உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Madhya Pradesh: ڈیزاسٹر مینجمنٹ کی ٹریننگ کے لئے مسلم نوجوانوں کی بڑی تعداد آئی سامنے

    ڈیزاسٹر مینجمنٹ کی ٹریننگ کے لئے مسلم نوجوانوں کی بڑی تعداد آئی سامنے

    ڈیزاسٹر مینجمنٹ کی ٹریننگ کے لئے مسلم نوجوانوں کی بڑی تعداد آئی سامنے

    سو سائٹی فار برائیٹ فیوچر کے نینشل والینٹرکوآرڈینٹیر عامر جمال کہتے ہیں کہ سو سائٹی ڈیزاسٹر مینجمنٹ کی فیلڈ میں گزشتہ 10 سالوں سے کام کر رہی ہے۔ ہمارا مقصد والینٹئرس کو تیار کرنا ہے۔ ہندوستان جیسے وسیع اور عریض ملک میں آئے دن کہیں نہ کہیں قدرتی آفات أتی رہتی ہیں اور گورنمنٹ کے ذریعہ اس کے لئے جو عملہ تیار کیا گیا ہے وہ ناکافی ہوتا ہے۔

    • Share this:
    بھوپال: قدرتی آفات، سیلاب، زلزلہ، یا آتشزدگی ہوجانے پر ہمیں ماہرین کی ضرورت ہوتی ہے تاکہ حادثہ میں پھنسے لوگوں کو محفوظ نکالا جا سکے۔ وقت کی ضرورت کو مد نظر رکھتے ہوئے سوسائٹی فاربرائٹ فیوچر کے زیر اہتمام مولانا برکت اللہ بھوپالی ایجوکیشن سوسائٹی کے اشتراک سے بھوپال گاندھی نگر کے پاس واقع چاندو کھیڑی میں ڈیزاسٹر مینجمنٹ کے دو روزہ تربیتی پروگرام کا انعقاد کیا گیا ہے۔ تربیتی پروگرام میں مدھیہ پردیش کے 7 اضلاع کے مسلم نوجوانوں نے شرکت کی ہے تاکہ انہیں ہنر سے آراستہ کرکے آفات یا کسی مصیبت میں پھنسے لوگوں کی حفاظت کی خدمت میں لگایا جا سکے۔ واضح رہے کہ ڈیزاسٹر مینجمنٹ کے دو روزہ تربیتی کیمپ میں ایس ڈی آرایف کے ماہرین کی خدمات حاصل کی گئیں ہیں، جن کے ذریعہ آفات سے بچنے کے لئے زبانی اور عملی تربیت دی جارہی ہے۔
    سو سائٹی فار برائیٹ فیوچر کے نینشل والینٹر کوآرڈینٹیر عامر جمال کہتے ہیں کہ سو سائٹی ڈیزاسٹر مینجمنٹ کی فیلڈ میں گزشتہ 10 سالوں سے کام کر رہی ہے۔ ہمارا مقصد والینٹئرس کو تیار کرنا ہے۔ ہندوستان جیسے وسیع اور عریض ملک میں آئے دن کہیں نہ کہیں قدرتی آفات أتی رہتی ہیں اور گورنمنٹ کے ذریعہ اس کے لئے جو عملہ تیار کیا گیا ہے وہ ناکافی ہوتا ہے۔ ایسے میں سوسائٹی کے ذریعہ طے کیاگ یا کہ ڈیزاسٹر کے میدا ن میں حدمت کے لئے رضاکاروں کو تیار کیا جائے تاکہ ملک میں کہیں بھی اگر کوئی آفات آتی ہے تو رضا کار ملک کے باشندوں کی خدمت کرسکیں۔ مدھیہ پردیش کے بھوپال میں بھی اسی سلسلے کے تحت دو روزہ تربیتی پروگرام کا انعقاد کیا گیا ہے۔ ابتدائی طور پر دو روزہ تربیتی پروگرام میں مدھیہ پردیش کے سات اضلاع کے نوجوانوں کو ہی مدعو کیا گیا ہے۔ ان کو دو دنوں میں ڈیزاسٹر مینجمنٹ کی اہم ٹریننگ ہے وہ دی جائے گی۔


    ڈیزاسٹر مینجمنٹ کے دو روزہ تربیتی کیمپ میں نوجوانوں کی تربیت کے لئے ایس ڈی آرایف کے ماہرین کی خدمات حاصل کی گئیں ہیں۔ تربیت دینے والے سنیل آہر وار کہتے ہیں کہ سوسائٹی کے ذریعہ اٹھایا گیا یہ اہم قدم ہے اور اس کی تربیت تو سبھی لوگوں کو ہونا چاہئے کہ اگر کہیں پر کوئی حادثہ ہو گیا، ندی، تالاب، آبشار یا سیلاب میں کوئی ڈوب رہا ہے تو اسے کیسے محفوظ باہر نکالا جائے۔ ایک تربیت یافتہ شخص آفات میں خود کو محفوظ رکھتے ہوئے بہت سے لوگوں کی جان بچا سکتا ہے۔ ایس ڈی ای آرایف کی ٹیم کے ذریعہ دو روزہ تربیتی پروگرام میں زبانی لکچر کے ساتھ عملی طور پر بھی ہنر کو سکھایا جا رہا ہے۔
    وہیں تربیت حاصل کرنے کے لئے آئے مفتی محمد رافع کہتے ہیں کہ ہم اس بات کو بہت ہلکے میں لے رہے تھے، لیکن جب یہاں آئے تو ہماری آنکھیں کھلی رہ گئیں۔ یہ ایک اہم قدم ہے اور ہم تو یہ چاہیں گے کہ حکومت کو ایسے پروگرام کا انعقاد ہر محلے میں کرنا چاہئے اور ملک کے سبھی شہریوں کو اس ہنر سے آراستہ کیا جانا چاہئے۔ میں تیرنا نہیں جانتا ہوں، لیکن مجھے آج تربیت میں بتایا گیا کہ اگر کوئی شخص تیرنا نہیں جانتا ہے تو وہ کسی ڈوبتے شخص کو کیسے بچاسکتا ہے۔
    وہیں حافظ محمد اسمعیل کہتے ہیں کہ حادثے کبھی بتا کر نہیں آتے ہیں اور اگر ہم ہنر سے آراستہ ہیں تو کہیں بھی کسی بھی وقت مصیبت میں پھنسے لوگوں کی مدد کر سکتے ہیں۔ حالانکہ ابھی تو سوسائٹی کے ذریعہ مدھیہ پردیش کے سات اضلاع کے لوگوں کو ہی تربیت دی جا رہی ہے اور مسلمانوں کی بات کریں تو یہاں بھوپال میں  پہلی بارایسے پروگرام کا انعقاد کیا گیا ہے۔ دیر سے ہی سہی درست قدم اٹھایا گیا ہے، جن لوگوں نے اس کی تربیت پہلے ان لوگوں نے صرف مدھیہ پردیش کے چمبل ڈیویزن میں امسال جوسیلابی تباہی آئی تھی۔ انہوں نے یہاں اور مہاراشٹر کے سیلابی طوفان میں جو ریلیف کاکام کیا ہے، وہ ناقابل فراموش ہے۔


    قومی، بین الااقوامی، جموں و کشمیر کی تازہ ترین خبروں کے علاوہ  تعلیم و روزگار اور بزنس  کی خبروں کے لیے  نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں.

    Published by:Nisar Ahmad
    First published: