جیون سمواد: جو ساتھ نہیں ہیں! ( پہلی قسط)۔

مستقبل سے زیادہ ہم ماضی کے آنگن میں ٹہلتے رہتے ہیں اس لئے ہمیں ان کی یادیں اکثر گھیرے رہتی ہیں۔ جو 'چلے' گئے۔ جو ہمارے پاس ہے اسے ہم اکثر نارمل مان لیتے ہیں۔

Aug 20, 2019 04:29 PM IST | Updated on: Aug 20, 2019 04:29 PM IST
جیون سمواد: جو ساتھ نہیں ہیں! ( پہلی قسط)۔

ہم کس سے زیادہ محبت کرتے ہیں۔ جو ہمارے ساتھ ہیں انہیں یا جو ہمیں چھوڑ کر چلے گئے۔ چھوڑکر جانا کسی بھی وجہ سے ہوسکتا ہے۔ یہاں اس کا مطلب صرف اتنا ہے کہ وہ ہمارے ساتھ نہیں رہتے۔ مستقبل سے زیادہ ہم ماضی کے آنگن میں ٹہلتے رہتے ہیں اس لئے ہمیں ان کی یادیں اکثر گھیرے رہتی ہیں۔  جو 'چلے' گئے۔ جو ہمارے پاس ہے اسے ہم اکثر نارمل مان لیتے ہیں۔ جو پاس ہوتے ہیں ان کی کمیاں بھی ہمیں نظر آنے لگتی ہیں۔ اس لئے ان کے لئے من میں چھوٹی۔چھوٹی باتیں گانٹھ بن کر ہمیں پریشان کرتی رہتی ہیں۔

چھتیس گڑھ کے امبیکا پور سے سروجنی ترپاٹھی لکھتی ہیں، 'میں نے شوہر کے ساتھ اسی شہر میں رہنے کا فیصلہ ساس،سسر کی دیکھ ریکھ ، ان کے ساتھ رہنے کیلئے کیا۔ جبکہ ان کے 3 بیٹے دوسرے مواقع کی چاہ میں باہر نکل گئے۔ یہ ہمارا فیصلہ تھا اس لئے ہمیں اس پر افسوس تو نہیں ہے لیکن دکھ ہے ۔ ہم ساتھ رہتے ہیں تو ہماری کھٹ۔پٹ زیادہ ہوتی ہے۔ روزمرہ کی زندگی صرف میٹھی باتوں سے نہیں چلتی اس میں تھوڑا بہت تکرار ہوتا ہے۔ جبکہ جو دور ہیں کبھی۔کبھی آتے ہیں ان سے صرف پیارو محبت کے تار ہی جڑے رہتے ہیں'۔

Loading...

یہ اکیلے سروجنی کے من کی ٹیس نہیں۔ یہ گھر۔گھر کی کہانی ہے۔ یہ اکیلے کنبے کی بات نہیں، فیملی، دوست رشتے دار اور پڑوسیوں تک کے معاملہ میں اس کا تجربہ کیا جا سکتا ہے۔

جو چلا گیاوہ روز تو ملتا نہیں اس لئے اس کی کڑواہٹ، اختلافات دھیرے۔دھیرے مٹنے لگتے ہیں۔ جبکہ ساتھ رہنے والے کے ساتھ ایسا نہیں ہو پاتا۔ اس میں ہر دن کی ان بن ، اختلافات اور چھوٹے۔موٹے تناؤ شامل  ہوتے رہتے ہیں۔

ہمیں من کے اندر بیٹھا وہ من چلا رہا ہے جو اصل میں  یادوں کا بینک ہے۔ جو چھوڑ کر چلے گئے صرف انہیں کو یاد کرتا ہے۔ اس میں کچھ نیا نہیں جڑتا ۔ اس لئے دماغ میں ان کی موجودگی بنی رہتی ہے۔ جبکہ دوسری طرف جو ساتھ رہتے ہیں ان کے ساتھ ہر دن کچھ نہ کچھ گھٹتا۔بڑھتا رہتا ہے۔

ویسے تو اسے آسان زندگی کے عمل کے تحت دیکھا جانا چاہئے۔ لیکن جیسے ہی یہ موازنہ کی دنیا میں پہنچتا ہے، اندرونی تنازعہ ان کے لئے ہی شروع ہوجاتا ہے ، ہم جن کے ساتھ ہیں۔

آج کا سمواد ان سبھی بیٹے، بیٹیوں اور احباب کے نام معنون ہے جو ساتھ ہیں۔ چھوڑ کر نہیں گئے، اس کے بعد بھی وہ اس ہمدردی سے دور ہیں جس کے وہ حقدار ہیں۔

یہ جیون سمواد دو قسطوں میں ہو گا۔ پہلی قسط آپ نے پڑھی، دوسری کل یعنی بدھ کے روز پڑھیں گے۔

Email: dayashankarmishra2015@gmail.com

Address: Jeevan Sanvad (Dayashankar Mishr)

Network18

Express Trade Tower,3rd Floor, A Wing,

Sector 16, A, Film City, Noida (UP)

اپنے سوالات اور مشورے انباکس میں شئیر کریں۔

(https://twitter.com/dayashankarmi )(https://www.facebook.com/dayashankar.mishra.54 )

 

Loading...