ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

کرناٹک میں بس ہڑتال:پبلک ٹرانسپورٹ کی خدمات متاثر، عوام میں شدید غصہ

کرناٹک حکومت نے کورونا وائرس بیماری (کووڈ۔19) کی پابندیوں پر عمل نہ کرنے کی صورت میں کارکنوں کے خلاف سخت کارروائی کرنے کا انتباہ دیا ہے۔ریاستی چیف سکریٹری کمار نے کہا کہ ’کووڈ۔19 میں پابندیاں عائد ہیں اور ڈیزاسٹر مینجمنٹ ایکٹ کے تحت پہلے ہی ایک نوٹیفکیشن جاری کیا گیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ لوگ گروہوں میں جمع نہیں ہوسکتے ہیں۔ اگر اس کی خلاف ورزی ہوتی ہے تو اس قانون کے تحت کارروائی کی جائے گی‘۔

  • Share this:
کرناٹک میں  بس ہڑتال:پبلک ٹرانسپورٹ کی خدمات متاثر، عوام میں شدید غصہ
فائل فوٹو

کرناٹک اسٹیٹ روڈ ٹرانسپورٹ ایمپلائز لیگ (Karnataka State Road Transport Employees League) کے بینر تلے بنگلور میٹرو پولیٹن ٹرانسپورٹ کارپوریشن (BMTC)، کرناٹک اسٹیٹ روڈ ٹرانسپورٹ کارپوریشن (KSRTC)، شمالی مغربی کرناٹک روڈ ٹرانسپورٹ کارپوریشن (NWKRTC) اور شمال مشرقی کرناٹک روڈ ٹرانسپورٹ کارپوریشن (NEKRTC) کے کارکنان نے روڈ ٹرانسپورٹ کارپوریشن کے کارکنوں کے لئے چھٹے پے کمیشن کے تحت تنخواہ کے نظام کو نافذ کرنے میں ریاستی حکومت کی ناکامی کا حوالہ دیتے ہوئے بدھ سے غیر معینہ مدت کی ہڑتال کی کال دی ہے۔ اس ہڑتال سے ریاست میں پبلک ٹرانسپورٹ متاثرہورہاہے۔ کرناٹک ٹرانسپورٹ ہڑتال کے بارے میں آپ کو جاننے کے لئے درکار سب کچھ یہ ہے:


کرناٹک کے وزیر اعلی بی ایس یدیورپا نے روڈ ٹرانسپورٹ کارپوریشن کے کارکنوں سے ہڑتال نہ کرنے کی اپیل کی۔ سی ایم یدیورپا نے کہا ہے کہ ’ہم نے آپ (کارکنوں) کے نو مطالبات کو پورا کیا ہے۔ ہمیں عوام کی فلاح و بہبود کے لئے مل کر کام کرنا ہوگا۔ ہڑتال چھوڑنے اور انتظامیہ کے ساتھ تعاون کرنے اپیل ہے‘۔


کرناٹک حکومت نے کورونا وائرس بیماری (کووڈ۔19) کی پابندیوں پر عمل نہ کرنے کی صورت میں کارکنوں کے خلاف سخت کارروائی کرنے کا انتباہ دیا ہے۔ریاستی چیف سکریٹری کمار نے کہا کہ ’کووڈ۔19 میں پابندیاں عائد ہیں اور ڈیزاسٹر مینجمنٹ ایکٹ کے تحت پہلے ہی ایک نوٹیفکیشن جاری کیا گیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ لوگ گروہوں میں جمع نہیں ہوسکتے ہیں۔ اگر اس کی خلاف ورزی ہوتی ہے تو اس قانون کے تحت کارروائی کی جائے گی‘۔


عام لوگوں کی تکلیف کو کم کرنے کے مقصد کے ساتھ ریاستی حکومت نے نجی آپریٹرز کے ساتھ مل کر نقل و حمل کے متبادل انتظامات کیے ہیں۔حکومت نے کالابوراگی، بیلگاوی، حبلبی اور میسورو جیسے مقامات پر بھی دیگر ٹرینوں کو تعینات کیا ہے۔خبر رساں ادارے اے این آئی کے مطابق ریاستی حکومت نے ریاستی روڈ ٹرانسپورٹ کارپوریشن کو نجی بسوں اور اسکول بسوں کو نقل و حمل کے لئے کرایہ پر لینے کی بھی اجازت دے دی ہے۔

حکومت نے یہ بھی کہا ہے کہ اگر وہ نقل و حمل کی ہڑتال کا فائدہ اٹھاتے ہوئے زیادہ کرایے وصول کرتے ہیں تو آٹوز اور ٹیکسیوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔اسی کو مد نظر رکھتے ہوئے حکومت نے ٹیکسی اور بس کے کرایوں کو ٹھیک کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کیا ہے۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: Apr 07, 2021 10:11 PM IST