Pakistan: پاکستان کے ساتھ تجارت ممکن نہیں! ’پہلےسرحدپاردہشت گردی کوکیاجائےختم‘

      چودھری نے مبینہ طور پر صحافی اروپ چٹرجی (Arup Chatterjee) پر بلیک میلنگ اور بھتہ خوری کی سرگرمیوں میں ملوث ہونے کا الزام لگایا تھا اور ان کے خلاف فوجداری مقدمہ درج کیا گیا تھا۔ جب بنچ نے ان سے پوچھا کہ چٹرجی کتنے عرصے تک جیل میں بند تھے، چودھری نے کہا کہ وہ دو تین دن سے وہاں ہیں۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: