کرتارپورکاریڈورپرہند- پاک نےکئےدستخط، 7 کلو سامان اور11 ہزارروپئے ہی لےجاسکیں گےعقیدت مند

ہندوستان کی جانب سے وزارت داخلہ میں جوائنٹ سکریٹری ایس سی داس اورپاکستان کی جانب سے فارن سروس کےافسرمحمد فیصل نے یہاں مفاہمت نامے پردستخط کرکےدستاویزوں کا تبادلہ کیا۔

Oct 24, 2019 08:08 PM IST | Updated on: Oct 24, 2019 08:11 PM IST
کرتارپورکاریڈورپرہند- پاک نےکئےدستخط، 7 کلو سامان اور11 ہزارروپئے ہی لےجاسکیں گےعقیدت مند

کرتارپورکاریڈور: فائل فوٹو

ڈیرابابا نانک: ہندوستان اورپاکستان نے سکھوں کےپہلے گرونانک دیو جی کے 550ویں یوم پیدائش (پرکاش پرو)کے موقع پرکرتارپورصاحب گرودوارے تک کا گلیارا ہندوستانی زائرین کےلئے کھولنے کے سلسلے میں طویل عرصے سے معاہدے کا انتظار تھا، اس پر آج  دستخط کردیئے۔ عقیدت مند زیادہ سے زیادہ سات کلو سامان اور11 ہزارروپئے ہی لے جاسکیں گے۔ مرکزی وزارت داخلہ نے اپنی ٹواینڈ ڈونٹس کی ایک فہرست جاری کی ہے، جس کے مطابق 13 سال سے کم عمرکے اور75 سال سے زیادہ عمرکے لوگوں کو اکیلے جانے کی اجازت نہیں ہوگی۔

واضح رہے کہ ہندوستان اور پاکستان نے دوطرفہ تعلقات میں جاری کشیدگی سے متاثرہوئے بغیرجمعرات کو تاریخی گلیارے (کرتارپور کاریڈور) کو شروع کرنے سے متعلق معاہدے پر دستخط کردیئے۔ اس سے اب ہندوستان کے سکھ عقیدت مند پاکستان واقع پاک دربار صاحب تک جاپائیں گے۔  ہندوستان کی جانب سے وزارت داخلہ میں جوائنٹ سکریٹری ایس سی داس اور پاکستان کی جانب سے فارن سروس کےافسر محمد فیصل نے یہاں مفاہمت نامے پردستخط کر کے دستاویزوں کا تبادلہ کیا۔ وزیراعظم نریندرمودی 9 نومبرکو ہندوستان کی جانب سےتیار کی گئی سہولیات کا افتتاح کریں گے۔

معاہدے کے تحت روزانہ کم ازکم پانچ ہزارعقیدت مندوں کو کرتارپورمیں واقع گرودوارے میں جانےکی اجازت دی جائےگی۔ ہندوستان کی طرف سے یہاں آنے والےعقیدت مندوں کی فہرست 10 دن پہلے پاکستان کوفراہم کرانی ہوگی۔ پاکستان کی فہرست کی جانچ کرکے سفر سے چاردن پہلےاسے منظورکرکے ہندوستان کومطلع کرائےگا۔

Loading...

پاکستان نے ہندوستان اورغیرمقیم ہندوستانی شہری کارڈ یافتہ غیرملکیوں کےلئے کرتار پور گرودوارے کے درشن کےلئے 20 ڈالرکی فیس لگائی ہے۔ ہندوسان نےبارباراس سےاپیل کی تھی کہ وہ عقیدت مندوں کے جذبات کا خیال رکھتے ہوئے فیس نہ لگائے، لیکن پاکستان نے اس اپیل کو نہیں مانا۔ کرتارپورمیں واقع گرودوارے میں بابا گرونانک دیو جی نے اپنی زندگی کے آخری دن گزارے تھے اوران کی 550 ویں یوم پیدائش پراس گلیارے کو کھولا جانا ہے، جس سے ہندوستان کے سکھ طبقے کے لوگ درشن کےلئےآسانی سے وہاں آسکیں۔

Loading...