ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

وزیر اعظم نے کہا : راتوں رات نہیں آئے زرعی قوانین، سالوں سے ہورہی تھی بحث

وزیر اعظم نے کہا کہ کسانوں کے ان مطالبات کو پورا کردیا گیا ہے ، جنہیں برسوں سے روکا گیا تھا ۔ کسانوں کیلئے جو نئے قوانین بنے ہیں ، گزشتہ دو دہائی سے مرکز ، ریاستی حکومت اور تنظیمیں اس پر غور و خوض کررہی تھیں ۔

  • Share this:
وزیر اعظم نے کہا : راتوں رات نہیں آئے زرعی قوانین، سالوں سے ہورہی تھی بحث
وزیر اعظم نے کہا : راتوں رات نہیں آئے زرعی قوانین، سالوں سے ہورہی تھی بحث

زرعی قوانین کے خلاف سندھو بارڈر پر کسان 23 دنوں سے آندولن کررہے ہیں ۔ اسی درمیان وزیر اعظم مودی نے جمعہ کو مدھیہ پردیش کے کسانوں سے خطاب کیا ۔ وزیر اعظم مودی نے کہا کہ گزشتہ دنوں سے ملک میں کسانوں کیلئے جو نئے قوانین بنے ہیں ، ان کی بہت چرچا ہے ۔ یہ زرعی اصلاحاتی قوانین راتوں رات نہیں آئے ہیں ، گزشتہ 20 ۔ 22 سالوں سے ہر سرکار نے اس پر چرچا کی ہے ۔ کم و بیش سبھی تنظیموں نے اس پر تبادلہ خیال کیا ہے ۔ وزیر اعظم نے کہا کہ کسانوں کے ان مطالبات کو پورا کردیا گیا ہے ، جنہیں برسوں سے روکا گیا تھا ۔ کسانوں کیلئے جو نئے قوانین بنے ہیں ، گزشتہ دو دہائی سے مرکز ، ریاستی حکومت اور تنظیمیں اس پر غور و خوض کررہی تھیں ۔


وزیر اعظم نے کہا کہ میں کاروباری اور صنعتی دنیا سے گزارش کروں گا کہ وہ ذخیرہ اندوزری کے جدید نظام بنانے میں ، کولڈ اسٹوریج بنانے میں اور فوڈ پروسیسنگ میں نئے آلات لگانے میں اپنا کردار ادا کریں اور اپنی سرمایہ کاری مزید بڑھائیں ۔ یہ صحیح معنوں میں کسانوں کی خدمت ہوگی ، ملک کی خدمت ہوگی ۔ وزیر اعظم نے کہا کہ زرعی اصلاحاتی قوانین سے وابستہ ایک اور جھوٹ اے پی ایم سی یعنی ہماری منڈیوں کو لے کر پھیلا جارہا ہے ، ہم نے قانون میں کیا کیا ہے ؟ ہم نے قانون میں کسانوں کو آزادی دی ہے ، نیا متبادل دیا ہے ۔




وزیر اعظم نے کہا کہ تیزی سے بدلتے عالمی پس منظر میں ہندوستان کا کسان ، سہولیات اور جدید طور طریقوں کے فقدان کی وجہ سے بے بس ہوتا جائے ، یہ قبول نہیں کیا جاسکتا ۔ پہلے ہی کافی تاخیر ہوچکی ہے ۔ جو کام 25۔30 سال پہلے ہوجانے چاہئے تھے ، وہ اب ہورہے ہیں ۔

وزیراعظم مودی نے کہا کہ گزشتہ چھ سالوں میں ہماری حکومت نے کسانوں کی ایک ایک ضرورت کو دھیان میں رکھتے ہوئے کام کیا ہے ۔ گزشتہ کئی دنوں سے ملک میں کسانون کیلئے جو نئے قوانین بنے ، ان کی کافی چرچا ہے ، یہ زرعی اصلاحاتی قوانین راتوں رات نہیں آئے ہیں ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Dec 18, 2020 04:29 PM IST