ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

جسٹس دیپک گپتا نےکہا- ججوں کے لئے آئین ہی گیتا، قرآن اور بائبل ہے

کورونا وائرس وبا کے پیش نظر ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے منعقدہ الوداعی تقریب میں جسٹس دیپک گپتا نےکہا کہ ججوں کے لئےآئین ہی اس کا مقدس کتاب ہوتا ہے۔ ججوں کےلئےآئین ہی گیتا، قرآن، بائبل اور گروگرنتھ صاحب ہیں۔

  • UNI
  • Last Updated: May 07, 2020 12:55 AM IST
  • Share this:
جسٹس دیپک گپتا نےکہا- ججوں کے لئے آئین ہی گیتا، قرآن اور بائبل ہے
سپریم کورٹ کے جج دیپک گپتا نے کہا ہے کہ ججوں کے لئے آئین ہی گیتا، قرآن، اور بائبل ہے۔۔

نئی دہلی: ”آئین ججوں کے لئے مقدس گرنتھ ہے۔ جب کوئی جج عدالت میں بیٹھتا ہے تو اس کےلئے آئین ہی گیتا، قرآن، گروگرنتھ صاحب اور بائبل ہوتا ہے“۔ یہ بات سپریم کورٹ کے جج دیپک گپتا نے سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن (ایس سی بی اے) کے زیر اہتمام میں بدھ کی شام منعقد ہ اپنی الوداعی تقریب میں کہی۔


کورونا وائرس وبا کے پیش نظر ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے منعقدہ الوداعی تقریب میں جسٹس دیپک گپتا نےکہا کہ ججوں کے لئے آئین ہی اس کا مقدس کتاب ہوتا ہے۔ ججوں کےلئے آئین ہی گیتا، قرآن، بائبل اور گروگرنتھ صاحب ہیں۔ جسٹس دیپک گپتا نے کہا، ”اچھا وکیل بننےکےلئےآپ کو سب سے پہلے بہتر انسان بننا ہوتا ہے۔ آپ کو ہرکسی کے مسائل کے تئیں حساس رہنا ہوتا ہے“۔


سپریم کورٹ کے جج جسٹس دیپک گپتا کی الوداعی تقریب ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ ہوئی ہے۔ فائل فوٹو- سپریم کورٹ
سپریم کورٹ کے جج جسٹس دیپک گپتا کی الوداعی تقریب ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ ہوئی ہے۔ فائل فوٹو- سپریم کورٹ


یہ پہلی بار ہوا ہےکہ کسی جج کی الوداعی تقریب ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ ہوئی ہے۔ اس موقع پر اٹارنی جنرل کے کے وینو گوپال اور ایس سی بی اے کے صدر دشینت دوے اور کئی سینئر ایڈووکیٹ اسکرین پر نظر آئے۔ اس سے پہلے پرانی روایت کے تحت جسٹس دیپک گپتا نے اپنے دورکے آخری دن چیف جسٹس شرد اروند بوبڈے کے ساتھ ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ کچھ معاملوں کا نمٹارا کیا۔
First published: May 07, 2020 12:54 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading