உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    West Bengal: بی جے کارکن کا الزام، ٹی ایم سی کارکنان نے بیوی کے ساتھ کی آبروریزی، دو گرفتار

    آبروریزی معاملے میں گرفتار کئے گئے ملزمین کو آج الوبیریا سب ڈویژن عدالت میں پیش کیا گیا، جس کے بعد ملزمین کو پولیس حراست میں بھیج دیا گیا۔ اس معاملے میں پولیس ٹی ایم سی کے دو دیگر لیڈروں سے پوچھ گچھ کرنے میں مصروف ہے اور آبروریزی میں شامل تین لوگوں کی تلاش جاری ہے۔

    آبروریزی معاملے میں گرفتار کئے گئے ملزمین کو آج الوبیریا سب ڈویژن عدالت میں پیش کیا گیا، جس کے بعد ملزمین کو پولیس حراست میں بھیج دیا گیا۔ اس معاملے میں پولیس ٹی ایم سی کے دو دیگر لیڈروں سے پوچھ گچھ کرنے میں مصروف ہے اور آبروریزی میں شامل تین لوگوں کی تلاش جاری ہے۔

    آبروریزی معاملے میں گرفتار کئے گئے ملزمین کو آج الوبیریا سب ڈویژن عدالت میں پیش کیا گیا، جس کے بعد ملزمین کو پولیس حراست میں بھیج دیا گیا۔ اس معاملے میں پولیس ٹی ایم سی کے دو دیگر لیڈروں سے پوچھ گچھ کرنے میں مصروف ہے اور آبروریزی میں شامل تین لوگوں کی تلاش جاری ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: مغربی بنگال میں ایک حیران کرنے والا معاملہ سامنے آیا۔ یہاں ایک بی جے پی کارکن نے پولیس کے پاس اپنی بیوی کی آبروریزی ہونے کی شکایت درج کرائی۔ بی جے پی کارکن نے ترنمول کانگریس کے مقامی لیڈروں پر الزام لگایا کہ انہوں نے اس کی بیوی کے ساتھ اجتماعی آبروریزی کی۔ شکایت کی بنیاد پر پولیس نے دو نامزد لوگوں کو گرفتار کرلیا ہے۔ حادثہ سامنے آنے کے بعد ٹی ایم سی نے کہا کہ وہ متاثرہ کے ساتھ ہے اور قصورواروں کو سزا دینے کا مطالبہ کیا۔ یہ حادثہ امتا اسمبلی حلقہ کے باگنان کا ہے۔

      شکایت درج کراتے ہوئے متاثرہ کے شوہر نے کہا کہ میری بیوی کو کچھ ماہ قبل اسٹروک آیا تھا، اس وجہ سے وہ بول نہیں پاتی۔ اس کی بیوی نے اسے بتایا کہ پانچ لوگ تھے، جنہوں نے اس کے ساتھ آبروریزی کی۔ الزام ہے کہ خاتون کو باندھ کر اس کے ساتھ آبروریزی کے حادثے کو انجام دیا گیا۔ پولیس نے دو لوگوں کو گرفتار کرلیا جبکہ اس میں شامل تین لوگ ابھی فرار چل رہے ہیں۔ پولیس ان کی تلاش میں مصروف ہے۔

      رات ساڑھے 12 بجے گھر میں گھسے ملزم

      شکایت کے مطابق، متاثرہ ہفتہ کی شب گھر میں اکیلی تھی اور شوہر کام سے کولکاتا گیا ہوا تھا۔ رات ساڑھے بارہ بجے ٹی ایم سی بلاک صدر قطب الدین ملک اور ٹی ایم سی یوتھ صدر دیواشیش رانا دیگر تین لوگوں کے ساتھ بی جے پی کارکن کے گھر پہنچتے ہیں۔ وہ باہر سے متاثرہ کا نام بلاتے ہیں تو اسے لگتا ہے کہ شوہر واپس آگیا۔ اس نے دروازہ کھول دیا۔ اس کے بعد پانچ لوگ اندر آجاتے ہیں اور کارکنان کی اہلیہ کو باندھ کر آبروریزی کرتے ہیں۔ حادثہ کے بعد متاثرہ بے ہوش ہوجاتی ہے۔ دوسرے دن جب شوہر گھر لوٹتا ہے تو اسے حادثہ کی اطلاع ملتی ہے۔ بعد میں خاتون کو علاج کے لئے الوبیریا اسپتال میں داخل کرایا گیا۔

      اپوزیشن میں ہونے کی وجہ سے ہوا استحصال

      گرفتار کئے گئے ملزمین کو آج الوبیریا سب ڈویژن عدالت میں پیش کیا گیا، جس کے بعد ملزمین کو پولیس حراست میں بھیج دیا گیا۔ اس معاملے میں پولیس ٹی ایم سی کے دو دیگر لیڈروں سے پوچھ گچھ کرنے میں مصروف ہے اور آبروریزی میں شامل تین لوگوں کی تلاش جاری ہے۔ بی جے پی کارکنان نے کہا کہ اس حادثہ کو بدلے کے جذبے سے انجام دیا گیا ہے۔ اس نے کہا کہ میں اپوزیشن میں ہوں، اس لئے میری بیوی کا استحصال کیا گیا۔

      لا اینڈ آرڈر کو لے کر بی جے پی نے کی تنقید

      وہیں بی جے پی نے ریاست میں لا اینڈ آرڈر کو لے کر حکومت پر تنقید کی ہے۔ بی جے پی کے سینئر لیڈر اور مغربی بنگال کے پارٹی کے معاون انچارج امت مالویہ نے ایک ٹوئٹر پوسٹ میں الزام لگایا کہ ’مقامی پولیس نے شروع میں اس کی شکایت درج کرنے سے انکار کر دیا اور معاملے کو ہلکا کرنا چاہتی تھی۔ ٹی ایم سی مخالفین کو خاموش کرانے کے لئے آبروریزی کو ایک سیاسی آلے کے طور پر استعمال کر رہی ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: