உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Karnataka Hijab Controversy: منگلور یونیورسٹی کی 16 فیصد مسلم لڑکیوں نے لیا ٹرانسفر سرٹیفکیٹ

    کلاسیز میں حجاب پر پابندی کے سبب منگلورو یونیورسٹی کی 16 فیصد مسلم لڑکیوں نے ٹی سی لیا۔ (News18)

    کلاسیز میں حجاب پر پابندی کے سبب منگلورو یونیورسٹی کی 16 فیصد مسلم لڑکیوں نے ٹی سی لیا۔ (News18)

    کرناٹک کے کالجوں میں کلاس میں حجاب پہننے سے متعلق شروع ہوئے تنازعہ کے بعد سے منگلورو یونیورسٹی میں مطابق، جنوبی کنڑ اور اڈپی ضلع میں ایم یو کے سرکاری، امداد یافتہ اور متعلقہ کالجوں میں 21-2020 اور 22-2021 میں مختلف کلاسیز کے لئےداخلہ لینے والی کل 900 مسلم طالبات میں سے 145 نے ٹی سی لے لیا تھا۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Karnataka | Mangalore
    • Share this:
      بنگلورو: کرناٹک کے کالجوں میں مسلم طالبات کے حجاب پہن کر کلاس میں جانے سے متعلق بھڑکے تنازعہ کا اثر پر مسلم طالبات کی پڑھائی پر واضح طور پر نظر آنے لگا ہے۔ منگلورو یونیورسٹی (ایم یو) کے وائس چانسلر پروفیسر پی ایس یدپدتھا نے مئی میں اعلان کیا تھا کہ جو طالبات بغیر حجاب کے کلاس میں شامل ہونے کی خواہشمند نہیں ہیں، انہیں ٹی سی (ٹرانسفر سرٹیفکیٹ) جاری کردیا جائے گا۔

      اس کے بعد سے 16 فیصد سے زیادہ مسلم طالبات ایم یو سے متعلق سرکاری اور امداد یافتہ کالجوں کے دوسرے، تیسرے، چوتھے اور پانچویں سیمسٹر میں اپنی ٹی سی لے لی ہے۔ ڈکن ہیرالڈ کی ایک خبر کے مطابق جنوبی کنڑ اور اڈپی ضلع میں ایم یو کے سرکاری، امداد یافتہ اور متعلقہ کالجوں میں 21-2020 اور 22-2021 میں مختلف کلاسیز کے لئےداخلہ لینے والی کل 900 مسلم طالبات میں سے 145 نے ٹی سی لے لیا تھا۔ ان میں سے کچھ کالجوں میں داخلہ کرایا ہے، جہاں حجاب کی اجازت ہے۔ دیگر طالبات نے فیس کی ادائیگی کرنے میں نا اہلی جیسی وجوہات کی بنا پر کالج چھوڑ دیا۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      CBI چھاپہ ماری کے درمیان دہلی حکومت کے 12 آئی اے ایس اور 70 ایڈہاک DANICS افسران کا ٹرانسفر

      آر ٹی آئی سے حاصل جانکاری کے مطابق حالانکہ کوڈاگو ضلع میں سبھی 113 مسلم طالبات اپنے کالجوں میں پڑھنا جاری رکھے ہوئے ہیں۔ کوڈاگو ضلع میں ایم یو کے 10 سرکاری، امداد یافتہ اور متعلقہ کالجز ہیں۔ امداد یافتہ کالجوں (8 فیصد) کے مقابلے سرکاری کالجوں (34 فیصد) میں ٹی سی چاہنے والی مسلم طالبات کی تعداد زیادہ ہے۔

      جنوب کنڑ کے سرکاری کالجوں میں اس معاملے میں ڈاکٹر پی دیانند پائی پی ستیشا پائی گورنمنٹ فرسٹ گریڈ کالج سب سے اوپر ہے، جس میں 51 مسلم طالبات میں سے 35 نے اپنی ٹی سی لے لی ہے۔ جنوب کنڑ اور اڈپی اضلاع میں 39 سرکاری، 36 امداد یافتہ کالج ہیں۔ حجاب تنازعہ کے مرکز رہے اجّرکاڈ میں گورنمنٹ فرسٹ کالج میں نو طالبات نے اپنی ٹی سی لی ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: