உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ایل اے سی پر نگرانی کیلئے HAL تیار کررہا ہے 'ریٹری ونگ' ڈرون، چین کی ہر حرکت پر ہوگی نظر

    ایل اے سی پر نگرانی کیلئے HAL تیار کررہا ہے 'ریٹرو ونگ' ڈرون، چین کی ہر حرکت پر ہوگی نظر ۔ علامتی تصویر ۔

    ایل اے سی پر نگرانی کیلئے HAL تیار کررہا ہے 'ریٹرو ونگ' ڈرون، چین کی ہر حرکت پر ہوگی نظر ۔ علامتی تصویر ۔

    LAC Drone News: ہندوستان ایروناٹکس لمیٹڈ ( ایچ اے ایل ) ایک آرٹیفیشیل انٹلیجنس سے چلنے والا ملٹی رول ڈرون تیار کرنے پر کام کر رہا ہے، جو طویل عرصے تک کام کرنے کے قابل ہو گا۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi | New Delhi | New Delhi
    • Share this:
      نئی دہلی : ہندوستان ایروناٹکس لمیٹڈ ( ایچ اے ایل ) ایک آرٹیفیشیل انٹلیجنس سے چلنے والا ملٹی رول ڈرون تیار کرنے پر کام کر رہا ہے، جو طویل عرصے تک کام کرنے کے قابل ہو گا۔ ذرائع نے اتوار کو بتایا کہ اس ڈرون کو چین کے ساتھ متصل سرحدوں سمیت اونچائی والے علاقوں میں اسٹریٹجک آپریشنز کے لئے استعمال کیا جائے گا۔ انہوں نے بتایا کہ یہ 'روٹری ونگ' ڈرون میزائل اور سینسر سمیت 40 کلو وزن لے جانے کی صلاحیت کا حامل ہوگا اور اسے ایل اے سی سے متصل پہاڑی علاقوں پر کڑی نظر رکھنے کیلئے مسلح افواج کی ضرورت کو مدنظر رکھتے ہوئے ڈیولپ کیا جا رہا ہے۔

       

      یہ بھی پڑھئے :  اسرو کی جانب سے پہلی بارسب  سے ہلکا اورچھوٹا سٹلائیٹ SSLV خلا میں روانہ، جانیے تفصیل


      ذرائع نے بتایا کہ ایچ اے ایل نے اگلے سال کے وسط تک یو اے وی کی پہلی آزمائشی پرواز کرنے کا ہدف مقرر کیا ہے اور اس پروجیکٹ کے پہلے مرحلے میں 60 ایسے ڈرون تیار کرنے کا منصوبہ ہے۔ انہوں نے کہا لمبے وقت تک چلنے کے قابل ڈرون آرٹیفیشیل انٹلیجنس سے لیس ہوں گے اور مسلح افواج اس کا ضروری سامان کی نقل و حمل سمیت دیگر مقاصد کیلئے استعمال کر سکیں گی۔ ذرائع نے بتایا کہ ڈرون کو اس طرح سے ڈیولپ کیا جا رہا ہے کہ یہ سینسر، میزائل اور کئی دیگر ہتھیاروں سمیت اہم فوجی ساز و سامان لے جا سکتا ہے۔

       

      یہ بھی پڑھئے: آکاسا ایئر کی پہلی پروازممبئی سے روانہ، ’شعبہ ہوا بازی میں ایک نئی صبح کاآغاز‘


      اس کے علاوہ ایچ اے ایل ایک اہم پروجیکٹ کے تحت اسرائیلی ہیران ٹی پی ڈرون کے پروڈکشن کے امکانات بھی تلاش کر رہا ہے، جس میں ڈرون بنانے والی کمپنی کا تعاون لیا جائے گا۔ ذرائع نے کہا کہ اس منصوبے کا پروجیکٹ کا مقصد ہماری مسلح افواج کے ساتھ ساتھ عالمی سپلائی کی ضرورت کو بھی پورا کرنا ہے۔ درمیانی اونچائی والے ہیران ڈرون 35,000 فٹ کی اونچائی پر تقریباً 45 گھنٹے تک کام کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں ۔

      ایچ اے ایل ، ڈی آر ڈی او کے ساتھ دو الگ الگ ڈرون منصوبوں پر کام کر رہا ہے۔ فوج اگلے چند سالوں میں بڑی تعداد میں ڈرون حاصل کرنے کا منصوبہ بنا رہی ہے۔ تاکہ ان کی نگرانی کی صلاحیت میں نمایاں اضافہ ہوسکے، خاص طور پر ایل اے سی اور ہند مہاساگر میں چینی سرگرمیوں کی نگرانی کے پیش نظر اس قدم کو کافی اہم مانا جارہا ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: