ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

جی ایچ ایم سی انتخابات: ٹی آرایس کو 100نشستیں حاصل ہوں گی: کے سی آر کی بیٹی کے کویتا کا دعویٰ

ٹی آرایس کی رکن کونسل کے کویتا نے دعویٰ کیا ہے کہ گذشتہ 6 برسوں کے دوران ٹی آر ایس حکومت نے حیدرآباد کی نئی صورت گری کی ہے۔ انہوں نے جی ایچ ایم سی انتخابات کی انتخابی تشہیری مہم گاندھی نگر ڈویژن میں چلاتے ہوئے اپیل کی کہ یکم دسمبر کو ہونے والے جی ایچ ایم سی انتخابات میں کارکے نشان کو ووٹ دیں۔

  • UNI
  • Last Updated: Nov 29, 2020 05:25 PM IST
  • Share this:
جی ایچ ایم سی انتخابات: ٹی آرایس کو 100نشستیں حاصل ہوں گی: کے سی آر کی بیٹی کے کویتا کا دعویٰ
جی ایچ ایم سی انتخابات: ٹی آرایس کو 100نشستیں حاصل ہوں گی: کے سی آر کی بیٹی کے کویتا کا دعویٰ

حیدرآباد: ٹی آرایس کی رکن کونسل کے کویتا نے دعویٰ کیا ہے کہ گذشتہ 6 برسوں کے دوران ٹی آر ایس حکومت نے حیدرآباد کی نئی صورت گری کی ہے۔ انہوں نے جی ایچ ایم سی انتخابات کی انتخابی تشہیری مہم گاندھی نگر ڈویژن میں چلاتے ہوئے اپیل کی کہ یکم دسمبر کو ہونے والے جی ایچ ایم سی انتخابات میں کارکے نشان کو ووٹ دیں۔ انہوں نے اس ڈویژن کی بعض بی سی کالونیوں میں پدیاتر کی اور عوام سے ملاقات کی۔ اس موقع پر انہوں نے اس یقین کا اظہار کیا کہ ان انتخابات میں ٹی آر ایس 100 نشستوں پر کامیابی حاصل کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعلیٰ کے چندر شیکھر راو کا مقابلہ کرنے کے لئے مرکز سے بڑی تعداد میں بی جے پی کے لیڈران یہاں آرہے ہیں۔11سال پہلے 29 نومبر 2009 کو ہی اپنی جان کی پرواہ کئے بغیر وزیراعلی کے چندرشیکھرراو نے تلنگانہ ریاست کے قیام کے لئے مرن برت شروع کیا تھا۔اسی دیکشا دیوس کے جذبہ کے ساتھ تلنگانہ کی ترقی کی پیشرفت ہورہی ہے۔


کے کویتا نے کہا کہ سیلاب کے موقع پر نظر نہ آنے والے لیڈران اب ووٹ کے لئے عوام کے درمیان آرہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ گذشتہ انتخابات میں بنڈلہ گنیش نے کامیڈی کی تھی اور ان انتخابات میں بنڈی سنجے کامیڈی کررہے ہیں۔
کے کویتا نے کہا کہ سیلاب کے موقع پر نظر نہ آنے والے لیڈران اب ووٹ کے لئے عوام کے درمیان آرہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ گذشتہ انتخابات میں بنڈلہ گنیش نے کامیڈی کی تھی اور ان انتخابات میں بنڈی سنجے کامیڈی کررہے ہیں۔


کے کویتا نے کہا کہ سیلاب کے موقع پر نظر نہ آنے والے لیڈران اب ووٹ کے لئے عوام کے درمیان آرہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ گذشتہ انتخابات میں بنڈلہ گنیش نے کامیڈی کی تھی اور ان انتخابات میں بنڈی سنجے کامیڈی کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حیدرآباد میں سیلاب کی کسی بھی پارٹی اور لیڈر نے پرواہ نہیں کی تاہم ٹی آرایس کی حکومت متاثرہ خاندانوں کو فی کس دس ہزار روپئے فراہم کررہی ہے۔ ان انتخابات کے بعد بقیہ متاثرین کو بھی رقمی امداد فراہم کی جائے گی۔انہوں نے کہاکہ کورونا وبا کے عرصہ کے دوران بھی ٹی آرایس حکومت نے کام کیا۔انہوں نے ٹی آرایس کوووٹ دیتے ہوئے حیدرآباد کو بچانے کی بھی خواہش کی۔ رائے دہندے اپنے قیمتی ووٹ کا استعمال کریں اور جی ایچ ایم سی انتخابات میں ٹی آرایس کو کامیاب بنائیں۔ تقریباً 500کارکنوں،مقامی لیڈروں اور عوام کے ساتھ انہوں نے پدیاتر کا آغاز کیا۔ ہر بستی میں ان کا مقامی خواتین نے گلپوشی کرتے ہوئے استقبال کیا۔


 نیتا جی نگر کے عوام نے ان کے علاقہ میں سڑک کے مسائل سے واقف کروایاجس پر کویتا نے کہا کہ اس علاقہ میں سڑک کی تنصیب کی ذمہ داری ان کی ہے۔

نیتا جی نگر کے عوام نے ان کے علاقہ میں سڑک کے مسائل سے واقف کروایاجس پر کویتا نے کہا کہ اس علاقہ میں سڑک کی تنصیب کی ذمہ داری ان کی ہے۔


نیتا جی نگر کے عوام نے ان کے علاقہ میں سڑک کے مسائل سے واقف کروایاجس پر کویتا نے کہا کہ اس علاقہ میں سڑک کی تنصیب کی ذمہ داری ان کی ہے۔ مقامی افراد نے کویتا سے کہا کہ گذشتہ 6 برسوں کے دوران گاندھی نگر ڈویژن میں کمیونٹی ہال، بستی دواخانہ کی تعمیر عمل میں لائی گئی۔ اس موقع پر کئی نوجوان لڑکے اور لڑکیوں نے ان کے ساتھ سیلفی بھی لی۔ انہوں نے کہا کہ ٹی آرایس کی فتح کا آغاز گاندھی نگر سے ہوگا۔ مشیرآباد ٹی آر ایس کے رکن اسمبلی ایم گوپال، گاندھی نگر ڈویژن کے ٹی آر ایس امیدوار ایم پدما نریش، قائدین جئے سنہا، سریدھر ریڈی نے پد یاترا میں شرکت کی۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Nov 29, 2020 05:17 PM IST