لالو نے سیاست میں آتے ہی بدعنوانیوں کے دہانے کھول دئے ، غلط پیسوں سے قائم کی پارٹی : سی بی آئی عدالت

چارہ گھوٹالہ سے وابستہ دمکا ٹریزری کیس میں بہار کے سابق وزیر اعلی لالو پرساد یادو کو سزا سناتے ہوئے سی بی آئی کی عدالت نے ان کے خلاف کافی سخت تبصرے کئے ۔

Mar 25, 2018 09:11 AM IST | Updated on: Mar 25, 2018 01:38 PM IST
لالو نے سیاست میں آتے ہی بدعنوانیوں کے دہانے کھول دئے ، غلط پیسوں سے قائم کی پارٹی : سی بی آئی عدالت

چارہ گھوٹالہ سے وابستہ دمکا ٹریزری کیس میں بہار کے سابق وزیر اعلی لالو پرساد یادو کو سزا سناتے ہوئے سی بی آئی کی عدالت نے ان کے خلاف کافی سخت تبصرے کئے ۔ عدالت نے کہا کہ سیاست میں آنے کے بعد لالو یادو  نے بدعنوانیوں کے دہانے کھول دئے ۔ ان کی پارٹی آر جے ڈی بھی سبھی غیر قانونی طریقوں سے کمائے گئے پیسے سے بنائی گئی پارٹی ہے ۔

لالو یادو کو چودہ سال کی جیل کی سزا سناتے ہوئے سی بی آئی جج شیو پال سنگھ نے کہا کہ لالو نے سیاست میں آتے ہی بدعنوانیوں کے دہانے کھول دئے اور بدعنوان افسروں کو تحفظ فراہم کیا ۔ جج نے کہا کہ ریاست میں سرکاری افسران کو پوری تنخواہ نہیں ملی اور انہیں مجبورا آدھی تنخواہ پر کام کرنا پڑا ۔ انہوں نے کہا کہ ملزم نے غیر قانونی ذرائع سے کافی سارا پیسہ کمایا اور ایک علاقائی پارٹی کھڑی کر ڈالی ، جس کے سب کچھ لالو پرساد یادو خود ہی بن گئے ۔

Loading...

عدالت نے کہا کہ ہندوستانی آئین کا حلف لینے کے باوجود کبھی بھی ان کا خیال نہیں رکھا گیا ہے ۔ عدلت نے لالو کو دمکا چارہ گھوٹالہ کے معاملہ میں سزا سنائی ہے ۔ جج نے کہا کہ لالو نے کئی اضلاع سے سرکاری رقم غلط طریقہ سے نکالی اور خرچ کیا اور جن لوگوں نے اس میں ان کا ساتھ دیا ان کو غلط طریقہ سے تحفظ فراہم کیا گیا ۔

Loading...