چارہ گھوٹالہ کیس : ایک اور کیس میں لالو قصوروار قرار ، پانچ سال کی جیل اور 10 لاکھ روپے کا جرمانہ عائد

رانچی۔ سرخیوں میں چھائے چارہ گھوٹالہ کے ایک اور معاملہ میں مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) کی خصوصی عدالت نے آج راشٹریہ جنتا دل (آر جے ڈی) کے صدر لالو پرساد یادو اور بہار کے سابق وزیر اعلی جگن ناتھ مشرا سمیت کئی دوسرے لوگوں کو مجرم قرار دیا۔

Jan 24, 2018 12:19 PM IST | Updated on: Jan 24, 2018 05:05 PM IST
چارہ گھوٹالہ کیس : ایک اور کیس میں لالو قصوروار قرار ، پانچ سال کی جیل اور 10 لاکھ روپے کا جرمانہ عائد

رانچی: سرخیوں میں چھائے چارہ گھوٹالہ کے ایک اور معاملہ میں مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) کی خصوصی عدالت نے آج راشٹریہ جنتا دل (آر جے ڈی) کے صدر لالو پرساد یادو اور بہار کے سابق وزیر اعلی جگن ناتھ مشرا سمیت کئی دوسرے لوگوں کو مجرم قرار دیا۔خصوصی عدالت نے لالو پرساد یادو کو پانچ سال کی سزاسنائی ہے اور 10 لاکھ روپے کا جرمانہ بھی عائد کیا ہے۔

سی بی آئی کے خصوصی جج ایس ایس پرساد کی عدالت نے بہار کے سابق وزیر اعلی مسٹر یادو، مسٹر مشرا، سابق ایم پی جگدیش شرما سمیت بہت سے لوگوں کو مجرم قرار دیا ہے۔ چارہ گھوٹالہ کا یہ معاملہ چائباسہ ٹریژری سے 33 کروڑ 62 لاکھ روپے کی غیر قانونی نکاسی کا ہے۔ معلوم ہو کہ چارہ گھوٹالہ سے منسلک ایک معاملہ میں لالو پرساد فی الحال رانچی کے ہوٹوار جیل میں سزا کاٹ رہے ہیں۔

اس فیصلے کے بعد سابق نائب وزیر اعلی تیجسوی یادو نے کہا کہ سی بی آئی کورٹ کے فیصلے کے خلاف اوپری عدالت میں جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ لالو پرساد کو جیل بھیجنے میں سی ایم نتیش کمار اور بی جے پی کا ہاتھ ہے۔ عوام سب سمجھ رہے ہیں اور ہم لوگ ان کے درمیان جا کر اپنی بات رکھیں گے۔ لالو کے ساتھ کورٹ احاطے میں پارٹی کے قومی نائب صدر رگھونش پرساد سنگھ، بہار ریاستی صدر رام چندر پوروے اور بھولا یادو سمیت کئی ارکان اسمبلی موجود رہے۔

Loading...

Loading...