உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کاویری کالنگ پروجیکٹ: ایشا فاونڈیشن کے فنڈ جمع کرنے کےخلاف دائر عرضی خارج

    کاویری کالنگ منصوبہ: ایشا فاونڈیشن کے فنڈ جمع کرنے کےخلاف دائر عرضی خارج

    کاویری کالنگ منصوبہ: ایشا فاونڈیشن کے فنڈ جمع کرنے کےخلاف دائر عرضی خارج

    کرناٹک ہائی کورٹ (Karnataka High Court) نے منگل کو سدگرو جگی واسو دیو (Sadhguru Jaggi Vasudev) کے ایشا فاونڈیشن (Isha Foundation) کو کاویری کالنگ پروجیکٹ (Cauvery Calling project) کے لئے عوام سے رقم جمع کرنے سے روکنے کا حکم دینے کا مطالبہ کرنے سے متعلق عرضی خارج کردی ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      بنگلورو: کرناٹک ہائی کورٹ (Karnataka High Court) نے منگل کو سدگرو جگی واسو دیو (Sadhguru Jaggi Vasudev) کے ایشا فاونڈیشن (Isha Foundation) کو کاویری کالنگ پروجیکٹ (Cauvery Calling project) کے لئے عوام سے رقم جمع کرنے سے روکنے کا حکم دینے کا مطالبہ کرنے سے متعلق عرضی خارج کردی ہے۔

      کارگزار چیف جسٹس ستیش چندر شرما (Acting Chief Justice Satish Chandra Sharma) اور جسٹس سچن شنکر مگدم (Justice Sachin Shankar Magadum) کی بینچ نے اس بات پر بھی روشنی ڈالی کہ کیسے ایشا آوٹ ریچ نے پیڑ لگانے کا کام شروع کیا ہے۔

      مذکورہ معاملے میں سپریم کورٹ نے جنگل کی ضروریات اور جنگلات کو نقصان کے سبب ہو رہی مصیبت پر سماعت کی۔ اس لئے انسانوں اور زمین کو بچانے کے لئے دستیاب صرف ایک ہی طریقہ جنگل لگانا ہے۔ اس لئے ہمیں درخت لگانے کے معاملے میں مدعا علیہ کی طرف سے اٹھائے گئے اقدامات کی تعریف کرنی چاہئے۔ عرضی مسترد کئے جانے کے لائق (Petition deserves to be dismissed) ہے۔

      کاویری کالنگ منصوبہ میں سوکھ چکی ندیوں کو دوبارہ شروع کرنے (revitalize rivers) کے لئے قدم شامل ہیں۔ عرضی میں الزام لگایا گیا ہے کہ پروجیکٹ کے تحت ایشا فاونڈیشن سرکاری زمین (government land) پر پودے لگا رہی ہے اور اس کے لئے عوام سے پیسے جمع کر رہی ہے۔ ایڈووکیٹ اے وی امرناتھن (advocate AV Amarnathan) کی عرضی میں حکومت کے ذریعہ پروجیکٹ کے فائدے اور نقصان کا مطالعہ کئے بغیر پودے لگانے کے لئے ایک پرائیویٹ تنظیم اپنی زمین کا استعمال کرنے کی اجازت دینے کا موضوع اٹھایا گیا تھا۔

      عرضی گزار نے ترک دیا کہ عوام سے پیسہ جمع کرنا مشکل ہے۔ کیونکہ ایشا فاونڈیشن کے ذریعہ ₹10,626 کروڑ جمع کرنے کی امید ہے۔ عدالت نے اکتوبر 2020 میں عرضی گزار کو ہٹانے کے بعد معاملے کا از خود نوٹس لینے والی عرضی (suo motu petition) کے طور پر سننے کا فیصلہ کیا تھا۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: