ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

کسانوں کے احتجاج کو لے کر جماعت اسلامی حکومت کے رویے پر برہم

جماعت اسلامی ہند نے دہلی کی سرحدی ریاستوں کے قریب کسانوں کے احتجاج کے خلاف کریک ڈاون کی مذمت کرتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ کسانوں کی بات سنے، ان کے احتجاج کے حق کا احترام کرے ، ان کے مطالبات پورے کرے اور حالیہ زرعی قوانین کو کالعدم قرار دے ۔

  • Share this:
کسانوں کے احتجاج کو لے کر جماعت اسلامی حکومت کے رویے پر برہم
کسانوں کے احتجاج کو لے کر جماعت اسلامی حکومت کے رویے پر برہم (PTI)

جماعت اسلامی ہند نے دہلی کی سرحدی ریاستوں کے قریب کسانوں کے احتجاج کے خلاف کریک ڈاون کی مذمت کرتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ کسانوں کی بات سنے،  ان کے احتجاج کے حق کا احترام کرے ، ان  کے مطالبات پورے کرے اور حالیہ  زرعی قوانین کو کالعدم قرار دے ۔ یہ باتیں جماعت اسلامی ہند کے نائب امیر پروفیسر سلیم انجینئر نے کہی ۔ انہوں نے آج میڈیا کو جاری اپنے بیان میں کہا کہ ”جماعت اسلامی ہند اس کریک ڈاون کی مذمت کرتی ہے اور اپنا آئینی حق پانے کے لئے دارالحکومت تک پہنچنے کے خواہشمند کسانوں پر پانی کی بوچھاریں، پولیس کی رکاوٹیں، لاٹھی چارج اور آنسوگیس کا استعمال کرنے کو نا مناسب عمل قرار دیتی ہے ۔


رپورٹ کے مطابق دہلی پولیس نے ریاستی حکومت سے درخواست کی ہے کہ احتجاج کرنے والے کسانوں کو حراست میں رکھنے کے لئے 9 اسٹیڈیموں کو ”شفٹ جیل“ میں تبدیل کیا جائے“۔ اس طرح کا عمل کسان برادری کو الگ تھلگ کرد ے گا  اور یہ تاثر پیدا کرے گا کہ حکومت کسانوں کی فلاح و بہبود کے لئے سنجیدہ نہیں ہے اور نہ ہی حکومت ان کی شکایتوں کے سلسلے میں بات چیت کرنے کی خواہشمند ہے۔


جماعت اسلامی ہند نے پارلیمنٹ میں منظور کردہ کسان قوانین پر حال ہی میں اعتراض کیا تھا۔ جماعت اسلامی اس قانون کو کسان مخالف، ہندوستان کے آئین کی روح کے خلاف اور ایک فلاحی ریاست کے برعکس سمجھتی ہے ۔ یہ قانون کسانوں کو کمزور اور کارپوریٹس کو مضبوط کرے گا ۔ جماعت نے ان قوانین کو مسترد کرنے کا مطالبہ کیا تھا ۔ حکومت کو چاہئے کہ ان قوانین کو پاس کرنے سے پہلے کسانوں کو اپنے بھروسے میں لیتی ۔ حکومت کو چاہئے کہ شہریوں کے  پر امن احتجاج کے حق کا احترام کرے ، ان کے مطالبات کو سنے اور ان قوانین میں مناسب ترمیم کرے ۔


اختلاف کی آواز کو خاموش کرنے کے لئے طاقت کا جو طریقہ اختیار کیا جاتا ہے ، وہ حالات کو مزید بگاڑے گا اور ہماری جمہوریت کو کمزور کرے گا اور  ہندوستان کے وقار کو مجروح کرے گا ۔ مظاہرین کو بھی اس بات کا خیال رکھنا چاہئے کہ وہ غیر تحریکی عناصر سے محتاط رہیں ، جو اس مظاہرے کو پرتشد بنانے کی سازش رچ سکتے ہیں ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Nov 28, 2020 11:49 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading