உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    CAA مخالف مظاہرین کو لوٹائی جارہی ہے رقم، ملزمین سے ہوئی تھی وصولی

    یوپی کی راجدھانی لکھنؤ سمیت کئی شہروں میں بھی مظاہرے ہوئے۔ اس دوران کئی مقامات پر عوامی املاک کو نقصان پہنچا۔ اس پر سخت موقف اختیار کرتے ہوئے یوپی حکومت نے کئی لوگوں کو سرکاری املاک کے نقصان کی تلافی کے لیے نوٹس جاری کیے تھے۔

    یوپی کی راجدھانی لکھنؤ سمیت کئی شہروں میں بھی مظاہرے ہوئے۔ اس دوران کئی مقامات پر عوامی املاک کو نقصان پہنچا۔ اس پر سخت موقف اختیار کرتے ہوئے یوپی حکومت نے کئی لوگوں کو سرکاری املاک کے نقصان کی تلافی کے لیے نوٹس جاری کیے تھے۔

    یوپی کی راجدھانی لکھنؤ سمیت کئی شہروں میں بھی مظاہرے ہوئے۔ اس دوران کئی مقامات پر عوامی املاک کو نقصان پہنچا۔ اس پر سخت موقف اختیار کرتے ہوئے یوپی حکومت نے کئی لوگوں کو سرکاری املاک کے نقصان کی تلافی کے لیے نوٹس جاری کیے تھے۔

    • Share this:
      لکھنو:کانپور میں CAA کے احتجاج کے دوران سرکاری اور نجی املاک کو نقصان پہنچانے کے ملزمان سے برآمد کی گئی رقم واپس کی جارہی ہے۔ حکام نے بازیاب ہونے والے مظاہرین کے گھروں کو جانا شروع کر دیا ہے۔ اہلکار انہیں چیک واپس کر رہے ہیں۔

      کانپور تحصیل کے ملازمین کو CAA اور NRC کی مخالفت کے دوران سرکاری جائیداد کو نقصان پہنچانے کے لئے ہر اس گھر کا دورہ کرنے اور چیک میں پیسے واپس کرنے کا کام سونپا گیا ہے، جہاں سے جرمانہ وصول کیا گیا تھا۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Hijab Row: کرناٹک ہائی کورٹ کے فیصلہ سے اسد الدین اویسی متفق نہیں ، کہی یہ بڑی بات

      کانپور میں جرمانے کے طور پر وصول کیے گئے 3.66 لاکھ روپے 33 ملزمین کو لوٹادئیے جائیں گے۔ بتادیں کہ دسمبر 2019میں سی اے اے اور این آر سی کی مخالفت میں شہر میں تشدد بھڑک اٹھا تھا۔ پرتشدد احتجاجی مظاہروں میں لاکھوں کی سرکاری اور نجی جائیداد کو نقصان ہوا تھا۔

      حال ہی میں سپریم کورٹ نے اترپردیش حکومت سے سی اے اے کے مظاہرین سے وصول کیے گئے کروڑوں روپیے واپس کرنے کو کہا تھا۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Punjab:بھگونت مان کی آج تاجپوشی، بھگت سنگھ کے گاوں پہنچے گورنر،کئی بڑے قائدین ہوں گے شامل

      کیا ہے پورا معاملہ
      یوپی کی راجدھانی لکھنؤ سمیت کئی شہروں میں بھی مظاہرے ہوئے۔ اس دوران کئی مقامات پر عوامی املاک کو نقصان پہنچا۔ اس پر سخت موقف اختیار کرتے ہوئے یوپی حکومت نے کئی لوگوں کو سرکاری املاک کے نقصان کی تلافی کے لیے نوٹس جاری کیے تھے۔ رقم جمع کرانے کی تاریخ ختم ہونے کے بعد اٹیچمنٹ کے احکامات جاری کیے گئے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: