کرناٹک کے بعد اب بی جے پی کاہدف تلنگانہ، اسمبلی الیکشن کے لئے نئی حکمت عملی تیار

کرناٹک میں الیکشن کے بعد تلنگانہ بی جے پی کے لئے اہداف شدہ ریاستوں میں سے ایک ہوگا اور پارٹی 2019 میں ریاست میں ہونے والے الیکشن کی تیاری میں مصروف ہوگئی ہے۔

May 20, 2018 05:12 PM IST | Updated on: May 20, 2018 05:12 PM IST
کرناٹک کے بعد اب بی جے پی کاہدف تلنگانہ، اسمبلی الیکشن کے لئے نئی حکمت عملی تیار

نئی دہلی: کرناٹک میں الیکشن کے بعد تلنگانہ بی جے پی کے لئے اہداف شدہ ریاستوں میں سے ایک ہوگا اور پارٹی 2019 میں ریاست میں ہونے والے الیکشن کی تیاری میں مصروف ہوگئی ہے۔ یہ اطلاعات بی جے پی کے صدر لکشمن نے دی ہے۔ تلنگانہ میں اسمبلی کا الیکشن 2019 میں ہونے والے لوک سبھا الیکشن کے ساتھ ہی کرایاجائے گا۔

لکشمن نے بتایا کہ حال ہی میں دہلی میں قومی صدر امت شاہ کی قیادت میں ایک میٹنگ ہوئی۔ انہوں نے تلنگانہ پر زور دیا۔ انہوں نے کہاکہ جن ریاستوں میں الیکشن ہونے والے ہونے تھے وہ اب ہوگئے۔ اب تلنگانہ، آندھرا پردیش، مغربی بنگال، اوڈیشہ پر توجہ مرکوز کی جائے گی۔

Loading...

 

لکشمن نے کہاکہ سیاسی حالات اور الیکشن کے منصوبہ پر غور کرنے کے لئے امت شاہ آئندہ ماہ تلنگانہ آسکتے ہیں۔ لکشمن نے کہا کہ ریاست میں بی جے پی مضبوط ہے اور ریاست میں خود کو مزید بہتر بنانے کے لئے ووٹنگ بوتھ پر پنّا پرمکھ ماڈل کی حکمت عملی اپنائی جائے گی۔

مختلف ریاستوں میں پنا پرمکھ بی جے پی کا ایک کامیاب ماڈل رہا ہےم جس میں ایک پنا کا انچارج اپنی فہرست میں آنے والے رائے دہندگان کے اہل خانہ سے رابطہ کرتا ہے۔ انہوں نے کہاکہ جہاں تک پنا پرمکھ کا سوال ہے تو 119 اسمبلی علاقوں میں سے تقریباً 50-40 اسمبلی حلقوں میں پنا پرمکھ کا کام پورا ہوگیا ہے۔ باقی اسمبلی حلقوں میں بھی ہم ایک یا دو ماہ میں کام پورا کرلیں گے۔

ساتھ ہی انہوں نے یہ بھی بتایا کہ پارٹی ریاست میں تنظیم کو مضبوط کرنے کے لئے کچھ اور اقدامات بھی اٹھارہی ہے۔

Loading...