ایودھیا تنازعہ کی سماعت کے دوران ہنگامہ، راجیو دھون نے رام مندر کے نقشے کو پھاڑا، چیف جسٹس ناراض

ایودھیا تنازعہ معاملہ پر آج آخری دن کی سماعت کے روز یہاں جم کر ہنگامہ ہوا۔ عدالت میں ججوں کی بینچ کے سامنے مسلم فریقوں کے وکیل راجیو دھون نے ایودھیا سے متعلق ایک نقشہ پھاڑ دیا جس پر عدالت میں جم کر ہنگامہ ہوا۔

Oct 16, 2019 12:54 PM IST | Updated on: Oct 16, 2019 01:12 PM IST
ایودھیا تنازعہ کی سماعت کے دوران ہنگامہ، راجیو دھون نے رام مندر کے نقشے کو پھاڑا، چیف جسٹس ناراض

فائل فوٹو

نئی دہلی۔ ایودھیا تنازعہ معاملہ پر آج آخری دن کی سماعت کے روز یہاں جم کر ہنگامہ ہوا۔ عدالت میں ججوں کی بینچ کے سامنے مسلم فریقوں کے وکیل راجیو دھون نے ایودھیا سے متعلق ایک نقشہ پھاڑ دیا جس پر عدالت میں جم کر ہنگامہ ہوا۔ اس کے بعد ہندو مہاسبھا کے وکیل اور مسلم فریقوں کے وکیل کے درمیان تیکھی بحث ہوئی جس پر چیف جسٹس رنجن گگوئی نے ناراضگی ظاہر کی۔

آج ایودھیا معاملہ کی آخری سماعت میں ہندو مہاسبھا کے وکیل وکاس سنگھ نے ایودھیا سے متعلق ایک نقشہ دکھایا۔ یہ نقشہ آکسفورڈ کی ایک کتاب کا حصہ تھا۔ اس نقشے کو مسلم فریقوں کے وکیل راجیو دھون نے پھاڑ دیا۔ موصولہ اطلاعات کے مطابق، انہوں نے اس نقشے کے پانچ ٹکرے کر دئیے۔

Loading...

چیف جسٹس نے ظاہر کی ناراضگی

نقشہ پھاڑنے کے واقعے کے بعد عدالت میں وکیلوں کے درمیان تیکھی بحث ہونے لگی تھی۔ اس پر چیف جسٹس سمیت پوری بینچ نے اپنی ناراضگی جتائی۔ انہوں نے کہا کہ اگر بحث بازی ایسی ہی چلتی رہی تو وہ اٹھ کر چلے جائیں گے۔ اس پر ہندو مہاسبھا کے وکیل نے کہا کہ وہ عدالت کی کافی عزت کرتے ہیں اور انہوں نے عدالت کا احترام ملحوظ خاطر رکھا ہے۔

سپریم کورٹ نے قبل ازیں آج اس بات کے پختہ اشارے دے دیئے ہیں کہ آج ہی یہ سماعت مکمل ہو جائے گی۔ پانچ رکنی آئینی بنچ کی قیادت کرتے ہوئے جسٹس گگوئی نے کہا کہ اب بہت ہو چکا، سماعت آج شام پانچ بجے ختم ہو جائے گی۔

چیف جسٹس نے یہ بات اس وقت کہی جب سماعت کے دوران ایک وکیل نے اضافی وقت مانگا۔ جسٹس گوگوئی نے واضح کر دیا کہ آج شام پانچ بجے اجودھیا معاملہ کی سماعت ختم ہو جائے گی۔ ایک اور وکیل نے معاملہ میں مداخلت کی اپیل کی تو انہوں نے ان کی اپیل مسترد کر دی۔

یو این آئی، اردو کے ان پٹ کے ساتھ

Loading...