ہوم » نیوز » وطن نامہ

جاسوسی معاملہ پر وہاٹس ایپ کی صفائی، مئی میں ہی حکومت کو کیا تھا آگاہ۔۔۔۔

وہاٹس ایپ کے ذریعے دنیا بھر کے ممالک میں کی جارہی جاسوسی کی جانچ کر رہے افسران نے دعویٰ کیا ہے کہ اس سال کی شروعات میں ہی ہیکنگ سافٹ ویئر کی مدد سے کئی ممالک میں سینئر سرکاری افسران کی جاسوسی کی جارہی تھی۔

  • Share this:
جاسوسی معاملہ پر وہاٹس ایپ کی صفائی، مئی میں ہی حکومت کو کیا تھا آگاہ۔۔۔۔
وہاٹس ایپ کے ذریعے دنیا بھر کے ممالک میں کی جارہی جاسوسی کی جانچ کر رہے افسران نے دعویٰ کیا ہے کہ اس سال کی شروعات میں ہی ہیکنگ سافٹ ویئر کی مدد سے کئی ممالک میں سینئر سرکاری افسران کی جاسوسی کی جارہی تھی۔

وہاٹس ایپ کے ذریعے جاسوسی کا معاملہ سنگین رخ اختیار کرتا جارہا ہے۔ حکومت نے اس تعلق  سے وہاٹس ایپ سے جواب طلب کیا تھا۔ اب کمپنی نے اس پر صفائی دیتے ہوئے کہا ہے  کہ جاسوسی کو لیکر اس نے حکومت کو اس سال مئی میں ہی اطلاع دی تھی۔

وہاٹس ایپ نے جمعے کو ایک بیان جاری کرتے ہوئے کہا، "کسی بھی یوزر کی رازداری (پرائیویسی) اور تحفظ ہماری پہلی ترجیح ہے۔ ہم نے اس سال فوراً ہی اس مسئلے کو سلجھا لیا تھا اور ہندستان اوربین الاقوامی حکومتوں کو اس سلسلے میں آگاہی بھی کردیا تھا"۔ '

وہاٹس ایپ پر اسپائی ویئر کے بڑھتے تنازع کے درمیان اطلاعات اور ٹیکنالوجی کے مرکزی وزیر روی شنکر پرساد نے 2011 اور 2013 میں اس وقت کے  وزیر خزانہ پرنب مکھرجی اور جنرل وی کے سنگھ کے خلاف جاسوسی پر وہاٹس ایپ سے جواب مانگا تھا۔ اس کے  علاوہ ہندستانی صحافیوں اورسماجی کارکن بھی اس جاسوسی کا شکار بنے ہیں۔ مبینہ معاملے پر وہاٹس ایپ سے جواب طلب کیا تھا۔


وہاٹس ایپ کے ذریعے دنیا بھر کے ممالک میں کی جارہی جاسوسی کی جانچ کر رہے افسران نے دعویٰ کیا ہے کہ اس سال کی شروعات میں ہی ہیکنگ سافٹ ویئر کی مدد سے کئی ممالک میں سینئر سرکاری افسران کی جاسوسی کی جارہی تھی۔


میسیجنگ کمپنی کی جانچ سے جڑے لوگوں کا کہنا ہے کہ یوزر کے فون کو ہیک کرنے کیلئے فیس بک  انکس وہاٹس ایپ کا استعمال کیا گیا ہے۔ ان میں ریاستہائے متحدہ امریکہ ، متحدہ عرب امارات، بحرین، میکسیکو، پاکستان اور ہندستان کے لوگ شامل ہیں۔
دنیا بھر میں 1400 لوگوں کے فون کئے گئے ہیک
وہاٹس ایپ نے کہا ہے کہ وہ این ایس او گروپ کے خلاف مقدمہ کرنے جا رہی ہے۔ یہ اسرائیل کی نگرانی کرنے والی کمپنی ہے۔ سمجھا جاتا ہے کہ اسی کمپنی نے وہ ٹکنالوجی بنائی ہے جس کے ذریعے نامعلوم اکائیوں نے جاسوسی کے لیے تقریباً 1400 لوگوں کے فون ہیک کئے ہیں۔
یہ معاملہ اس وقت روشنی میں آیا جب امریکہ کے کیلی فورنیا کی عدالت میں واٹس ایپ گروپ نے اسرائیل کے این ایس او گروپ کے خلاف مقدمہ درج کرایا۔ واٹس ایپ نے الزام عائد کیا کہ اس اسرائیلی گروپ نے اپنے اسپائی ایپ کے ذریعے واٹس ایپ استعمال کرنے والے چودہ سو افراد کی جاسوسی کی ہے۔ سمجھاجاتا ہے کہ اس ایپ کے ذریعہ ہندوستان میں بھی کئی افراد کی جاسوسی کی گئی ہے۔ خیال رہے کہ یہ ایپ صرف حکومت اور اس کے ماتحت اداروں کو ہی فروخت کیا جاتا ہے۔
First published: Nov 02, 2019 10:09 AM IST